نظم

نذر شاعر مشرق علامہ اقبال ؔ

بمناسبت یوم اقبالؔ

ڈاکٹر احمد علی برقی اعظمی

اقبال ؔ کی غزلوں میں ہے تاب وتوانائی

اقبالؔ کی نظموں کا ہر شخص ہے شیدائی

سیکھا نہ جنھوں نے کچھ اقبالؔ کے نغموں سے

ہے ان کے مقدر میں بس ذلت و رسوائی

اب بھی نہیں کچھ بگڑا، اب سے وہ سنبھل جائیں

’’ لمحوں نے خطا کی تھی صدیوں بے سزا پائی ‘‘

ہے درس عمل ان کا اک جذبۂ لافانی

اسرار حقیقت سے تھی ان کی شناسائی

دیتے تھے سدا ہم کو پیغام وہ آفاقی

ہربات میں تھی ان کی گہرائی و گیرائی

اے کاش ہمیں بھی کچھ مل جاتی بفضلِ حق

ہے فارسی اور اردو نظموں میں جو دانائی

فطرت نے عطا کی تھی حق گوئی و بیباکی

اقبالؔ نہ تھے برقیؔخاموش تماشائی

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ

Close