نظم

سفیر امن و سکوں بن کے آئے عیدالفطر

دلوں سے سب کے کدورت مٹائے عید الفطر

احمد علی برقیؔ اعظمی

سفیر امن و سکوں بن کے آئے عید الفطر
دلوں سے سب کے کدورت مٹائے عید الفطر

نقوشِ بُغض و حسد کو مِٹائے عیدالفطر
دلوں میں شمعِ محبت جَلائے عید الفطر

جوغمزدہ ہیں اُنھیں آکے شادکام کرے
جو رورہے ہیں انگیں بھی ہنسائے عید الفطر

بڑھائے حوصلہ پژمُردہ دل ہیں جو اُن کا
جو گِر رہے ہیں اُنھیں بھی اُٹھائے عیدالفطر

یہ اُستوار کرے رشتۂ محبت کو
ہے جو بھی عہدِ وفا وہ نِبھائے عیدالفطر

دیار غیر میں ہیں جو ، رہیں خوش و خُرم
وطن کی یاد کو دل سے بُھلائے عیدالفطر

ہوں ہمکنار خوشی سے سبھی امیر و غریب
ہمیں بھی اور اُنھیں، راس آئے عید الفطر

خزاں کی زد میں نہ گُلزارِ زندگی ہو کبھی
چمن میں اپنے نئے گل کِھلائے عید الفطر

یہ سدِ باب کرے تیرگی کا اے برقیؔ
کبھی نہ شمعِ اخوت بُجھائے عیدالفطر

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close