مولانا سید آصف ندوی

مولانا سید آصف ندوی

امام و خطیب مسجد قدسیہ ناندیڑ ، صدر جمعیت علماء، شہر ناندیڑ.

حج سبسڈی: کفر ٹوٹا خدا خدا کرکے

حج چونکہ مسلمانوں کا ایک عظیم الشان دینی فریضہ اور مذہبی معاملہ ہے  اس لئے وہ اس معاملے کو مسلمانوں ہی کی صواب دید پر چھوڑ دے اور اس میں کسی بھی طرح کی کوئی مداخلت ہی نہ کریں ۔ وزیر اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے اس سبسڈی کے خاتمے کے اعلان کے ساتھ جو اس بات کا وعدہ کیا ہے کہ حکومت بچے ہوئے سالانہ سات سو پچاس کروڑ روپئے اقلیتوں کی فلاح وبہبود اور بالخصوص مسلمان لڑکیوں کی تعلیم پر صرف کریگی۔وہ اپنے اس وعدے پر عمل در آمدکو یقینی بنائے۔

مزید پڑھیں >>

آہ! بیچاروں کے اعصاب پر عورت ہے سوار

  اسلام نے عورت کو جو مقام ومرتبہ دیا ہے اس کا استقصاء اس مختصر مضمون میں نا ممکن ہے، اس کے لئے تو ایک مستقل و ضخیم دفتر درکار ہے، میں نے نہایت ہی اختصار کے ساتھ اسلام کے علاوہ دیگر مذاہب میں عورتوں سے متعلق پائے جانے والے تصورات ونظریات اور اسلام میں بیان کردہ ان کے حقوق اور ان سے متعلق رسالت مآب  ﷺکے چند ارشادات مبارکہ کی طرف اشارہ کیا ہے تاکہ ملت اسلامیہ ہندیہ کے سادہ لوح افراد حکومت و میڈیا کے ذریعے پیدا کئے گئے اس مسموم پروپیگنڈے کا شکار نہ ہونے پائیں ۔

مزید پڑھیں >>

لہو مجھکو رلاتی ہے جوانوں کی تن آسانی

 کسی بھی قوم کی ترقی اور معاشرہ کے استحکام میں اس کے نوجوان ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں، کیونکہ ایک روشن و تابناک مستقبل کا انحصار ان ہی پر ہوتا ہے۔ اگر نوجوان اپنے مقصد حیات اور منزل مقصود تک پہنچانے والی صحیح سمت یا راہ سے بھٹک جائیں تو وہ معاشرہ عدم استحکام کا شکار ہوجاتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

آثار قلم

 آثار قلم استاذ محترم کی ان شاہکار تحریروں کا مجموعہ ہے جو انہوں نے مختلف ادوار و اوقات میں آسمان صحافت کے اپنے وقت کے ماہ تمام و بدر کامل اور ریاست مہاراشٹرا کے عظیم الشان بافیض ادارے معہد ملت مالیگاؤں کے ترجمان پندرہ روزہ گلشن کے لئے دینی، علمی، اصلاحی اور دیگر متنوع موضوعات پر حوالہء قرطاس کئے تھے۔

مزید پڑھیں >>

اپنے ووٹ کی اہمیت کو سمجھیے!

  لہذا ووٹر حضرات کو چاہئے کہ اپنا بیش قیمت ووٹ دینے سے قبل اپنے ووٹ کی طاقت و اہمیت اور اس کی دینی وشرعی حیثیت کو خوب اچھی طرح سمجھ کر کسی کو اپنا ووٹ دیں ۔  خود غرضی، عارضی مفادات، قرابت و تعلقات، دوستانہ مراسم  یا کسی کی غنڈہ گردی کے ڈر و خوف کی وجہ سے جھوٹی شہادت جیسے حرام اور کبیرہ گناہ کا ارتکاب نہ کریں۔ 

مزید پڑھیں >>

جلتے گھر کو دیکھنے والوں!

یاد رہے کہ تماشائی اکثر تماشہ بن جایا کرتے ہیں ، آگ جب جلتی ہے تو وہ قصر شاہی و کاخ فقیر سبھی کو خاکستر کر ڈالتی ہے ،ظلم وستم اور نفرت و عداوت کی جب مسموم ہوائیں چلتی ہیں تو پھر وہ آگ کسی مخصوص گھر ہی کو نہیں بلکہ اڑوس پڑوس کے تمام مکانات کو راکھ کے ڈھیر میں تبدیل کردیتی ہے ۔

مزید پڑھیں >>

ایک رمضان ایسا بھی!

