نظم

ذکر ہے کون و مکاں میں آمدِ رمضان کا

ذکر ہے کون و مکاں میں آمدِ رمضان کا

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی

خوانِ نعمت بچھ گیا اللہ کے فیضان کا

ذکر ہے کون و مکاں میں آمدِ رمضان کا

دائرہ خود بھی بڑھائیں اپنے دسترخوان کا

خوانِ نعمت باز ہے سب کے لئے رحمٰن کا

کیجئے بے خوف حقِ بندگی اپنا ادا

بند ہے فضلِ خدا سے ناطقہ شیطان کا

خدمتِ خلقِ خدا بھی اشغل الاشغال ہے

امتحاں اس ماہ میں ہے آپ کے ایمان کا

دیتی ہیں آیات جس کی دعوتِ فکر و عمل

کیجئے دل سے سمجھ کر وِرد اُس قرآن کا

نعتِ محبوبِ خدا ہے ایک روحانی غذا

کیجئے اس میں تتبع حضرتِ حسان کا

کیجئے اپنے عمل کا آپ پہلے احتساب

دیکھئے اعجاز برقیؔ پھر خدا کی شان کا

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close