نظم

بیاد ادیب شہیر انتظار حسین مرحوم

احمد علی برقی اعظمی

بزم ادب کی شمع فروزاں تھے انتظار
افسانوی ادب میں جوتھے فخر روزگار

عہد رواں کے اہل قلم میں تھے معتبر
ان کی نگارشات کو حاصل ہے اعتبار

ہے ناولوں میں روح زماں ان کے منعکس
افسانے ان کے اردو ادب کے ہیں شاہکار

ماضی کی بازگشت ہیں ان کی نگارشات
دلی تھا جس کا نام بھی ہے ان کی یادگار

کرتے تھے وہ تلاش انھیں وہ جوکھو گئے
نثری ادب میں تھے وہ روایت کے پاسدار

جل گرجے خالی پنجرہ خیمے سے دور میں
ہے ذہنی کرب عصر گذشتہ کا آشکار

بر صغیر کے تھے ادیبوں کی شان وہ
بستی ہے حن کے طرز نگارش کا شاہکار

برقی ہیں اہل فکر ونظر ان کے معترف
اردو ادب کا عہد رواں میں تھے وہ وقار

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Back to top button
Close