محمد وسیم احمد

محمد وسیم احمد

محمد بن سلمان کا معتدل اسلام؟

معتدل اسلام کے نام پر جدیدیت اور مغربیت کو بڑھاوا دینے کے نتیجے میں سعودی عرب میں امن و سکون کو خطرہ لاحق ہوجائے گا اور حکومت اور عوام کے درمیان بے چینی سے عالمِ اسلام اور مسلمانوں کے درمیان نئے نئے مسائل جنم لیں گے، اس لئے محمد بن سلمان کو یہودیوں اور عیسائیوں کے ناپاک عزائم، ان کی سازشوں اور اپنے ملک کے اندرونی اور خاندانی مسائل کو سمجھ کر بہتر حل نکالنے کی کوشش کرنی ہوگی۔

مزید پڑھیں >>

ڈاکٹر ذاکر نائک اغیار کے نشانے پر

اس وقت ڈاکٹر ذاکر نائک ملیشیا میں ہیں۔ تو اخبارات نے بھی وہاں پر ان کی موجودگی کا ذمہ دار ملیشیائی حکومت کو ٹھہرا کر دہشت گردی اور شدت پسندی کا الزام لگایا ہے، جو کہ انتہائی قابلِ افسوسناک ہے، خبر کے مطابق ہندوستانی حکومت نے ڈاکٹر ذاکر نائک کے خلاف ابھی تک سرکاری طور پر تحریری صورت میں ملیشیائی حکومت کو ان کی دہشت گردی سے متعلق آگاہ نہیں کیا ہے۔

مزید پڑھیں >>

جامعہ ملیہ اسلامیہ کا 97 واں یومِ تاسیس

 اس یونیورسٹی نے ملک کے لئے ہمیشہ مثبت کردار ادا کیا ہے، جامعہ کی تاریخ میں بھی مشکل حالات آےء، مگر سلام ہے جامعہ کے محسنوں اور اس کے خیرخواہوں پر، جنهوں نے خود پریشانیاں برداشت کیں مگر جامعہ پر آنچ نہیں آنے دی- اور جامعہ کو تناور اور ثمر دار درخت بنا کر ہی دم لیا، آج بھی جامعہ اغیار کی آنکھوں میں کھٹک رہی ہے، مگر پھر بھی قوم کی دعاؤں سے جامعہ پوری شان و شوکت کے ساتھ ملک و قوم کے افراد کو تعلیم و تربیت سے آراستہ کرنے میں اہم رول ادا کر رہی ہے- آج جامعہ کے قیام کے مقصد کا یومِ عہد بھی ہے-

مزید پڑھیں >>

ہریانہ کے اسکول میں معصوم  بچے کا قتل

گڑگاوں (ہریانہ) میں Riyan International School کے 7 سالہ اور درجہ دوم کے معصوم طالبِ علم پردیومن کا بس کنڈیکٹر کے ہاتھوں بے رحمی سے قتل کیا جانا انتہائی افسوسناک ہے ، خبر کے مطابق بچہ بیت الخلاء میں گیا ، تو پہلے سے موجود وہاں بس کنڈیکٹر نے اس بچے کو پکڑ کر اس کے ساتھ جنسی زیادتی کی کوشش کی ، بچے نے شور مچانے کی کوشش کی تو 42 سالہ بس کنڈیکٹر اشوک نے چاقو سے گلے پر دو بار حملہ کر کے قتل کر دیا ، مجرم نے جرم قبول کر لیا ہے

مزید پڑھیں >>

بابا گرمیت رام رحیم کے جرم پر خاموشی کیوں؟

بابا گرمیت رام رحیم ایک سکھ تنظیم "ڈیرہ سچا سودا" کا صدر ہے، یہ تنظیم 1948 میں بنی، 1990 میں اس تنظیم کی کمان گرمیت سنگھ کے ایک نوجوان نے بابا رام رحیم کے نام سے سنبھالی، اس وقت اس تنظیم سے 6 کروڑ لوگ وابستہ ہیں ، بابا رام رحیم ہندو مذہبی رہنما کے علاوہ گلوکار، پاپ سنگر، فلمی ہیرو، سماجی کارکن بھی ہے، اس بابا پر ایک صحافی کے قتل کرنے کا الزام بهی ہے۔

