نظم

صدا جو قید کر دی گئی

عاتکہ ماہین

ہماری آوازوں کو رہا کرو

تمہیں کوئی حق نہیں

کہ ہماری آوازوں پر پہرے بٹھاو

ہم بولیں گے

اور

دنیا ہماری گونج سنے گی

تم بھی سنو گے

آواز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

جو ظلم کے خلاف ہے

آواز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

جوآمریت کے خلاف ہے

ہم بولتے رہیں گے

تب تک۔۔۔۔۔۔۔جب تک

ہماری رگوں میں سیال خون رہے گا

تم اپنی سماعتوں کو تیار کر لو

کہ جب ہماری صداقت کی آوازیں

تم تک پہنچیں گی

تمہارے کانوں کے پردے میں سوراخ کر دیں گی

تم جتنے حربے آزما لو

ہماری آوازوں کو قید کر کے

اپنی ناکامی کے ثبوتوں کو

مٹا نہیں سکتے

ہماری آوازوں کو رہا کرو

مزید دکھائیں

عاتکہ ماہین

سینیئر ریسرچ فیلو,شعبہ اردو، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی

متعلقہ

Close