نظم

مومن کے لئے فضلِ خدا عید کا دن ہے

رمضان کے روزوں کی جزا عید کا دن ہے

احمد علی برقی اعظمی

مومن کے لئے فضلِ خدا عید کا دن ہے

رمضان کے روزوں کی جزا عید کا دن ہے

دل دل سے مرے اپنا مِلا عید کا دن دن ہے

اب اور نہ تو مجھ کو ستا عید کا دن ہے

ہے تجھ کو پِلانا تو پِلا عید کا دن ہے

نظروں سے مئے ہوش رُبا ، عید کا دن ہے

دروازۂ دل تیرے لئے باز ہے میرا

آنا ہے اگر تجھ کو تو آ، عید کا دن ہے

اِس طرح کبھی تَرکِ تعلق نہیں کرتے

کیوں آج ہے تو مجھ سے خفا عید کا دن ہے

ہے نقش محبت کا ترے دل میں جو میری

کیوں تو ہے مِٹانے پہ تُلا ، عید کا دن ہے

بے وقت کی شہنائی بجاتے نہیں برقیؔ

دے دینا کبھی اور سزا عید کا دن ہے

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Close