غزل

سب اندیشے سچ  نکلے

افتخار راغبؔ

سب اندیشے سچ  نکلے

شکر ہے پھر بھی بچ نکلے

ہلکی سی مُسکان پہ بھی

"تھینک یو ویری مچ” نکلے

باہر سے شاہِ کف گیر

اندر سے چمّچ نکلے

جوگی کی کٹیا سے بھی

حرص و ہوس لالچ نکلے

منھ تکتا ہوں گواہوں کے

کس کے منھ سے سچ نکلے

اور دعائیں اب راغبؔ

غیروں سے تو بچ نکلے

مزید دکھائیں

افتخار راغب

تخلیقِ کارِ کلامِ دل پذیر، علمبردارِ توازنِ لفظ و معنی ، بدرِ آسمانِ شعر و سخنِ قطر اور افتخارِ بزمِ اردو قطر جناب افتخار راغبؔ کا تعلق ہندوستان کے صوبہ بہار سے ہے۔ پیشے سے سول انجنئیر ہیں اور 1998 میں جامعہ ملیہ اسلامیہ دہلی سے بی ٹیک کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد مارچ 1999 سے قطر میں ملازمت کے سلسلے میں مقیم ہیں۔ آپ کے چار شعری مجموعۂ کلام، ’لفظوں میں احساس‘ ، ’خیال چہرہ‘ ، ’غزل درخت‘ اور 'یعنی تو' منظرِ عام پر آکر مقبولیت حاصل کر چکے ہیں۔ غزلوں کا پانچواں مجموعہ اور مزاحیہ شاعری کا پہلا مجموعہ زیرِ ترتیب ہیں۔ آپ کی شاعری کی اینڈرائڈ ایپ بھی بن چکی ہے جسے Google Play Store میں Iftekhar Raghib - Urdu Poetry لکھ کر تلاش کرکے انسٹال کیا جا سکتا ہے اس میں چاروں مجموعہ غزلیات دیدہ زیب انداز میں موجود ہیں. افتخار راغبؔ کا شمار قطر کے فعال ترین ادبی شخصیات میں ہوتا ہے۔ آپ قطر کی قدیم ترین اردو تنظیم بزمِ اردو قطر کے 2010 سے جنرل سکریٹری ہیں اور دیگر ادبی تنظیموں میں بھی پیش پیش رہتے ہیں۔ آپ اپنے پختہ کلام کے حوالے سے پوری اردو دنیا میں نئی نسل کے شعراء میں منفرد شناخت رکھتے ہیں۔

ایک تبصرہ

  1. محترم افتخار راغب صاحب۔۔۔۔!
    ا ہا۔۔اہاہاہاہا۔۔۔۔
    کیا غزل تخلیق کر دی آپ نے۔۔۔۔ جی خوش ہو گیا ۔۔۔۔۔،دل جھوم اٹھا ۔۔۔۔۔
    میرے ناقص علم کے مطابق۔۔۔ اس قافیہ و ردیف میں۔۔۔ پہلی غزل ۔۔۔۔نظر نواز ہوئی۔۔۔۔۔۔،نئے نئے قوافی و ردیف۔۔۔ کے ذریعہ ایک خوبصورت۔۔۔۔ زمین کاشت کرنا اور اس میں۔۔۔ جاذب نظر۔۔۔ ،روح افزا۔۔۔، روح پرور۔۔۔ ،فرحت بخش۔۔،جاں فزا سرور افروز۔۔ نو وارد ،نو رسیدہ تازہ ترین ،سرسبز ،ہری بھری فصلیں۔۔۔۔ اگانا جنکی سرسبزی و شادابی سے۔۔۔۔ روح کو سکون و طمانیت۔۔۔ اور قلب و نظر کو نور وجلا۔۔۔ اور شعور و آگہی کو بلند پروازی۔۔۔ و بلند نظری نصیب ہو۔۔۔۔،یہ آپ ہی کا خاصہ ہے۔۔۔۔۔
    غزل مذکور کے اندرون ۔۔۔ میں اترا تو یہ دیکھ کر۔۔۔ حیران و ششدر رہ گیا ۔۔۔کہ کتنا مشکل امرتھا اس زمین کو خوش نما اشعار سے آباد کرنا۔۔۔۔،آپ نے جس فنکارانہ و ہنرمندانہ اسلوب سے۔۔۔۔ اس مشکل مجسم کو امکانیت کا خوبصرت جامہ پہنایا ہے ۔۔۔طبیعت باغ باغ ہو گئی۔۔۔۔

    دل کی گہرائیوں سے ہدیہء تبریک و تحسین پیش ہے

    🌹🌹🌹🌹🌹🌹

متعلقہ

Close