اردو سرگرمیاں

’راج نرائن رازؔاور ان کے بعض ہم عصر شعرا‘ کے موضوع پر خطبہ

انجمن ترقی اردو (ہند) نئی دہلی کے زیرِ اہتمام راج نرائن رازؔ میموریل سوسائٹی کی جانب سے 07 نومبر 2017 بروز منگل شام پانچ بجے اردو گھر میں پہلا راج نرائن راز یاد گاری خطبہ کا انعقاد ہوا، جس میں معروف و ممتاز نقّاد و دانشور پروفیسر شمیم حنفی نے ’’راج نرائن رازؔ اور ان کے بعض ہم عصر شعرا‘‘  کے عنوان سے اپنا  پُر مغز خطبہ پیش کیا۔پروفیسر شمیم حنفی دو درجن سے زائد اہم کتابوں کے مصنف ہیں اور پروفیسر موصوف کے سیکڑوں ادبی، تہذیبی اور ثقافتی موضوعات پر مضامین ہندستان اور پاکستان کے ممتاز رسائل میں شائع ہوچکے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

دوسو سالہ جشن  یومِ سر سیّد 2017ء

 ہندستان میں تعلیم کے مسیحا اور اردو نثر کے باوا آدم جیسے محترم ناموں سے مشہور سر سیدّ احمد خاں کی پیدائش کے دو سو برس پورے ہونے کے موقعے پراے۔ ایم۔ یو۔ الیومنائی ایسوسی ایشن، قطر کے ذریعے انھیں یاد کیا گیا۔ اس موقعے پر سلوا بنیکٹ ہال، شیریٹن ہوٹل میں 26 /اکتوبر 2017ء کو ایک بہترین ادبی پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ سر سیدّ احمد خاں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے بانی ہی نہیں بلکہ ہندوستان میں   نئی تعلیم کی روشنی پھیلانے والے افراد کے رہ نما ہیں ۔ آج کی یہ تقریب ثقا فتی اور ادبی رنگ لئیے ہوئے ایک کامیاب تقریب تھی جس میں 400 کے قریب مہمانوں نے شرکت کی۔

مزید پڑھیں >>

ایک روزہ قومی سمینار بعنوان ’اردو زبان اور جدید ٹکنالوجی مسائل اور امکانات‘

آج اردوٹکنالوجی سے جڑ رہی ہے لیکن اس ٹکنالوجی کو اساتذہ اور طلبا فروغ اردو اور فروغ تعلیم کے لئے استعمال کریں ۔ مہمانوں کو تہنیت پیش کی گئی، سمینار کے سوانئیرکا رسم اجراء مہمان خصوصی پروفیسریو اومیش رجسٹرارمہاتمہ گاندھی یونیورسٹی نلگنڈہ کے ہاتھوں عمل میں آیا۔اختتامی اجلاس میں مہمانوں کے ہاتھوں شرکاء میں اسنادات کی تقسیم عمل میں آئی۔ عروج افشاں جبین اسسٹنٹ پروفیسر معاشیات کے کا شکریہ پر سمینار کا اختتام عمل میں آیا۔اس سمینار میں ریاست تلنگانہ کے مختلف ا ساتذہ و ریسرچ اسکالرز موجود تھے۔

مزید پڑھیں >>

علمی مجلس کے زیر اہتمام طارق متین کے اعزاز میں شعری نشست

علمی مجلس، پٹنہ کے زیر اہتمام گزشتہ شام معروف شاعر طارق متین کے اعزاز میں ایک شعری نشست کا انعقاد کیا گیا۔ نشست کی صدارت بزرگ شاعر قیصر صدیقی نے فرمائی جبکہ نظامت کا فریضہ اثر فریدی نے اپنے مخصوص انداز میں انجام دیا۔ مہمانان خصوصی کی حیثیت سے مہمان شاعر طارق متین کے علاوہ معروف افسانہ نگار فخر الدین عارفی اور مغربی بنگال سے تشریف لائے ہوئے افسانہ نگار عشرت بیتاب شریک ہوئے۔

مزید پڑھیں >>

محفل مشاعرہ میں معتبر شعراء نے پیش کیا کلام 

اردو میں شاعرات کی تعداد گرچہ کم ہے تاہم یہ خوشی کی بات ہے کہ ایک ایسےعہد میں جب کہ اردو کی معدومیت کا شکوہ کیا جاتا ہے مرد شاعروں کے علاوہ خواتین بھی اردو شاعری میں جگہ  بنا رہی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار اردو کی شاعرہ فوزیہ رباب کے شعری مجموعہ آنکھوں کے اس پار کے رسم اجراء کے موقع پر ماہرین زبان و ادب نے کی۔

