نظم

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی موجودہ صورتِ حال کے تناظر میں ایک تاثراتی نظم

پیش کرتا ہوں میں اے ایم یو کی عظمت کو سلام

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی

پیش کرتا ہوں میں اے ایم یو کی عظمت کو سلام
ہے جو اقصائے جہاں میں مرجعِ ہر خاص و عام

ہے جوانانِ علی گڈھ سے یہ میری التجا
جوش سے قطعِ نظر وہ ہوش سے لیں اپنے کام

ہے یہ اک ناپاک سازش دشمنانِ قوم کی
کردیا ہے شرپسندوں کو جنھوں نے بے لگام

سینکنے مت دیں اُنھیں اپنی سیاسی روٹیاں
ورنہ کردیں گے یہ ظالم آپ کا جینا حرام

ایک مدت سے اُنہیں تھی ایک موقع کی تلاش
ہے یہ آئندہ الکشن کا ابھی سے انتظام

ان کی آنکھوں میں کھٹکتی ہے ہماری درسگاہ
یہ مٹانا چاہتے ہیں اپنا یہ نقشِ دوام

رچ رہے ہیں نِت نئی یہ اس لئے اب سازشیں
تاکہ یہ برباد کردیں اپنا تعلیمی نظام

دور اندیشی سے مِل کر حل کریں یہ مسئلہ
تاکہ اے ایم یو کا جاری رہ سکے یہ فیضِ عام

قوم کے دانشوروں سے ہے یہ برقیؔ کی اپیل
اس مصیبت کی گھڑی میں آئیں وہ ملت کے کام

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close