شیخ فاطمہ بشیر

شیخ فاطمہ بشیر

آدھار سے اموات تک

ان اموات نے آدھار کی بِلا ضرورت اہمیت اور غیر ضروری افادیت کے نتیجے میں جہاں حکومت کے ہوش اُڑادئیے وہیں آدھار کو ہر معاملے میں لازمی قرار دینے پر سوالات کے انبار اکھٹے کر دئیے ہیں ۔ کیا اناج مہنگا اور ہماری جانیں اس قدر سستی ہوچکی ہیں یا دل بے حس اور ظالم ہوچکے ہیں ؟کیا موت اس قدرآسان ہوچکی ہیں یا غربت ایک گناہ اور غریبی ایک طعنہ بن چکی ہیں ؟کیا ایک کارڈ کی اہمیت بڑھ گئیہیں یا انسانیت نے دَم توڑ دیا ہے؟سوالات بہت ہیں لیکن۔ ۔ ۔

مزید پڑھیں >>

کیا ہم زندہ قوم ہیں؟

دشمن صف بستہ ہے، ہتھیار سدھائے جاچکے ہیں ، منصوبہ بندی ہوچکی ہے اور تاریخ ظلم و بربریت اور تشدد وہلاکت کی دل دہلا دینے والے حقائق تحریر کرنے کے لئے تیار ہے۔ اگر آج ہم نے اس ظالمانہ رویہ کے خلاف اٹھی بازگشت کو اپنی قلمی و تقریری صلاحیتوں ، دلیری و شجاعت کے میناروں ، جرأت و بیباکی کی داستانوں اور جانی و مالی قربانیوں کے ذریعے سینچ لیا اور بنیانٌ مرصوص کی عملی صفات اپنے اندر پروان چڑھالی تو بعید نہیں کہ اس امّت کا ذرّہ ذرّہ ماہتاب بن جائے

مزید پڑھیں >>

فضائے بدر پیدا کر۔۔۔۔!

اللہ رب العزّت نے اپنی قدرتِ کاملہ کے ذریعے اپنے رب ہونے کی تائید کو ظاہر فرما کر اہلِ ایمان کے حق پر ہونے کو مدلّل فرما یا۔ سچ اور جھوٹ، حق اور باطل، صحیح اور غلط اور کھرا و کھوٹا چھانٹ کر رکھ دیا گیا۔ جنگِ بدر تاریخ کا ایسا مشہور سانحہ ہے جب کفر کی طاقت میدانِ جنگ میں توڑ ڈالی گئی اور اسلام کو بلندی عطا کی گئی۔

مزید پڑھیں >>

گیا وقت پھر ہاتھ آتا نہیں!

رمضان جو نعمتوں ، فضیلتوں ، گناہوں کی بخشش اور مغفرت کا مہینہ ہے، وہیں یہ وہ ’ماہِ مبارک‘ ہے جس میں قرآن پاک کے نزول کے ذریعے ایمان و یقین کی روشنی اور امن و امان کی فضا قائم کردی گئی۔ یہ وہ’ ماہِ مقدس‘ ہے جس میں ایک ایسی متبرّک رات بھی ہے جس میں اللہ کا آخری پیغام انسانوں تک پہنچادیا گیا، جسے قرآن ’خیرٌ مِن الفِ شھرٌ(ہزار راتوں سے بہتر)‘ کہتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

اسلام کا تصور نکاح اور موجودہ شادیوں کی محفلیں!

شادی کا مقصد شرعی طور پر دو افراد کے درمیان ایک پاکیزہ رشتہ قائم کرنا ہے۔ محفلِ نکاح میں ’خطبۂـــ نکاح‘ نکاح کی شرعی حیثیت کو سمجھانے، اسکے تقاضوں کو ذہن نشین کروانے اور اسکے تعلق سے عائد ہونے والی عظیم ذمّہ داریوں کی یاد دہانی ہوتی ہے۔ لیکن ہمارے یہاں یہ محفلیں بجائے سادگی اور پاکیزگی کے، ایک دکھاوا بن کر رہ گئیں ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

پی ایس آئی رزلٹ اور جاگتی اُمیدیں!

امسا ل پی ایس آئی امتحان کے نتائج دیکھ کر اندازہ ہوا کہ الحمداللہ ہمارے نوجوانوں میں اتنی قابلیت موجود ہے کہ وہ بھی اعلٰی سرکاری عہدوں پر فائز ہوسکتے ہیں ۔ ضرورت صرف ہمّت، خواہش، انتھک کوشش اور سخت محنت کی ہے۔ آج ہم نوجوان نسلمحنت، لگن، وقت کی پابندی، بہترین منصوبہ بندی اور اللہ تعالٰی کی ذاتِ اقدس پر توکّل اور یقین سے اُمّتِ مسلمہ کے تاریک دنوں میں اُمّید کی لہریں اور روشنی کی کرنیں بکھیر سکتے ہیں

مزید پڑھیں >>

اُٹھو! یا نیند ابھی باقی ہے؟

آج اسلام دشمن طاقتیں ہر محاذ سے مسلمانوں کو دبانے، کچلنے، ہٹانے اور ختم کرنے کے دَر پہ ہے ۔ مسلم پرسنل لاء پر کاری ضرب اور شریعت میں تبدیلی کا شوشہ تو پہلا حملہ ہے۔ لیکن بڑے افسوس اور شرمندگی کے ساتھ یہ بات ہمیں تسلیم کرنی ہوگی کہ ہم خود بحیثیتِ مسلمان، مسلم پرسنل لاء کا نہ احترام کرتے ہیں اور نہ اس پر عمل کرنے کی کوشش۔ جو قانون ہمیں اسلام اور شریعت کے صحیح غلط پہلوؤں سے آگاہ کرکے اسکی طرف رہنمائی کرتا ہیں ، ہمیں اس سے کسی طرح کا کوئی واسطہ نہیں ۔

مزید پڑھیں >>

موجودہ حالات اور مسلمان نوجوان!

جس قوم پر دن میں پانچ وقت کی نمازیں، وقت کی پابندی کے ساتھ فرض کی گئی ہے۔ اسی قوم کے نوجوان دن میں 12 بجے صبح کرتے ہیں۔ د وپہر 2 بجے ناشتے سے فارغ ہوتے ہیں۔ شام4 بجے گھر سے باہر نکلتے ہیں۔ رات گئے تک دوستوں کی محفلیں ہوتی ہیں۔ کبھی سڑکوں پر، کبھی سنیما گھروںمیں اور کبھی راستہ چلتی لڑکیوں پر فقرے کَس کر اور نعرے بازی کرکے رات12 بجے اِن کی گھر واپسی ہوتی ہے۔ پھر صبح 4 بجے تک سوشل میڈیا یا فلموں کا دور ہوتا ہے اور جب مساجد سے فجر کی اذانیں آسمان کی فضاؤں میں بلند ہوتی ہے، تب اِنکی آنکھیں نیند کے لیے بند ہوتی ہے۔

مزید پڑھیں >>