سیّد احمد قادری

سیّد احمد قادری
ڈاکٹرسیّد احمد قادری معروف کالم نویس ہیں۔

بھرشٹ نیتا بی جے پی میں آئیں اور بھرشٹاچار مکت ہو جائیں

یہ بات  کسی سے بھی پوشیدہ نہیں کہ کرونا ندھی کے خاندان کے بیشتر افراد ٹو جی اسپیکٹرم گھوٹالے میں بری طرح پھنسے ہوئے ہیں او رکئی تو  اس سلسلے میں جیل یاترا بھی کر چکے ہیں ۔ ابھی چند روز قبل نریندر مودی مدراس دورے پر گئے، تو وہ خاص طور پر ڈی ایم کے پارٹی کے سربراہ کرونا ندھی سے ملنے ان کی رہائش گاہ پر پہنچے ۔ باتیں کیا ہوئیں ، یہ ابھی طشت از بام نہیں ہوئی ہے، لیکن کچھ نہ کچھ جلد سامنے آنے کی توقع ہے۔

مزید پڑھیں >>

مولانا ابولکلام آزاد کی صحافتی بصیرت   

  مولانا آزاد نے صرف چوبیس، پچیس سال کی عمر میں صحافت کا جو اعلٰی معیار قائم کیا تھا، اور جس طرح کے  لب و لہجہ اور اسلوب سے روشناس کرایا تھا، ان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ معیار، لب و لہجہ اور اسلوب اپنے ساتھ لیتے گئے۔ حقیقت یہ ہے کہ مولانا آزاد اگر سیاست کی دنیا میں داخل نہیں ہوتے، تو بھی وہ صحافت کے مرد آہن کے طور پر ہمیشہ یاد کئے جاتے۔ اردو کی صحافت مولانا آزاد کی صلاحیتوں کی ہمیشہ مقروض رہے گی۔

مزید پڑھیں >>

گزشتہ چار سال کے کرپشن اور وسندھرا حکومت کاخوف

موجودہ حکومت  پورے ملک میں منافرت، عدم رواداری، گائے، گؤ مانس، گؤ رکشا، مدرسہ، وندے ماترم، لو جہاد، گھر واپسی، پاکستان جاؤ وغیرہ  جیسے فروعی معاملات کی بجائے ملک کے عوام کے بنیادی مسائل پر توجہ دیتی، تو شائد اتنی جلد انھیں عوام سے اتنا زیادہ خائف نہیں ہونا پڑتا۔ بیرون ممالک میں جس طرح ملک کی شبیہ بن رہی ہے اور میڈیا جس طرح ملک کے حقائق کو اجاگر کر رہا ہے، ا س سے یقینی طور پر مستقبل قریب میں بہت زیادہ نقصان ہوگا۔ یوں بھی کرپشن، لا قانونیت، منافرت، بہت تیزی سے گرتی معیشت وغیرہ پر بیرون ممالک میں تشویش کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ ہر سال کے سروے میں ملک پچھڑتا جا رہا ہے، لیکن ملک پر حکومت کرنے والوں کوان مسائل کی قطئی پرواہ نہیں۔

مزید پڑھیں >>

مودی حکو مت اپنوں کے نشانے پر:  الٹی گنتی شروع

 ان تمام حالات کو دیکھتے ہوئے یہ خیال شائد غلط نہیں کہ اس وقت ملک بہت ہی نازک اور خطرناک حالات سے گزر رہا ہے۔ حکومت اور بھاجپا دونوں ہی کی بہت تیزی سے گرتے گراف سے  یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ مودی حکومت کی اب یقینی طور پر الٹی گنتی شروع ہو گئی ہے۔

مزید پڑھیں >>

عدم تشدّد کے پیامبر مہاتما گاندھی خود تشدّد کے شکار

عدم تشدد کے پیامبر مہاتما گاندھی خود ہی ان دنوں متعصبانہ، فرقہ وارانہ اور جارحانہ ذہنیت کے لوگوں کے نشانے پر ہیں، ایسے میں مہاتما گاندھی کی تعلیمات او رنظریات پرعمل تو دور ان کی شناخت تک مٹانے کے لئے یہ لوگ درپئے ہیں ۔ ان کے قاتل کو نہ صرف بے گناہ بلکہ مسیحا تک قرار دیا جا رہا ہے اور ان کے قاتل کی جگہ جگہ مجسمہ لگانے اور ان کی عقیدت میں مندر تک تعمیر کرنے کی کوششیں ہو رہی ہیں۔

