فن رپو رتاژ نگاری: ایک مطالعہ

رپو رتاژ نگار اپنے کانوں پر بھر وسہ نہیں کر تا۔ اپنی آنکھوں سے دیکھتا ہے اور دل سے محسوس کرتا ہے کچھ لو گوں کا خیال ہے کہ آنکھوں سے دیکھنے کے علا وہ سنے سنائے واقعات و حادثات پر بھی رپورتاژ لکھا جا سکتا ہے۔ یہ درست نہیں کیونکہ رپورتاژمیں…

نیادور کا رثائی گوشہ ادب و ثقافت کا ممزوج

اداریہ کے مطالعہ اس بات کا اندازہ ہوا کہ جناب سید عاصم رضا نے کس قدر محنت اور کدوکاوش سے کام لیا ہے۔ ایڈیٹر نے ابا ء، نقادوں، نوجوان قلمکاروں کورثائی ادب کی جانب رغبت دلانے کے ساتھ آگاہی بھی فرمائی ہے۔ عادل فراز، ریحان حسن، مرزا شفیق حسین…

حضور اکرم کے حسن اخلاق سے اسلام پھیلا ہے

حضور پاکؐ نے پہلے اپنے کردار اور عمل کے ذریعہ اسلام کو پروان چڑھا ہے۔ اما نتیں لیں تو اسے اسی حالت میں واپس کیا، کسی کی مدد کی تو اس سے یہ دریافت نہیں کیا کہ تمہار ا مذہب کیا ہے، جو ضرورت منداور حاجت مند آپ کے پاس دامن امید پھیلا کر تشریف…

رسول اللہ ﷺ کے حکم سے جنت البقیع کی بنیاد رکھی گئی 

جنت البقیع کی تعمیرکے لیے حکومت سعود سے تمام مسلمانوں شیعہ اور اہل سنت اپیل کر تے ہیں اور کیونکہ ان کے یہاں نہ فقط اسلامی اصول اور فروعات کے ساتھ متضاد نہیں ہے بلکہ ان کے یہاں بزرگا ن دین اسلام کے قبور کی زیا رت کر نا ایک مستحب عمل بھی ہے…

نیادور: ادب و ثقافت کا خوبصورت امتزاج

معیار کو بر قرار رکھتے ہوئے موجودہ ایڈیٹر سہیل وحید نے اپنی ذاتی دلچسپی اور صلا حیت کو بروئے کام لا کے ’نیادور ‘ کو جدید ٹکنالوجی کے مطابق شائع کر اتے ہوئے وقت کی پا بندی کے ساتھ قارئین تک پہنچانے کا بے مثال کارنا مہ انجام دیا ہے۔ جس کے لیے…

تہتر زبانوں کا عالم

اگر ہم حقیقی عاشق امام ہیں تو ہمیں ان کی باردگا ہ میں استدعا کر نا چاہئے مولا ہمیں بھی ایسے سنگریزے کی سخت ضرورت ہے جس سے علوم کے تہتر دروازے کھلے۔ دور کر دو میری مشکل اے میرے مشکل کشا۔

مجاہد آزادی کرنل نظام الدین: سبھاش چندر بوس کے نجی محافظ

کرنل نظام الدین کے مطابق نیتا جی نے اپنا انٹیلی جنس گروپ بنا یا تھااور ان کا خفیہ محکمہ بھی تھا، جس کے وہ سربراہ افسر تھے۔ خفیہ محکمہ کا نام ’’ بہادر گروپ‘‘ تھا۔ اس میں بہت کم اہلکار اور فوجی تھے۔ خفیہ محکمہ سب سے زیادہ فعال برطانوی معلومات…

 خواتین، قر با نی اور جنگ آزادی

بی اماں (اصل نام آبادی بانو) کی قربانی تاریخ ہندمیں سنہرے حرفوں سے لکھی جاتی ہے۔ بی اماں تحریک آزادی میں ناقابل فراموش، لائق تعظیم کام انجام دیا ہے۔ ان کا ہر طرز عمل ہندوستانی خواتین کے لیے سبق آموز ہے جس پر چل کر ہی ہندوستان کا فروغ ممکن…

دوسروں کو نصیحت خود میاں فضیحت

ہم نے بزرگوں سے ایک محا ورہ سنا تھا ’ دوسرے کے کندھے پر بندوق رکھ کر چلانا ‘ یہ محاورہ موجو دہ وقت میں پوری طرح سمجھ میں آرہا ہے۔ یہی کام اسرائیل اور امریکا کر رہا ہے۔ ان لو گوں کی فنڈنگ کرتا ہے جومسلمانوں کے مسالک، مکا تب فکریہ، فرقہ پر…