حکیم نازش احتشام اعظمی

حکیم نازش احتشام اعظمی
ڈاکٹرنازش اصلاحی ضلع اعظم گڈھ کےعلمی خانوادے سےتعلق رکھتےہیں۔ مدرستہ الاصلاح کےفاضل، جامعہ ملیہ اسلامیہ کےخوشہ چیں، ہمدرددیونیورسٹی سےبی یو ایم ایس ڈگری یافتہ ہیں۔ آپ بنیادی طورسےطبیب ہیں تاہم تصنیف وتالیف سےحددرجہ شغف رکھتے ہیں۔ کئی کتابوں کےمصنف ومؤلف ہیں۔ موصوف 'ترجمان اصلاح' اور 'فیملی ہیلتھ' میگزین کےایڈیٹر، صحت سےمتعلق ایک NGO اصلاحی ہیلتھ کیئر کےبانی بھی ہیں۔

ویلنٹائن ڈے کے پردے میں جاگتی ہوس کی بھوک!

واضح رہے کہ ہمارے یہاں ابتداء میں مشنریز اوراین۔ جی۔ اوز کے تحت چلنے والے اسکولوں ، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں باقاعدہ طور پر اس بے ہودہ تہوار کو منایا جاتا تھا، مگر اب نوبت یہاں تک آ پہنچی ہے کہ قدروں اور مریاداؤں اور آستھا ؤں کی محافظ کہلانے والی حکومت کے زیر انتظام یونیورسٹیوں اور اسکولوں میں بھی یہ وبا ڈیرے ڈال چکی ہے۔

مزید پڑھیں >>

دورزہ سیمینار بعنوان ’بیکل اتساہی: شخص و شاعر‘

سیمینار کے مہمان خصوصی وجے بھوشن، ڈی آئی جی اعظم گڑھ ہوں گے،جبکہ احمد ابراہیم علوی سیمینار کی صدارت فرمائیں گے اورڈاکٹر صفدر امام قادری کلیدی خطبہ پیش کریں گے۔ اس دوروزہ عالمی سیمینار میں طب یونانی کے معروف محقق و مصنف اور اردو ادب کی مایہ ناز شخصیت حکیم وسیم احمداعظمی،پروفیسر سراج اجملی، ڈاکٹر محی الدین آزاد فراہی، ڈاکٹر زبیر احمد خاور صدیقی، ڈاکٹر عبید الرحمن اورڈاکٹر عمیر منظر سمیت تقریباً22 معروف وممتاز صحافیوں ادیبوں اورتجزیہ وتنقید نگاروں کے مقالے پیش کئے جائیں گے۔

مزید پڑھیں >>

سعودی حکومت کی خاموشی منصوبہ بندہے!

اس وقت دنیا بھرکے مسلمانوں میں یہ سوال گہراتا جارہاہے کہ یروشلم معا ملے میں ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف باضابطہ طور پر احتجاج کرنے کے ساتھ ساتھ اگر سعودیوں نے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کردیے توعالم اسلام کی مشرق وسطیٰ کے حوالے سے پالیسی کا کیا ہوگا؟ یہ سوال شاید اتنا بے تکا ہے نہیں جتنا کہ یہ لگتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

اقتصادی زبوں حالی سے پیداہونے والے صحت کے مسائل

ایک تہائی آبادی یا 38.4 فیصد بچے ایسے ہیں جن کا جسمانی فروغ عمر کے تناسب میں نہیں ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھوک سے متاثر ملکوں کی عالمی فہرست میں اس مقام پر ہے جسے سنگین قرار دیا گیا ہے۔یہ رپورٹ اس سچائی کو واضح کررہی ہے کہ جس سرزمین کے عام باشندے قلت خوراک کے اس شدید بحران سے گزر رہے ہوں، وہاں صحت مند معاشرہ کی تعمیر کیسے ممکن ہوسکے گی؟

مزید پڑھیں >>

بڑھتی ہوئی شہرکاری کے چیلنجز اور ہماری ذمہ داریاں

میٹروپالیٹن شہرو میں آلودگی کی بنیادی وجہ گاڑیوں اور صنعتی مشینوں سے نکلنے والے زہریلے کیمیکل ہیں۔ عالمی ادارۂ صحت نے اس کا مفصل سروے کرکے عوام کو صحتمند رہنے کیلئے مذکورہ بالا سبھی قسم کی آلودگیوں سے بچنے کا مشورہ دیا ہے۔ شہری ماحول میں جو خطرناگیسیں اور کیمیکلز تباہی پھیلا رہے ہیں ان میں سلفر ڈائی آکسائید، کاربن مونوآکسائڈ جیسے زہریلے مادے کلیدی رول ادا کررہے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

ماحول کو کثافت سے بھرنے والے بھی دہشت گرد ہیں !

