ادبغزل

آپسی دوریاں مٹادو تم

صرف اک بار مسکرا دو تم

مجاہد ہادؔی ایلولوی

آپسی دوریاں مٹادو تم
صرف اک بار مسکرا دو تم

ٹوٹ جاتا ہے دل جدائی سے
کہنا آسان ہے، بُھلا دو تم

میں نے اس ملک سے وفا کی ہے
میں خطاکار ہوں، سزا دو تم

ہندو مسلم کو مل کے رہنا ہے
ایکتا کیا ہے اب دکھا دو تم

اک عجب سا سکون ملتا ہے
جب یتیموں کو آسرا دو تم

لوٹنے کا مجھے اشارا دو
"وقت رخصت ہے مسکرا دو تم”

راستہ چھوڑ دے گی ہر مشکل
تم کہو ماں سے, بس دعا دو تم

میں اکیلا چلا ہوں مرقد کو
اس مسافر کو حوصلہ دو تم

کوئی پوچھے کہ شاعری کیا ہے
داستاں پیار کی سنا دو تم

زندگی امتحان ہے ہادؔی
پاس ہوکر ذرا دکھا دو تم

مزید دکھائیں

مجاہد ہادؔی ایلولوی

تخلیقِ کارِ کلامِ دل پزیر شعر و سخن کا نیا ابھرتا ستارہ جناب مجاہد ہادؔی ایلولوی صاحب کا تعلق ہندوستان کے صوبہ گجرات سے ہیں, آپ پیشے سے عالمِ دین ہیں آپ نے اپنی ابتدائی تعلیم اپنے آبائی وطن ایلول میں حاصل کی اس کے بعد مزید عربی اردو اور فارسی کی تعلیم کے حصول کے لئے اپنے علاقہ کا معروف ادارہ ( جامعہ اسلامیہ امداد العلوم وڈالی) کا رخ کیا اور وہی سے 2016 میں سند فضیلت حاصل کی اور اس کے بعد سے اب تک احمدآباد کے قریب شہر بوٹاد میں مقیم ہیں آپ کا تعلیق گجرات کے ضلع سابرکانٹھا کے ایک علمی خاندان سے ہیں آپ کے والد محترم کا اسمِ گرامی عمر ابن محمد پشوا ہیں وہ بھی پیشے سے عالمِ دین ہیں, آپ افق شعر و سخن کا ایک چمکتا ستارہ ہیں اور نئی نسل کے فعال ترین شعراء میں سے ایک ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ

Close