وجہِ وارفتگی ہے کیا سن لو

0

افتخار راغبؔ

وجہِ وارفتگی ہے کیا سن لو

مجھ میں گونجی ہے جو صدا سن لو

۔

 ہار جاؤ گے تم ستم ڈھا کر

پست ہوگا نہ حوصلہ سن لو

۔

میری آنکھیں بیان کرتی ہیں

کیوں مسلسل ہے رت جگا سن لو

۔

اے مرے بے خبر نہ ہو بے باک

بدبداتی ہے کیا ہوا سن لو

۔

کس سے منسوب ہیں مرے اشعار

لوگ کہتے ہیں مجھ کو کیا سن لو

۔

 تم نے آواز دی نگاہوں سے

دل سے پھوٹی ہے اک نوا سن لو

۔

میرے سایے میں بیٹھنے والو

قصۂ درد بھی مرا سن لو

۔

بد گمانی سے تھوڑا پھیر کے منھ

حال شہرِ گمان کا سن لو

۔

کیا ہے مجموعۂ جمال میں خاص

چشمِ راغبؔ کا تبصرہ سن لو

تبصرے