غزل

ذراسا بھی جو دل میں جزبۂ ایمان رکھتے ہیں

لگاکر دل سے آقا کا وہ ہر فرمان رکھتے ہیں

مجاہد ہادؔی ایلولوی

ذراسا بھی جو دل میں جزبئہ ایمان رکھتے ہیں
لگاکر دل سے آقا کا وہ ہر فرمان رکھتے ہیں

مرے آقا کی سیرت پر نگاہیں مت اٹھانا تم
زباں خاموش ہے پر دل میں ہم طوفان رکھتے ہیں

عداوت بغض نفرت مصطفی کے اہلِ خانہ سے
کوئی انساں نہیں رکھتا محض شیطان رکھتے ہیں

ہمیں حاجت نہیں ہے اہل مغرب کے طریقوں کی
نبی کی سنتیں اور ہم تو یہ قرآن رکھتے ہیں

حفاظت اب کریں گے ہم ہی ناموسِ رسالت کی
نجات اپنی اسی میں ہے یہ ہم ایمان رکھتے ہیں

سرِ بازار ہم کو ڈھونڈنا مشکل نہیں ہادؔی
غلامِ مصطفی اپنی الگ پہچان رکھتے ہیں

مزید دکھائیں

مجاہد ہادؔی ایلولوی

تخلیقِ کارِ کلامِ دل پزیر شعر و سخن کا نیا ابھرتا ستارہ جناب مجاہد ہادؔی ایلولوی صاحب کا تعلق ہندوستان کے صوبہ گجرات سے ہیں, آپ پیشے سے عالمِ دین ہیں آپ نے اپنی ابتدائی تعلیم اپنے آبائی وطن ایلول میں حاصل کی اس کے بعد مزید عربی اردو اور فارسی کی تعلیم کے حصول کے لئے اپنے علاقہ کا معروف ادارہ ( جامعہ اسلامیہ امداد العلوم وڈالی) کا رخ کیا اور وہی سے 2016 میں سند فضیلت حاصل کی اور اس کے بعد سے اب تک احمدآباد کے قریب شہر بوٹاد میں مقیم ہیں آپ کا تعلیق گجرات کے ضلع سابرکانٹھا کے ایک علمی خاندان سے ہیں آپ کے والد محترم کا اسمِ گرامی عمر ابن محمد پشوا ہیں وہ بھی پیشے سے عالمِ دین ہیں, آپ افق شعر و سخن کا ایک چمکتا ستارہ ہیں اور نئی نسل کے فعال ترین شعراء میں سے ایک ہیں

متعلقہ

Close