شاہ اجمل فاروق ندوی

شاہ اجمل فاروق ندوی
انچارج اردو سیکشن انسٹی ٹیوٹ آف آبجیکٹیو اسٹڈیز، نئی دہلی، چیف ایڈیٹر ماہنامہ المؤمنات، لکھنؤ و ایڈیٹر ماہنامہ تسنیم، نئی دہلی

اسلامیات کا مطالعہ: موجودہ ہندستان میں

 علوم اسلامی کے ارتقاء میں ہندستان کا کردار متعدد ناحیوں سے بحث و تحقیق کا موضوع بن چکا ہے۔ اس موضوع پر بھی تحقیقات ہوچکی ہیں کہ ہندستان کے ارتقاء میں اسلامی علوم نے کیا کردار نبھایا۔ جب ہم یہ دعویٰ کرتے ہیں اور حق کرتے ہیں کہ اسلام اپنے اندر ہر دور کا ساتھ دینے کی صلاحیت رکھتا ہے، تو یہ بحث خود بہ خود اپنے انجام تک پہنچ جاتی ہے کہ اسلامی علوم نے ملک کی ترقی میں اہم رول ادا کیا ہوگا۔

مزید پڑھیں >>

واقعۂ کربلا کی عصری معنویت:  قرآن و حدیث کی روشنی میں

واقعۂ کربلا کا گہرائی سے جائزہ لینے کے بعد جو چیز سب سے زیادہ روشن اور واضح طور پر نظر آتی ہے وہ ہے خدمت اسلام کے جذبے سے سرشار ہوکر اپنی اور اپنے اہل خاندان کی جان و مال کی پروا کیے بغیر دربارِ ایزدی میں اپنی جان کا نذرانہ پیش کردینااور ایک لمحے کے لیے بھی موت کے سامنے خوف و جھجھک کا مظاہرہ نہ ک

مزید پڑھیں >>

خواجۂ اجمیر کا پیغام: عہدِحاضر کے نام

قدرت الٰہی کے کرشمے بھی عجیب ہیں ۔ حکمت خداوندی کب کس چیز کا فیصلہ فرمادے، کچھ نہیں کہا جاسکتا۔ یہ حکمت الٰہی کا کرشمہ نہیں تو اور کیا ہے کہ ساتویں صدی ہجری میں خراسان کا ایک شخص ہندستان پہنچا اور اپنے علوم و معارف سے پورے ملک کو ایسا مسخر کیا کہ صدیاں گزرنے کے باوجود بھی اس کا نام سکۂ رائج الوقت کی طرح چلتا ہے۔ یہ صرف سرزمین ہند پر اﷲ تعالیٰ کی نظرعنایت کا نتیجہ تھا کہ ایک طرف شہاب الدین محمد غوری (متوفی 602ھ) نے ہندستان میں حکومت اسلامی کا قیام کیا تو دوسری طرف شیخ الاسلام حضرت خواجہ معین الدین چشتی اجمیری (ولادت 537ھ، وفات 633ھ) نے دعوتی جدوجہد اور اصلاح و تربیت کے ذریعہ ہندستان میں روحانی سلطنت کی بنیاد رکھی۔

مزید پڑھیں >>

قرآن کریم میں  رچی بسی شخصیت: ڈاکٹر اسرار احمدؒ

ڈاکٹر صاحب کی وفات سے سب سے بڑا نقصان یہی ہوا کہ تفسیر قرآن کے میدان میں ایسا خلا پیدا ہوگیا، جس کا پر ہونا بہ ظاہر آسان نظر نہیں آتا۔ یوں اللہ کی قدرت کاملہ سے کیا بعید؟ اُن کے بعد پوری امت میں ایسی کوئی دوسری شخصیت نظر نہیں آتی، جو قرآن کریم پر ایسا استحضار بھی رکھتی ہو اور اس کو ایک تحریک کی شکل میں پیش بھی کر رہی ہو۔ وہ بھی پوری حکمت اور اعتدال کے ساتھ۔ ہم بہ جا طور پر ڈاکٹر صاحب کو ’’قرآن کریم میں رچی بسی شخصیت‘‘ سے تعبیر کر سکتے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

ڈاکٹر سید رضوان علی ندویؒ : ایک محقق یگانہ

گزشتہ دنوں آسمانِ علم و فضل کا ایک روشن ستارہ ٹوٹ گیا۔ ندوے کی علمی روایات اور ندوی تہذیب و ثقافت کاایک اہم ستون گرگیا۔ ایک محقق یگانہ دنیا سے اٹھ گیا۔ یعنی مولانا ڈاکٹر سید رضوان علی ندوی نے 5؍جولائی 2016 کو کراچی میں وفات پائی۔ انا للہ وانا إلیہ راجعون۔ عید کے دن بعد نماز عشاء ڈیفنس سوسائٹی، کراچی کے قبرستان میں سپرد خاک کردیے گئے۔ گویا ماہِ رمضان میں گناہوں اور لغزشوں سے پاک صاف ہوکر اور عید کے دن نہادھوکر اپنے رب کے حضور حاضر ہوگئے۔

مزید پڑھیں >>

افسر امروہوی

شاہ اجمل فاروق ندوی              مرزا افسر حسن بیگ افسر امروہوی عہد حاضر کے عظیم شاعر اور البیلے نعت گوتھے۔ وہ 9؍ مئی 1942 کو پیدا ہوئے تھے اور چند ماہ قبل 31؍ مارچ 2016 کو وفات پائی۔ اس طرح …

مزید پڑھیں >>