مزید پڑھیں >>

امت شاہ نے بچھائی 2019 ء کے عام انتخابات کی بساط

اس وقت بھارت کا سیاسی منظر نامہ بہت تیزی سے بدل رہا ہے۔  خاص طور پر ادھر سپریم کورٹ کے دو فیصلوں اور سی بی آئی کی ایک عدالت کے ایک فیصلہ نے پورے ملک کو ایک عجیب دوراہے پر کھڑا کر دیا ہے۔   اب جبکہ لوک سبھا کے عام انتخابات میں صرف ایک سال،  نو ماہ اور کچھ دن رہ گئے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

فراموش کی جا رہی ہیں جنگ آزادی میں مسلمانوں کی قربانیاں

 ہندوستان پر زبردستی قابض ہونے والے اور ہندوستانیوں کو اپنا غلام بنانے والے انگریزوں کے خلاف جدو جہد اور دی گئی قربانیوں میں یہاں کے مسلمانوں کا جو تاریخی رول رہا اور ان مسلمانوں نے اپنے اُوپر ہو نے والے ظلم وبربریت اورقتل و غارتگری کے خلاف جس طرح  نبرد آزما رہتے ہوئے ملک کوانگریزوں کے ناپاک چنگل سے آزاد کرانے میں کامیاب ہوئے ۔ یہ سب واقعات ، سانحات اور حادثات ہمارے ملک کی تاریخ کا  اہم حصہ ہیں ، جو سنہری حروف میں لکھے گئے ہیں اور باوجود منظم طور پر ان تاریخی حقائق کو مسخ  کرنے کی کوششوں کے بعد بھی تمام تر شواہد کے ساتھ ملک اور بیرون ممالک کی لائبریریوں میں موجود ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

عالمی یوم آبادی اور ہمارے ملک بھارت کا منظر نامہ

آج( 11 جولائی) عالمی یوم آبادی ہے۔ گزشتہ کئی سال کی طرح اس سال بھی عالمی سطح پر 11 ؍جولا ئی کو عالمی یوم آبادی کا انعقاد کیا جائے گا ۔ جس میں سیمنار، سمپوزیم، تقاریر اور مختلف نمائشوں و ٹیلی ویژن مباحث کے ذریعہ یہ بتانے کی کوشش کی جائیگی کہ بڑھتی آبادی کے باعث اس وقت پوری دنیا کن مسائل سے دوچار ہے ۔دراصل عالمی سطح پر بہت تیزی سے بڑھتی آبادی کی وجہ کر وسائل کی کمی سے انسانی زندگی میں طرح طرح کے مسائل پیدا ہو رہے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

مودی حکومت کی بظاہر کامیابی کا سفر اور مُلکی حقائق

اب ایسی صورت حال میں ہمارے ملک کے وزیر اعظم اور دوسرے ’ ذمّہ دار ‘ وزرأ ملک کے عوام کے سامنے ملک کی جس طرح کی تصویر پیش کر رہے ہیں ، وہ زمینی حقائق سے کوسوں دور ہے۔ میں یہ بات مانتا ہوں کہ موجودہ حکومت کو پارلیامنٹ اور بیشتر ریاستوں میں بھاری اکثریت حاصل ہے اور وہ اپنے ’ہندوتو‘ ایجنڈے پر کافی تیزی سے آگے بھی بڑھ رہی ہے۔ لیکن خوف اس بات کا ہے کہ بھارت کے عوام جب کبھی مڑ کر ’ہندوتو‘ ایجینڈے کے ساتھ ساتھ اپنی غربت، بے روزگاری، صحت، تعلیم، سماجی استحصال، اقتصادی مساوات اور آزادیٔ اظہار پر نظر ڈالینگے، تو پھر کیا ہوگا ؟ اس لئے کہ ایسی ہی بھاری اکثریت سے نوازنے والی عوام، اب سے تیس سال قبل کانگریس کو پارلیامنٹ میں 414 اور بھارتیہ جنتا پارٹی کو 2 سیٹوں تک پہنچا چکی ہے ۔

مزید پڑھیں >>

عالمی یوم مزدور اور محنت کشوں کا حال زار

میں سمجھتا ہوں کہ مزدور اگر دوسروں پر بھروسہ کرنے کی بجائے خود پر زیادہ بھروسہ کریں اور اپنے غم غلط کرنے کے لئے شراب سے دور رہ کر اپنے بچوں کی خاطر ایثار و قربانی دے کران کی تعلیم پر خصوصی توجہ دیں تو، اتنا ضرور ہے کہ ان کے بچوں کا مستقبل ضرور سنو رجائے گا ۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ کم از کم ہر یوم مزدور کے موقع پر ایسے تمام ممالک میں ، جہاں مزدوروں کی حالت حیوانوں سے بھی بدتر ہے ، وہاں ان کی اور ان کے بال بچوں کی بہتر طرز زندگی کے لئے بہت سنجیدگی سے لائحہ عمل تیار کیا جائے ، تاکہ زندگی کے دوڑ میں یہ بہت پیچھے نہ رہ جائیں ۔

مزید پڑھیں >>