کشمیر کا المیہ: تیری رہبری کا سوال ہے

ستر سال کے عرصے میں برف کی سفید چادر سے ڈھکی وادیوں میں نہ جانے کتنی بار سرخ خون سے ہولی کھیلی جا چکی ہے۔ ایسا نہیں ہے کہ اس المیہ میں جو جانیں تلف ہوئیں وہ صرف  علیحدگی پسند یا باغیوں کی تھی۔ اس خونیں معرکے میں ملک کے بے شمار فوجی جوان بھی…

بہت دیر کی مہرباں جاتے جاتے

امریکہ کی تاریخ میں سفید فام صدور کی ایک طویل تاریخ کے بعد کسی سیاہ فام کا منصب صدارت پر فائز ہونا ایک تاریخی واقعہ تھا۔ دنیا کو اس تبدیلی  سے بہت کچھ امیدیں تھیں خصوصاً عالم اسلام کے تناظر میں اوبامہ کی آمد کو بڑے مثبت انداز میں دیکھا…

ڈھونڈوگے ہمیں ملکوں ملکوں، ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم

مولانا کا تعلق کسی برسر اقتدار اشرافیہ سے نہیں تھا۔ وہ ملک میں اس اقلیت کی نمائندگی کررہے تھے جسے پوری منصوبہ بندی کے ساتھ پسماندگی کی عمیق کھائی میں ڈالا گیا تھا۔ ایسی کمیونٹی کے لیے ایسےدگر گوں حالات  میں انھوں نے جس روشن مستقبل کی اساس…

سیاست میں مسلمانوں کی نمائندگی: اندیشے اور امکانات

 یہ حقیقت انتہائی تلخ   ہےکہ متحدہ قومیت کے تصورنے ایک بڑی آبادی کا بہت بری طرح استحصال کیا ہے۔ 'متحدہ قومیت' یقیناً ایک کثیر المذاہب اور متنوع ثقافت والی آبادی کی ناگزیر ضرورت ہے۔ لیکن اس پر غور کیا جانا چاہیے کہ آیا ہمارے لیے دستوراساسی …

صاحب! صرف بل نہیں، دل بھی بد لیے

اخلاقیات کا دائرہ وسیع بھی ہے موثر بھی ہے جس کی وجہ سے عام حالات میں صرف ضمیر کی ملامت کا خوف ہی بڑے بڑے جرائم کی راہ میں رکاوٹ بن سکتا ہے۔ ہمیں اپنے سماج میں ایسے اقدار کو فروغ دینے کی ضرورت ہے جس میں انسانیت سوز نفسیات یا تو جنم ہی نہ…

تین طلاق: سادگی اپنوں کی دیکھ۔۔۔۔۔

تین طلاق کو کالعدم قرار دینے کا ارادہ رکھنے والے جیالے بطور خاص اس نکتے پر زوردیتے نظر آتے ہیں کہ مسلم قوم خصوصاً علما نے اس مسئلے میں برہمن واد کی مثال قائم کی ہے ۔اتنے نازک وقت میں ایک مزید الزام کو برضا ورغبت اپنے سرلے لینا انتہائے سادگی…

کوئی مجھے آواز نہ دے!

معروف گلوکار سونو نگم نے کئی ایک ٹویٹس کے ذریعہ 'آذان ' کے خلاف اپنی آزادی کی دہائی دی ہے ۔ ان کے بقول آذان کی آواز ان کے خواب گراں میں خلل کا باعث ہے ۔ جس آو بھاو کے ساتھ وہ لاوڈ اسپیکر پر آذان دینے کو ایک فرد جرم کے خانے میں ڈالنا چاہتے…

     پرسنل لا کے تئیں مسلم خواتین کی حمیت دینی  کو سلام

دنیا میں وفاداری کے جو مختلف معیارات  ہر دور کے اندر موجود رہے ہیں ان میں کامل اطاعت کو بجا طور پر مثالی سمجھا گیا ہے،تاہم  کسی نظام سے وفاداری کا ایک پہلو اس کی حمایت اور نصرت بھی ہے ۔ہم کسی تعلق کو بقدر امکان جانچنے کے لئے برے…

