بیادِ یوم سرسید

احمد علی برقیؔ اعظمی

یاد رکھیں یومِ سرسید ہے آج
ہے دلوں پر اہل دل کے جن کا راج

آج ہی پیدا ہوا وہ عبقری
جس نے بدلا وقت کا اپنے مزاج

کرگئے پیدا وہ اک فکری نظام
ختم کرکے سارے فرسودہ رواج

عہد میں اپنے جہالت کے خلاف
تھی بلند اُن کی صدائے احتجاج

زندۂ جاوید ہیں اُن کے نقوش
کام ایسے کرگئے بے تخت و تاج

جن کے دل میں ملک و ملت کا ہے درد
ہیش کرتے ہیں انھیں اپنا خراج

قوم کے تھے وہ حقیقی رہنما
معترف ہے کام کا اُن کے سماج

عصرِ حاضر میں بھی برقیؔ اعظمی
ہے ضرورت اُن کے ہوں سب ہم مزاج



⋆ احمد علی برقی اعظمی

احمد علی برقی اعظمی
ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے