ادبغزل

تاثراتی غزل

احمد علی برقیؔ اعظمی

کس لئے ڈالتے ہو رنگ میں بھنگ
مَت کرو عرصۂ حیات کو تنگ

خود جیو اور ہم کو جینے دو
زعم طاقت میں یوں بنو نہ دَبَنگ

ٹوٹ جائے نہ میرا شیشۂ دل
اس پہ پھینکو نہ اب خدارا سَنگ

ابنِ آدم کا احترام کرو
ایک جیسا ہے سب کے خوں کا رنگ

چھوڑ دو رنگ و نسل کی تفریق

ہیں سبھی ایک دوسرے کے اَنگ

ہے اگر شوق جنگجوئی کا
تو کرو فتنہ و فساد سے جنگ

عید کو مت بناؤ عاشورہ
نہ کرو ختم سرخوشی کی اُمَنگ

کہیں اخلاق ہے کہیں ہے جنید
رنگ لائے نہ اِن کے خون کا رنگ

سنگ دل یوں بنو نہ اے برقیؔ
تیغِ ایماں پہ آنہ جائے زَنگ

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close