ایک شمع رہ گئی تھی سو وہ بھی خموش ہے

ہندستان کی علمی تاریخ میں جن خانوادوں کو رشک کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے ان ہی میں سے ایک کنبہ معروف اہل قلم ،مفسر اور قدیم وجدید علوم کے رمز شناس مولانا عبد الماجد دریابادی ؒ  کا خانوادہ بھی ہے۔آپ کے گھرانے میں متعدد ایسی شخصیات جنم لیتی رہی…

ستائی جائیں گی حوّا کی بیٹیاں کب تک؟

آزادی نسواں کی تحریک کے مخلص خدام جو عورت کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کے لئے قدامت اور مشرقیت جیسے اسباب کو ذمہ دار گردانتے تھے ان کی جدت پسندی نے کیا عورت کو عزت کے مقام مطلوب پر فائز کردیا ہے ؟ اگر ہاں تو کس قیمت پر ؟ اگر نہیں تو پھر اس…

اپنے بھی خفا مجھ سے ہیں بیگانے بھی نا خوش

عبیدالکبیران دنوں سماجی رابطے کی سائٹ فیس بک پر پڑوسی ملک کے ایک کرکٹر کی ایک ٹویٹ پر ناظرین کے تبصروں کا چرچا ہے۔ یہ موضوع اگر چہ اس قدر کا مستحق تو نہ تھا کہ اس کے لئے ہمیں کچھ لکھنے اور آپ کو کچھ پڑھنے کی زحمت اٹھانی پڑتی تاہم یہ…

سیرت نبوی اور ہم:غوروفکر کے چند پہلو

عبیدالکبیربلا شبہ نبی اکرم ؐ کی پاک زندگی اس جہان کاف و نوں کا ایک سدا بہار موضوع ہے ۔ ابتدائے آفرینش سے لے کر اب تک زبان وقلم  نے ہزار پیرایوں میں اس پاکیزہ اور حیات بخش موضوع پر اپنے جذبات کا اظہار کیا ہے ۔تاریخ کے وسیع وعریض…

خطبہ حجۃ الوداع – وہی چراغ جلاؤ تو روشنی ہوگی

عبیدالکبیر اس حقیقت سے انکار ممکن نہیں کہ  انسان کی زندگی جو  فرد اور جماعت کے پہلو بہ پہلو مسائل سے عبارت ہے اپنے وجود اور بقا کے لئے کچھ ایسے بنیادی اصول کی محتاج ہے جن کی پاسداری سے انسانی معاشرہ فوز وفلاح کے راستے میں اپنا پر امن سفر…

ہم ہیں متاعِ کوچہ و بازار کی طرح

عبیدالکبیر کسی نے بالکل درست کہا ہے کہ دنیا میں قدرتی حادثات سے لوگوں  کو  کبھی اتنا نقصان نہیں پہنچا جتنا غلط مشوروں اور غلط انداز فکر کی بنا پر انسانوں کو جھیلنا پڑا ہے۔ اگر انسان کی داخلی اور خارجی دنیا میں غور کیا جائے تو صاف طور پر…

اے خانہ بر اندازِ چمن، کچھ تو اِدھر بھی

عبیدالکبیر پندرہ اگست کو حسب روایت وزیر اعظم نے تاریخی لال قلعہ کی فصیل سے ہندستان کی عوام کو مخاطب کیا۔ یوم آزادی کے موقعہ پر بھارت کے وزرائے اعظم کے خطابات ہمیشہ سے اہمیت کے حامل رہے ہیں۔ لوگ ان تقریروں کو بڑے تپاک سے سننے کے عادی بھی…

آزادی کی رسم اور روح : ایک جائزہ

عبیدالکبیر آ ج کی مہذب دنیا میں بنی نوع انسان کے اندر رسم اور روح میں عدم یکسانیت کا معاملہ  بہت نمایاں ہے۔ کسی بھی چیز کے تئیں آج کی دنیا کارویہ کچھ عجیب قسم کا ہو چلا ہے۔ آج ہم دنیاوی معاملات میں اور بسا اوقات دینی معاملات میں بھی کسی…

ترکی کا تلاطم : سادگی اپنوں کی دیکھ!

عبیدالکبیر گذشتہ ماہ ترکی میں پیش آنے والے فوجی بغاوت کے بعد سے ترک صدر طیب اردگان  جو اقدامات عمل میں لا رہے ہیں  ان پر مختلف قسم کے تبصرے کئے جا رہے ہیں۔ ترکی کے حالات اور وہاں کی تبدیلیوں پر کچھ لوگ جہاں صدر طیب اردگان کی نکتہ چینی کرتے…

دلت مسلم اتحاد : خدشات اور امکانات

عبیدالکبیر گذشتہ دو برسوں سے ملک میں اقلیتوں کے ساتھ جو ناروا سلوک روا رکھا گیا  اس کے تئیں مرکزی حکومت کا رویہ انتہائی غیر سنجیدہ رہا ہے۔ جب سے مرکز میں این ڈی اے کی حکومت تشکیل پائی ہے تبھی سے ایسے متعدد واقعات برابر دیکھنے میں آئے جو…

لہو کے داغ ملے آدمی کے دامن میں

عبیدالکبیر جدید دور کی سائنسی ترقی نے انسانی دنیا میں جو انقلابات برپا کئے ہیں ان میں سے ایک عظیم انقلاب آلات حرب وضرب  کی فراہمی کے میدان میں بھی رونما ہوا ہے۔ آج انسانی دنیا اسلحہ سازی کے میدان میں ایک دوسرے سے بازی لے جانے پر تلی ہوئی…

متحد ہو کے بدل ڈالو نظام گلشن

عبیدالکبیر ان دنوں بھارت کے مختلف علاقوں میں ایک خاص ذہنیت کے لوگ اپنی شر پسندی کا طوفان برپا کرنے کی بھر ہور کوشش میں مصروف ہیں۔ بات چاہے گجرات کی ہو یا پھر یوپی مدھیہ پردیش اور  راجستھان کی تقریباً ہر جگہ کچھ ایسے حالات پیدا کئے جارہے…

خواتین کا استحصال اور اسلامی قانون کی افادیت

عبیدالکبیر آج کی دنیا میں انسانی دنیا جوں جوں ترقی کی منزلیں طے کرتی جارہی ہے اسی کے ساتھ ساتھ انسانی سماج میں گھناونے جرائم کی شرح بھی روز افزوں ہے۔ ویسے تو اس ہائی ٹیک زمانے میں جرائم کی نت نئی شکلیں وجود میں آچکی  ہیں مگر خصوصیت کے ساتھ…

بات تو سچ ہے مگر بات ہے رسوائی کی

عبیدالکبیر بھارت میں بھکاریوں کے اعداد وشمار پر مشتمل جو خبر یں آرہی ہیں ان کے حوالے سے لوگ عجیب قسم کی رائے زنی میں مبتلا نظر آتے ہیں۔ خبر یہ تھی کہ ہندستان میں بھیک مانگنے والا ہر چوتھا شخص مسلمان ہے گویا بھکاریوں کی کل تعداد کا پچیس فی…

لمحے خوشی کے خواب گراں بن کے رہ گئے

عبیدالکبیر موجودہ مرکزی حکومت کے برسراقتدار آنے سے قبل وزیر اعظم اور ان کی جماعت نے سوا سو کڑوڑ عوام کو جو خواب دکھائے تھے وقت گذرنے کے ساتھ وہ سارے ہی خواب یکے بعد دیگرے ٹوٹ ٹوٹ کر بکھرتے جا رہے ہیں۔ مہنگائی ،بے روزگاری جیسے بنیادی مسائل…

شراب پر پابندی : نیکی اور پوچھ پوچھ

عبیدالکبیر پچھلے دنوں جب یوپی میں  چار لوگوں کو زہریلی شراب کی وجہ سے زندگی سے ہاتھ دھونا پڑا اس کے بعد ایک بار پھر شراب پر پابندی کا مسئلہ موضوع بحث بن گیا ہے۔شراب پر پابندی بھارت میں کوئی غیر متعارف چیز نہیں ہے ۔اس سے پہلے ملک کی ریاست…