محمد رضی الاسلام ندوی

محمد رضی الاسلام ندوی

ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی معروف مصنف اور دانش ور ہیں۔ موصوف تصنیفی اکیڈمی، جماعت اسلامی ہند کے سکریٹری اور سہ ماہی مجلہ تحقیقات اسلامی کے نائب مدیر ہیں۔

مکہ مکرمہ کی زیارتیں

مکہ مکرمہ کے ان تاریخی مقامات کی زیارت کرتے ہوئے دل پر عجیب کیفیت طاری رہی _ ان راستوں پر اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ و سلم کے قدم پڑے ہیں ، ان مقامات سے آپ گزرے ہیں ، ان میں قیام کیا ہے، آپ کی صبحیں اور شامیں ، آپ کے دن اور رات یہاں گزرے ہیں ، ایسا محسوس ہوتا تھا کہ آپ کے جسمِ اطہر کی خوش بو اب بھی یہاں کی فضاؤں میں موجود ہے _

مزید پڑھیں >>

رب کے دَر پر

انسانوں کا ٹھاٹھیں مارتا ہوا سمندر اس کا طواف کررہا تھا _ ننھے منے بچے (پہیے والے جھولوں پر)، نوعمر، بچے، بچیاں ، نوجوان، دوشیزائیں ، مرد، عورتیں ، جوان، ادھیڑ عمر، بوڑھے، کھوسٹ، ہٹّے کٹّے، معذور، صحت مند، مریض، پھرتیلے، سست، اپنے پیروں پر چلنے والے، وہیل چِیَر کا استعمال کرنے والے، زمین پر گھسٹنے والے، سب طواف میں ایسے مست تھے کہ کسی کو دوسرے کی خبر نہیں تھی _ ہم بھی اس سمندر کا ایک قطرہ بن گئے _جب عام دنوں کا یہ حال تھا تو ایامِ حج میں کتنی بھیڑ ہوتی ہوگی _ 

مزید پڑھیں >>

نورِ نبوت کی کرنیں (دروس حدیث)

مولانا عثمانی کا قلم سے بھی رشتہ قائم تھا۔ ان کے بہت سے مضامین، جن میں سے زیادہ تر احادیثِ نبوی ؐ کی توضیح وتشریح پر مبنی ہیں ، ماہِ نامہ زندگی نو میں شائع ہوئے ہیں ۔ جناب محمد اسعد فلاحی، معاون تصنیفی اکیڈمی نے زندگی کی فائلوں سے ان دروس حدیث کوجمع کردیا ہے ۔ اس سے کارکنانِ تحریک اوردیگر شائقین کوان سے استفادہ میں آسانی ہوگئی ہے۔ چندموضوعات، جن کے تحت احادیث کی تشریح کی گئی ہے، یہ ہیں : حقیقی کام یابی، نجات اورہلاکت کے اہم اسباب، اللہ سے محبت اوراس کے تقاضے، اچھا علم اور اچھا دل، دلوں کا رنگ دور کرنے کا نسخہ، ذکر اِلٰہی، توبہ واستغفار کی اہمیت، اجتماعیت کی ـضرورت و اہمیت، اسلام کا نظام سمع وطاعت، روزوں کا حقیقی انعام، قبر کا عذاب، وغیرہ ۔

مزید پڑھیں >>

اسلام میں عورت کا حق ملکیت

بہت سے مسلم معاشروں میں عورتیں اپنے اس حق ملکیت سے محروم ہیں ۔ انھیں نہ وراثت میں حصہ دیا جاتا ہے، نہ وہ مہر کی رقم پاتی ہیں ، نہ انھیں وقت ضرورت کسبِ معاش کی اجازت دی جاتی ہے اور اگر انھیں کہیں سے کچھ مال حاصل ہو جائے تو اس پر تصرف کا انھیں اختیار نہیں ہوتا، بلکہ شوہر نامدار اس پر قبضہ جما لیتے ہیں ۔ ضرورت ہے کہ مسلمانوں کو اسلام کے عائلی قوانین سے واقف کرایا جائے اور انھیں پابند کیا جائے کہ اسلام نے عورتوں کو جو حقوق سے نوازا ہے، انھیں خوش دل سے دیں ۔ اس طرح اسلام کا صحیح تعارف ہوگا اور اللہ کے بندوں کے دل اس کی طرف مائل ہوں گے۔

