نعت

عشقِ ســــرکار میں جــــولوگ فنــــا ہو تے ہیں

بیشک آزاد  وہ از رنـــج و بلا ہـوتے ہیں

ندیــــــــم سلطانپوری

عشقِ ســــرکار میں جــــولوگ فنــــا ہو تے ہیں

بیشک آزاد  وہ   از رنـــج  و بلا ہـوتے ہیں

رشک  کـــــرتے    ہیں شہنشاہِ  زمانــــــہ ان پر

جــــــو درِ ســـــرورِعالم  کے گــــــــدا ہوتےہیں

گھیر لتے ہیں انہیں  نــــــوری  فِــــــرشتے آکر

جب کـہ عشــاقِ نبی نغمــــہ ســـــــرا ہوتےہیں

سامنے  ہوتا ہے   جب جــــلوہء  جــاناں افشاء

عشق کے سجــــــد ے تواس وقت ادا ہوتےہیں

دور ہو جــاتی ہے  تاریکی  لحــــد سے اس دم

جب کہ محبــوبِ خـــــداجـلوہ نمــــا ہوتےہیں

اشک  آنکھوں میں  نظـــرآتے  ہیں دل روتا ہے

زائرِطیبــہ جــــو طیبــہ سے جـــــــدا ہوتےہیں

جوبھی ہوتےہیں نثاران پہ دل و جاں سےندیم

واللــہ   مشہور   وہی  مثـلِ رضــــــا ہوتے ہیں

مزید دکھائیں

متعلقہ

Close