ادبنظم

یادِ رفتگاں: بیاد ممتازمزاح نگار مشتاق یوسفی مرحوم 

احمد علی برقیؔ اعظمی

مشتاق یوسفی جو تھے عالم میں انتخاب
تھے وہ سپہرِ اردو کے رخشندہ ماہتاب

اردو ادب کو اُن پہ ہمیشہ رہے گا ناز
ان کی نگارشات کا کوئی نہیں جواب

برِ صغیر میں ہی نہیں تھے وہ سربلند
تھے وہ جہان فکر میں فنکار کامیاب

گُلہائے رنگارنگ کی خوشبو سے جا بجا
ہے گلشنِ ادب میں معطر ہر اک کتاب

سب سرگذشت لکھتے ہیں ان کی ہے زرگذشت
عہد رواں میں طنز و ظرافت کا احتساب

ادبی نقوش شہرۂ آفاق اُن کے ہیں
ہوتے رہیں گے اہلِ نظر جن سے فیضیاب

طرزِ بیاں میں طنز و ظرافت کی روشنی
ہے کوئی ماہتاب تو کوئی ہے آفتاب

عہدِ رواں میں جو بھی ہیں اردو کے قارئین
اُن کی نگارشات میں زندہ ہے ان کا خواب

درجات اُن کے خُلدِ بریں میں بلند ہوں
اردو ادب پہ اُن کے ہیں احسان بے حساب

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close