نظم

احساس

سالک ادؔیب بونتی

 تیری جب یادآتی ہے

   مچل جاتاہے دل میرا

   تجھے محسوس کرتاہوں

   میں اپنےپاس پاتا ہوں

   تیری چاہت کی خوشبوپھر

   معطرمجھکو کرتی ہے

   میں بانہیں کھول لیتاہوں

   تصورمیں تمھارےپھر

   توپھرتم دوڑآتی ہو

   چمٹ جاتی ہوسینے سے

   وہ پل ہوتاعجب ساہے

   میں لفظوں میں کہوں کیسے

   وہ اک احساس ہے جسکو

   فقط محسوس کرتے ہیں

مزید دکھائیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ

Close