ادبغزل

تمہارے عدل کا معیار دیکھنے کے لیے

احمد کمال حشمی

ہُوا ہوں خود ہی گرفتار دیکھنے کے لیے
تمہارے عدل کا معیار دیکھنے کے لیے

سجا کے رکھے ہیں سونے بھی ہم نے پیتل بھی
یہ سب ہیں ذوق خریدار دیکھنے کے لیے

یہ اور بات کہ رونق اسی کے دم سے ہوئی
جو آیا رونقِ بازار دیکھنے ک لیے

یہی خیال مجہے فتح یاب کرتا ہے
کہ سب ہیں آئے مری ہار دیکھنے کے لیے

سزا سنائی گئی میری بے گناہی کو
امڈ پڑے ہیں گنہگار دیکھنے کے لیے

کسی نے قوتِ بازو کی میری داد نہ دی
سب آئے تہے مری تلوار دیکھنے کے لیے

کسی کا وقت سدا ایک سا نہیں رہتا
چلے طبیب کو بیمار دیکھنے کے لیے

نہ دیکھ پاؤگے جو کچھ دکھایا جائے گا
کماؔل آئے ہو بیکار دیکھنے کے لیے

مزید دکھائیں

احمد کمال حشمی

احمد کمال حشمی مغربی بنگال کے مستند و معتبر شاعر ہیں۔ آپ کے کئی شعری مجموعے شائع ہوکر اربابِ نظر سے پذیرائی حاصل کرچکے ہیں۔ ’سفر مقدر ہے‘، ’ردعمل‘، ’آدھی غزلیں‘، ’چاند ستارے جگنو پھول‘ ان کے شعری مجموعوں کے نام ہیں۔ آپ کو مغربی بنگال اور بہار اردو اکادمیوں سمیت مختلف ادبی اداروں سے ایوارڈ سے بھی سرفراز کیا گیا ہے۔ احمد کمال حشمی ادب کی بے لوث خدمت انجام دے رہے ہیں، مختلف ادبی اداروں میں فعال کردار ادا کررہے ہیں اس کے علاوہ نئے ادیبوں اور شاعروں کو ادبی حلقوں میں متعارف کروانے اور ان کی تربیت میں پیش پیش رہتے ہیں۔ موصوف حکومت مغربی بنگال کے محکمہ اراضی میں افسر ہیں اور ان دنوں کولکاتا میں مقیم ہیں۔

متعلقہ

Close