مزید پڑھیں >>

رویش کمار کی صحافتی حق گوئی

صحافت کی ذمہ داری کو بخوبی نبھانے اور عوام کو سچ سے آگاہ کرنے میں صحافت کی دنیا میں ایک اہم نام جناب رویش کمار صاحب کا ہے ، آج اسکول ہوں یا کالج ، مدارس ہوں یا یونیورسٹیاں ہر جگہ صحافت کے حوالے سے صرف ایک نام ہر زبان پر ہے اور وہ نام ہے رویش کمار صاحب کا-

مزید پڑھیں >>

حامد انصاری کی سچ بیانی پر ہنگامہ کیوں؟

حامد انصاری کے ایک بیان پر ان کو ہر طرف سے گھیرنا اور میڈیا کے ذریعے ان کو مشکوک بنانے کی کوشش کرنا کسی لحاظ سے درست نہیں ہے، وہ ہندوستان کے ایک اہم عہدے پر دس سالوں سے رہے ہیں، باصلاحیت شخص ہیں، 26 جنوری کے دن سلامی کے دوران انهوں نے ہی مودی کو سمجھایا تھا کہ آپ کو سلامی نہیں دینی ہے، اور یہی لوگ آج ان کو درس دے رہے ہیں، اسد الدین اویسی نے حامد انصاری کے بیان کی تائید کی ہے اور تنگ نظروں سے درخواست کی ہے کہ وہ حامد انصاری کی تمام تقریروں کو پڑھیں تو ان کی سمجھ میں سب آ جائے گا-

مزید پڑھیں >>

ڈاکٹر ذاکر نائک: دیارِ کفر و شرک میں اسلام کی ایک آواز

آج ضرورت آن پڑی ہے کہ اسلام کو ایک عزت کا مقام دیا جائے، دیارِ کفر و شرک میں اسلام کے ایک اہم میزبان ڈاکٹر ذاکر نائک کی مکمل حمایت کی جائے، آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ مسلمان ایک کنبے اور جسدِ واحد کی مانند ہیں، اس کے تحت ڈاکٹر ذاکر نائک سے محبت کا اظہار کیا جائے۔

مزید پڑھیں >>

شاہ سلمان ! آپ کی جرأت کو سلام

شاہ سلمان کے حکومت سنبھالنے کے بعد امریکی صدر اوباما 26 جنوری 2015 کو ہندوستان کا دورہ مکمل کر کے سعودی عرب کی راجدھانی ریاض پہنچا ، تو دنیا نے عہدِ نبوی کا ایک نمونہ دیکھا- کہ شاہ سلمان سپر پاور امریکہ کے صدر اوباما کا استقبال کرنے کے بجائے اذان کی آواز سن کر بارگاہِ الٰہی میں سجدہ ریز ہونے کے لئے پہونچ گئے-

مزید پڑھیں >>

چلتی ٹرین میں 16 سالہ جنید کا قتل

بهیڑیں دو طرح کی ہیں - ایک بڑی بهیڑ جو گجرات، آسام اور مظفر نگر وغیرہ میں مسلمانوں کا قتل عام کر چکی ہے- دوسری چھوٹی بهیڑ جو ٹرینوں اور مختلف جگہوں پر گاےء کے نام پر مسلمانوں کا قتل کر رہی ہے- وقت آ گیا ہے کہ دونوں طرح کی بهیڑوں کے بڑھتے قدم کو روکا جائے- ورنہ وہ دن دور نہیں جب بڑی بهیڑ کا نشانہ ہمارے علاقے ہوں گے اور چھوٹی بهیڑ کا نشانہ خود ہم ہوں گے.

مزید پڑھیں >>