غزل

غزل- بجھ گیا دل تمھارے پیار کے ساتھ

عتیق انظر

بجھ گیا دل تمھارے پیار کے ساتھ
پھول  مرجھا  گیا  بہار  کے  ساتھ

ہاتھ  ملتا   رہے    شکاری   اب
جال بھی  اڑ گیا  شکار   کے  ساتھ

دور    دل   سے   چمکتی   ہے  بجلی
کھیل کرتی ہے بے قرار کے ساتھ

بڑھ  رہی  ہے  ندی  مری  جانب
میں بھی بہہ جاؤں گا  کگار کے ساتھ

دل  کا   رشتہ   زمین  سے   رکھنا
آنکھ   کا   ربط   آبشار  کے  ساتھ

اپنی   مٹی    سے    رابطہ    رکھنا
ورنہ  اڑ جاؤ گے غبار  کے ساتھ

کون  بانٹے  گا  میرے  دکھ  انظؔر
فاختہ   سو گئی    چنار    کے  ساتھ

مزید دکھائیں

عتیق انظر

عتیق انظر ان دنوں قطر میں مقیم ہیں۔ آپ کو جذبات اور رومان کا شاعر کہا جاتا ہے۔ آپ انڈیا اردو سوسائٹی قطر کے بانیوں میں سے ہیں۔ پہچان آپ کا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close