غزل

اپنے دل کے زخموں پہ  مرہم  لگانے کا شکریہ

کسی کو  اپنانے کا ، ہم  کو   گنوانے کا شکریہ

سجادگل

اپنے دل کے زخموں پہ  مرہم  لگانے کا شکریہ
کسی کو  اپنانے کا ، ہم  کو   گنوانے کا شکریہ
۔۔۔
آپ کے ٹھکرانے کو  ہم نے مقدر جانا  ہے بس!
چار   دن  اپنایا  ، یوں  اپنا  بنانے  کا  شکریہ
۔۔۔
یہ  ہنر تیرا  خاص  ہے  ہم   نہیں  واقف  ذرا
یاد   آنے   والے ،  ہمیں بھول  جانے کا شکریہ
۔۔۔
یہ ہجر گویا معتبر تھا، یہ غم بھی میرے لیے
زندگی کا سامان تھا،  چھوڑ  جانے کا شکریہ
۔۔۔
ہے نوازش جو میرے مرنے کا ہوئے تمہی سبب
زندگی کو  میری   ٹھکانے   لگانے   کا   شکریہ
۔۔۔
عمر    بھر  دنیا  نے  تماشا  بنائے   رکھا   اسے
مرتے  ہوئے   دیوانہ   بولا   زمانے  کا    شکریہ

مزید دکھائیں

متعلقہ

Close