غزل

غزل – بہت گھاٹا اٹھانا پڑ رہا ہے

عتیق انظر

بہت  گھاٹا   اٹھانا  پڑ  رہا ہے
مگر  رشتہ  نبھانا  پڑ  رہا  ہے

تسلی دے کے خوش آئند کل کی
امنگوں  کو   سلانا   پڑ   رہا   ہے

پرانے  منظروں  سے  تنگ  آکر
نیا    منظر    بنانا    پڑ   رہا   ہے

مجھے پھولوں کی  شادابی  کی خاطر
سمندر  پار   جانا   پڑ   رہا   ہے

مزید دکھائیں

عتیق انظر

عتیق انظر ان دنوں قطر میں مقیم ہیں۔ آپ کو جذبات اور رومان کا شاعر کہا جاتا ہے۔ آپ انڈیا اردو سوسائٹی قطر کے بانیوں میں سے ہیں۔ پہچان آپ کا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close