ملک عزیزہندوستان کے علاوہ طب یونانی کو عالمی طور پر ازسر نو متعارف کرانے اور اس کے تابناک ماضی سے مربوط کرنے جیسے اہم عزم وارداہ کے ساتھ گزشتہ 12نومبر کو دوروزہ ’’عالمی یونانی کانگریس ‘‘ نام سے منعقد ہ عالمی سیمینار اختتام پذیر ہوگیا۔ اس موقع پر طب یونانی کی تاریخ اور مستقبل میں اس کی اہمیت و افادیت پر روشنی ڈالنے والے گراں قدر مقالے بھی پیش کئے گئے۔

مزید پڑھیں >>

بڑھتی ہوئی شہرکاری کے چیلنجز اور ہماری ذمہ داریاں

شہروں میں بے تحاشہ بڑھتی ہوئی آبادی کا ناقابل برداشت بوجھ اور ہرسو قائم کل کارخانوں کے مسموم دھوئیں، سڑکوں پر فضاء کا سینہ چاک کرکے دندناتی گاڑیوں اور مسلسل بڑھتی ہوئی انڈسٹریزکے نتیجے میں ماحولیاتی اورصوتی آلو دگی نے انسانی زندگی کے لیے کئی سنگین مسئلے کھڑے کر دیے ہیں۔ المیہ یہ ہے کہ زیادہ سے زیادہ آلودگی ہوا اور پانی میں ہی پائی جاتی ہے۔ جس کی وجہ سے آئے دن شہری معاشرے میں متعدی اور وبائی بیماریاں حملہ آور ہوجاتی ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

محتاط رہیں تو بہت زیادہ سنگین نہیں ہے لیو کیمیا

خون کے سفیدذرات اس کیلوس کو کہتے ہیں جو غذا کے ہضم ہونے کے بعدعروق مارسایقا (غددجاذبہ) کے ذریعے جگروخون میں داخل ہوتاہے چونکہ عروق ماساریقا اور غددجاذبہ و طحال ولبلبہ وغیرہ ایک ہی مزاج کے اعضاء ہیں اس لئے محققین نے ان سے سفید ذرات خون کا بننا تسلیم کیا ہے۔

مزید پڑھیں >>

مولانا سلطان احمد اصلاحیؒ کی علمی وفکری جہات پر دو روزہ سیمینار کا انعقاد

انجمن طلبہ قدیم شاخ علی گڑھ کے ذریعہ منعقدہ دو روزہ سیمینار میں حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر اشتیاق احمد ظلی نے فرمایا کہ موضوع کے انتخاب میں جدت وندرت مولانا سلطان احمد اصلاحی کے ابتکاری ذہن کا غماز ہیں ۔ آپ نے ادارہ علوم القرآن سے مولانا کے تعلق پر جذباتی انداز میں روشنی ڈالی۔

مزید پڑھیں >>

کم سنی کی شادی اور اسلام : ایک تجزیا تی مطالعہ

انہوں نے کہا کہ کم عمری میں شادی سے لڑکیاں نہ صرف تعلیم کے مواقع حاصل کرنے سے محروم رہ جاتی ہیں، بلکہ کم عمری میں حمل اور زچگی سے ان کی زندگی کو بھی خطرہ لاحق ہوجاتا ہے۔سیو دا چلڈرن انٹرنیشنل کی چیف ایگزیکٹیو ہیلے تھورننگ شمٹ کا رپورٹ کے حوالے سے کہنا تھا کہ ’کم عمری میں شادی سے ناموافق صورتحال کا ایک سلسلہ شروع ہوجاتا ہے، جس سے لڑکیوں کے سیکھنے، نشوونما پانے اور بچے رہنے جیسے بنیادی حقوق کی پامالی ہوتی ہے۔‘

مزید پڑھیں >>