نظم

معصوم اہل شام 

نزہت قاسمی

خدایا ہم شرمندہ ہیں معصوم اہل شام
دکھتا ہےدل پر ہیں بہت دور و مجبور ہم
۔
تمھارا قطرہِؑ خون بھی معصوم اہل شام
گراں بار ہے اور ہیں رنجور و مقروض ہم
۔
صداقت پر تم ثابت قدم معصوم اہل شام
تختہؑ مشق ہے عوام بے قصوراور بیزارہم
۔
بہانا تم کو ختم کرنے کا معصوم اہل شام
تماشائی ہے کوئی اور ہیں مددسےقاصر ہم
۔
حق زندگی کی امیدرکھنامعصوم اہل شام
کیوں بنتے ہتھیار  امن واماں کےخوگر ہم

مزید دکھائیں

متعلقہ

Close