نظم

رگ ِجاں سے عقرب، ہے دل میں ظہور

دعا تجھ سے کرتا ہوں ربِ غفور

 جمال ؔکاکوی

رگ ِجاں سے عقرب،ہے دل میں ظہور
دعا تجھ سے کرتا ہوں ربِ غفور

کوئی اور تجھ سا نہیں دوسرا
توہی ہے توہی ہے توہی بس خدا

اے مالک اے مولیٰ اے پروردگار
تحفظ ندی کو بچاآب شار

آج انسان کو ایسی توفیق دے
کہ دنیاکااپنے محافظ بنے

ندی سے محبت ہوجنگل سے پیار
انہی پہ ہے دنیا کا دارومدار

ندی کے کنارے ہے بستی ہزار
جنگل سے دنیا ہے باغ وبہار

تدبر تفکرکرے جستجو
صدا پاک بہتا رہے آب جو

 نصرت تری  تیرا انعام ہے
ندی کا تحفظ بڑا کام ہے

یہ احسان اللہ کا اے جمالؔ
کہ بندے کا رکھتا ہے دائم خیال

مزید دکھائیں

جمال کاکویؔ

کاکو ہائوں پٹنہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ

Close