غزل

پلکوں پہ حسیں خواب سجانا ہے ضروری

جمیل اخترشفیق

پلکوں پہ حسیں خواب سجانا ہےضروری

دل   درد   سے   آزاد   کرانا   ہے  ضروری

آجائے کبھی انکے اگر گھر سے بلاوا

امید نئ باندھ کے جانا ہے ضروری

خاموشی کی دیمک نہ کہیں کھوکھلاکردے

گر شور   ہے  اندر   تو  سنانا  ہے   ضروری

برباد نہ کردے مجھےحسرت کا توقف

مر ہم نہ سہی زخم دکھانا ہے ضروری

پھر صبح کی کرنیں انہیں مایوس نہ کردیں

سوئے  ہیں  اگر  وہ  تو  جگانا   ہے  ضروری

ہوتا ہے بہت یار تکلّف میں خسارا

ہوجائے اگر پیار، بتانا ہے ضروری

 مصروف اگرچہ ہیں شفیق اپنےمیں سب لوگ

جینے  کے  لیے ملنا ملانا ہے  ضروری

مزید دکھائیں

جمیل اختر شفیق

جمیل اخترشفیق صاحب کا تعلق صوبہ بہار کے مشہور ضلع سیتامڑھی کے باجپٹی بلاک کی ایک انتہائ پسماندہ بستی سنڈوارہ سے ہے۔ آپ شاعری کے علاوہ ملک کے درجنوں اخبارات ورسائل کے لیے زمانۂ طالبِ علمی ہی سے کالم لکھتے آئے ہیں اور خوب پڑھے جاتے رہے ہیں۔ ساتھ ہی ملک بھر میں مختلف مذہبی، ادبی، سماجی موضوعات پہ منعقد ہونے والے پروگرام میں بھی ان کی شرکت ہوتی رہتی ہے، ملک کے قد آور شعراء کی موجودگی میں وہ درجنوں آل انڈیا مشاعروں کی تاریخ ساز نظامت بھی کر چکے ہیں اور ایک کامیاب ناظم کی حیثیت سے بھی اُن کی شخصیت بڑی تیزی سے ابھر رہی ہے۔ ممبئ سے نشر ہونے والا ٹیوی چینل "آئی پلس ٹیوی" جسے دنیا بھر میں تین کروڑ سے زیادہ لوگ دیکھتے ہیں اس پہ "رنگ ونور ایک دینی مشاعرہ" کے تحت نشر ہونے والے مشاعرے کی نظامت کرتے ہوئے بھی انہیں ناظرین ہر جمعہ کو دن میں 2.30بجے اور رات میں 7.30بجے متواتر دیکھ رہے ہیں جو کہ بلاشبہ صوبہ بہار کی ادبی دنیا کے لیے فخر کی بات ہے۔

متعلقہ

Close