مزید پڑھیں >>

بیت المقدس کا حالیہ بحران اور ہماری ذمے داری

۶؍دسمبر کی تاریخ ہم میں سے ہر ایک کو یاد ہوگی۔ آج سے پچیس برس قبل اسی تاریخ میں ایودھیا میں شرپسندوں اور شدّت پسندوں کے ہاتھوں سے بابری مسجد شہید کی گئی تھی۔ دن کے اجالے میں کھلی جارحیت کا مظاہرہ کیاگیاتھا اور اللہ واحد کی عبادت کے لیے بنائے گئے گھر کو مسمار کرکے زمیں بوس کردیاگیاتھا۔ امسال۶؍دسمبر کو ایک اور حرکت کی گئی، جس سے دنیا بھر کے مسلمانوں نے اذیت محسوس کی اور ان کے دلوں میں اضطراب پیداہوا۔ اس تاریخ کو صدرِ امریکہ ٹرمپ نے اعلان کیا کہ وہ یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرتے ہوئے اپنا سفارت خانہ تل ابیب سے یروشلم منتقل کردیں گے۔

مزید پڑھیں >>

بے پَیر کا مجاہد

حضرت عمرو بن الجموح ؓ اور ابراہیم ابو ثریا کی سیرتوں سے ہمیں یہ سبق ملتا ہے کہ انسان کسی بھی حال میں ہو، اس کی صحت کیسی بھی ہو، اس کی عمر چاہے جتنی ہو، اس کا معاشی معیار جو بھی ہو، وہ کیسے ہی حالات سے گھرا ہوا ہو، کیسے ہی مسائل سے دوچار ہو، چاہے جیسی صلاحیت کا مالک ہو، کیسے ہی وسائل رکھتا ہو، لیکن اگر وہ چاہے تو اللہ تعالٰی کی خوش نودی سے بہرہ ور ہوسکتا ہے اور جنت الفردوس کا مستحق بن سکتا ہے _

مزید پڑھیں >>

قبولِ اسلام میں ‘پیار’ (Love) کا عنصر؟

قبولِ اسلام کے پسِ پردہ جنسی کشش کو تلاش کرنا تنگ ذہنیت کی علامت ہے _ مغربی ممالک میں بڑی تعداد میں خواتین اور دوشیزائیں اسلام قبول کر رہی ہیں _ ہندوستان میں بھی ان کی تعداد کم نہیں ہے _ اس کا سبب یہ ہے کہ ہزار منفی پروپیگنڈہ کے باوجود جب اسلام میں خواتین کے حقوق اور مقام و مرتبہ کا انھیں علم ہوتا ہے تو وہ بہت زیادہ متاثر ہوتی ہیں ، اس لیے کہ انہیں اپنے مذہب میں ایسی اعلی تعلیمات نہیں ملتی ہیں _ امریکی نومسلمہ مریم جمیلہ ، برطانوی نو مسلمہ ریڈلی اور حال میں ہندوستانی نو مسلمہ ہادیہ اس کی مثالیں ہیں _

مزید پڑھیں >>

آج کی ‘اُمُّ کُلثُوم’

آج سے 14 سو برس پہلے ، جب قریشِ مکہ کی عداوتیں اپنے عروج پر تھیں ، انھوں نے مسلمانوں کا جینا دوبھر کر رکھا تھا ، جو لوگ اسلام قبول کرتے انھیں وہ خوب ایذا و تعذیب کا نشانہ بناتے تھے _ مسلمانوں نے مدینہ ہجرت کی ، لیکن اس کے بعد بھی ان کے درپے رہے _ یہاں تک کہ ہجرت کے چھٹے سال حدیبیہ کے مقام پر انھوں نے مسلمانوں سے جن شرائط پر صلح کی ان میں یہ شرط بھی تھی کہ جو شخص مدینہ سے مکہ جائے گا اسے واپس نہیں کیا جائے گا ، لیکن جو شخص مکہ سے مدینہ پہنچے گا اسے واپس کرنا ہوگا _

مزید پڑھیں >>

ہادیہ! تیرے حوصلے کو سلام

ہادیہ کو سپریم کورٹ نے اس کے ماں باپ سے آزادی دلادی _ اس طرح سپریم کورٹ کی لاج رہ گئی _ ہادیہ کیرلا کی 24 سالہ نومسلم دوشیزہ ہے _ اس نے طب کا ایک کورس BHMS کیا ہے _ دورانِ تعلیم اسے اسلام کا فہم حاصل ہوا ، چنانچہ وہ مشرّف بہ اسلام ہوگئی _ اس کے بعد اس نے ایک مسلم نوجوان سے نکاح کرلیا _

مزید پڑھیں >>

سادگی سے نكاح کی ایک متواضع کوشش

چاہے لڑکے والے ہوں یا لڑکی والے، سماج کے دباؤ کی وجہ سے رسوم و روایات پر عمل کے لیے اپنے آپ کو مجبور پاتے ہیں اور بہت بے دردی سے پیسہ خرچ کرتے ہیں _ یہ رسوم جب شروع کی گئی ہوں گی تو ممکن ہے سماجی اعتبار سے ان کی کچھ افادیت رہی ہو، لیکن اب یہ سماج کے لیے ناسور بن گئی ہیں _ تھوڑی کوشش کی جائے تو بہ آسانی ان سے پیچھا چھڑایا جا سکتا ہے _

مزید پڑھیں >>