نظم

یہ جھانکی ہے آکاش وانی کی شان

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی

یہ ہے جشنِ جمہوریت کا نشان

یہ جھانکی ہے آکاش وانی کی شان

یہ سنگم ہے سُر اور سنگیت کا

یہ ہے گنگا جمنی وراثت کی جان

دلوں پر سبھی کے ہیں جو حکمراں

کلاکار ہیں ہر زباں کے مہان

کبیرؔ اور تلسیؔ و نانکؔ کا ملک

ہے تہذیب کا رنگا رنگ اک جہان

سبھی مِل کے گاتے ہیں اک راشٹر گان

کہیں کیرتن ہے کہیں ہے اذان

برہمن ہوں یا شیخ ہوں یا کہ خان

ہے ہندوستانی سبھی کی زبان

ہمارا وطن سب سے پیارا وطن

ہیں برقیؔ جہاںاَن داتا کسان

مزید دکھائیں

احمد علی برقی اعظمی

ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی اعظم گڑھ کے ایک ادبی خانوادے سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ کے والد ماجد جناب رحمت الہی برقؔ دبستان داغ دہلوی سے وابستہ تھے اور ایک باکمال استاد شاعر تھے۔ برقیؔ اعظمی ان دنوں آل آنڈیا ریڈیو میں شعبہ فارسی کے عہدے سے سبکدوش ہونے کے بعد اب بھی عارضی طور سے اسی شعبے سے وابستہ ہیں۔۔ فی البدیہہ اور موضوعاتی شاعری میں آپ کو ملکہ حاصل ہے۔ آپ کی خاص دل چسپیاں جدید سائنس اور ٹکنالوجی خصوصاً اردو کی ویب سائٹس میں ہے۔ اردو و فارسی میں یکساں قدرت رکھتے ہیں۔ روحِ سخن آپ کا پہلا مجموعہ کلام ہے۔

متعلقہ

Close