ادبنظم

یاد رفتگاں: ڈاکٹر انور سدید مرحوم

چل دئے بزمِ جہاں سے ڈاکٹر انور سدید
نقدِ ادبی میں تھے جو اک حاملِ ذہنِ جدید

اردو دنیا کے لئے ہے یہ خسارہ اک عظیم
اہلِ دانش کے لئے جس کی ضرورت تھی شدید

لوگ کہتے تھے انھیں اردو کا بابائے ادب
جمل اصنافِ ادب میں ہیں کُتُب جن کی مفید

ضوفگن تھی آسمانِ فکر و فن پر جس کی ذات
وہ ستارہ ہو گیا چرخِ ادب کا ناپدید

چل بسے ہمراہ اپنے لے کے وہ سوئے جناں
قفلِ افسانہ نویسی کی تھی برقیؔ کلی جو کلید

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close