رمضان المبارک ایک ایسا مہینہ ہے جو رب کائنات کی طرف سے ہم جیسے ہوا و حرص اور عصیاں کے دلدل میں پھنسے حرماں نصیبوں کے لئے رحمتوں و مغفرتوں کی نویدِ جاں فزا اور دیگر ڈھیر ساری برکات و انعامات کی سوغاتِ روح افزا لے کر آتا ہے، یہ مہینہ ایک ایسی فصلِ بہار ہے جس میں خالق کائنات کی خاص عنایات اپنے بندوں کی طرف متوجہ ہوتی ہیں ، یہ وہ ماہِ مقدس ہے جس میں اللہ رب العزت کا کلام معجز بیان قرآن کریم نازل ہوا ،

مزید پڑھیں >>

نہ سمجھو گے تو مٹ جاؤگے ائے ہندوستاں والوں!

ملک عزیز کے مسلمانوں کو اس کمی کو پورا کرنا ہوگا اور ظاہر سی بات ہے انتظامیہ میں شمولیت کی یہ کمی اعلیٰ تعلیم کے حصول کے بغیر ممکن نہیں ہے۔ ملک عزیز کے ہر شہر اور ہر دیہات میں ان گنت مسلم تنظیمیں ، جماعتیں ، فاؤنڈیشنس، فورمس خدمتِ انسانیت اور سماجی و معاشرتی فلاح وبہبود کے نام سے سرگرم عمل ہیں ، اور الحمدللہ وہ مختلف نوعیت کی فلاحی خدمات انجام بھی دے رہے ہیں (دست بدعا ہوں کہ اللہ ان کی کاوشوں کو مقبول و مشکور فرمائے اور انہیں مزید توفیق عمل مرحمت فرمائے ) ۔

مزید پڑھیں >>

وقف املاک امانت و رحمتِ خداوندی ہے!

آج اگر ہم وطن عزیز بھارت میں موجود مسلم معاشرہ کا ایک طائرانہ جائزہ بھی لیتے ہیں تو ہم یہ دیکھتے ہیں کہ وہ تعلیمی ، اقتصادی، سیاسی ، سماجی ومعاشرتی غرض یہ کہ ہر میدان عمل میں زبوں حالی و پسماندگی کا شکار ہے ۔ جب کہ اس کے سامنے اس کے اپنے آباء و اجداد اور پرکھوں کے ذریعے وقف کردہ اربوں اور کھربوں کی املاک و اراضی موجود ہیں ، لیکن حیف در حیف کہ زیادہ تر املاک دنیادارمفاد پرست متولیوں ، سیاسی بازیگروں ، لینڈ مافیاؤں اور سرکاری محکمہ جات کی خرد برد کا شکار ہے ۔ اور اس سے بھی بڑا المیہ یہ ہے کہ ملت اسلامیہ ہندیہ کے زیادہ تر ارباب فکر و دانش اس اہم ترین مسئلے کی طرف سے آنکھیں موند ے خواب خرگوش کے مزے لینے میں لگے ہوئے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

خدمت خلق کے لئے پیدا کیا انسان کو!

آج موجودہ حالات میں اس بات کی بہت سخت ضرورت ہے کہ و ہ تمام افراد، مکاتب فکر، جماعتیں اور تنظیمیں جو کسی نہ کسی سطح پر اور کسی نہ کسی حوالے سے مذہبی، دعوتی، تبلیغی اور تعلیمی وغیرہ خدمات انجام دے رہے ہیں ، وہ لوگ خدمت خلق اور رفاہی میدان عمل میں رسالت مآب ﷺ کی سنت مبارکہ اور صحابہ کرام کے طریقوں پر عمل پیرا ہو کر حالات کا شکار اور مسائل سے جوجھ رہی انسانیت کے دکھ درد کا مداویٰ کرنے ، ان کے زخموں پر مرہم رکھنے اور ان کے مصائب و مسائل کو حل کرنے کی بھی کوششیں کریں ۔ اگر ایسا ہوا تو یہ بات یقین کے ساتھ کہی جاسکتی ہے کہ انشاء اللہ بہت جلد اور بڑی تیز رفتاری کے ساتھ حالات اسلام کے حق میں ہوتے چلے جائیں گے۔

مزید پڑھیں >>