غزل

لفظ جو بولنا تول کر بولنا

فائدے مند ہے مختصر بولنا

طالبؔ ہاشمی

لفظ جو بولنا تول کر بولنا

فائدے مند ہے مختصر بولنا

تم بھی بن جاؤ لیڈر کسی قوم کے

چاہتے تم ہو زیادہ اگر بولنا

وہ صدائے ان الحق قلندر کی تھی

سب کے بس میں کہاں دار پر بولنا

جیب میں ہر کسی کے ہے خنجر یہاں

ایسے لوگوں کو کیا معتبر بولنا

میں مسلمان ہوں’غیر پوچھے اگر

اپنی چھاتی میاں ٹھوک کر بولنا

ہم نے سوچا نہ تھا ایسا دن آئے گا

چائے والے کو بھی ہوگا سر بولنا

اپنی حد میں رہو’آپ طالبؔ میاں

بن نہ جائے کہیں دردِ سر بولنا

مزید دکھائیں

متعلقہ

Close