مزید پڑھیں >>

دارالمصنفین شبلی اکیڈمی میں ’سرسید کی عصری معنویت‘ پر دوروزہ سمینار(2)

پروفیسر ظلی نے مدرسۃ العلوم کو امید کی ایک کرن قرار دیا اور کہا کہ سرسیدکا زمانہ اس سے بھی زیادہ خراب تھا مگر انھوں نے قوم کو دوبارہ جینے اوروقار کے ساتھ جینے کا حوصلہ دیا۔ اس سمینار کے دوران مقالوں کے چار اجلاس منعقد ہوئے۔ پروفیسر صغیر افراہیم، ڈاکٹر شمس بدایونی،پروفیسر سعود عالم قاسمی نے مختلف اجلاس کی صدارت فرمائی اور جناب اشہد جمال، ڈاکٹر جمشید ندوی اور ڈاکٹر خان احمد فاروق نے نظامت کا فریضہ انجام دیا۔

مزید پڑھیں >>

دارالمصنفین شبلی اکیڈمی میں ’سرسید کی عصری معنویت‘ پر دوروزہ سمینار

افتتاحی اجلاس میں پروفیسر اصغر عباس کی مرتبہ کتاب ’’شذرات سرسید ‘‘جسے کہ شبلی اکیڈمی نے شائع کیا ہے، اجرا ہوااور ڈاکٹر محمد طاہر (شعبہ اردو شبلی پی جی کالج )کی مرتبہ کتاب ’علی گڑھ انسٹی ٹیوٹ گزٹ کاتوضیحی اشاریہ (۱۸۸۱۔۱۸۸۵)کا اجرا کیاگیا۔ اکیڈمی کی مطبوعات کی آن لائن خریداری اور مطالعہ کے لیے ای بک لانچنگ کی گئی۔ اس موقع پر جناب افضال عثمانی،عاکف عبدالرحمن، مرزا ہمدان بیگ اور حافظ قمر عباسی کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کیا گیا جنھوں نے اس بڑے کام کو اپنی کوششوں سے آسان بنادیا۔

مزید پڑھیں >>

ویمنس ڈگری کالج نلگنڈہ میں قومی اردو سمینار

سوشل میڈیا سے اردو رسم الخط کا فروغ ہورہا ہے۔ گری راج کالج شعبہ اردو کے جانب سے ’’فون میں اردو گھر گھر میں اردو‘‘ مہم کو عالمی سطح پر مقبولیت حاصل ہوئی ہے۔ طلبا کو پابند کیا جائے کہ وہ اردو میں ہی پیغامات لکھا کریں ۔ طلبا کی تخلیقی صلاحیتوں کو ابھارنے کے لئے ان کی تحریر کو اردو بلاگ پر پیش کیا جائے۔ یوٹیوب پر مختلف شعرا اور ادیبوں سے متعلق ویڈیوز ہیں جنہیں طلبا کو دکھایا جائے ۔

مزید پڑھیں >>

’امیر خسرو اور انسان دوستی‘ کے موضوع پر خطبہ

 پروفیسر صدیق الرحمن قدوائی صاحب نے اپنی صدارتی تقریر میں کہا کہ خلیق انجم یادگاری خطبات کا یہ سلسلہ چلتا رہے گا۔ کرنل بشیر حسین زیدی کہا کرتے تھے کہ میرے پا س ایک جن ہے اور وہ ہے ڈاکٹر خلیق انجم۔ ان سے جو کام کرنے کو وہ ہوجاتا ہے۔ خلیق انجم ہمیشہ اپنے آپ کو مصروفِ کار رکھتے تھے۔ یہ اردو گھر کا موجود ہونا ان کا سب سے بڑا کارنامہ ہے۔

مزید پڑھیں >>

مانو، لکھنؤ کیمپس میں علامہ اعجاز فرخ کا توسیعی خطبہ

کیمپس کے انچارج ڈاکٹر عبدالقدوس نے خیر مقدم کیا۔ ڈاکٹر عشرت ناہید نے نظامت اور تعارف کا فریضہ انجام دیا۔ کیمپس کے طالب علم محمود الحسن نے قرآن پاک کی تلاوت کی۔ ڈاکٹر عبدالقدوس نے خیر مقدمی کلمات میں آج کے دن کو ایک تاریخی موقع قرار دیا اور کہا کہ علامہ کی آمد اور خطاب سے ہمارے طلبہ کو بہت کچھ سیکھنے اور جاننے کا موقع ملے گا۔ انہوں یہ بھی کہا کہ تاریخ کے ایک سنہرے دور کو آج ہم علامہ اعجاز فرخ کے الفاظ میں دیکھنے کی کوشش کریں گے۔

مزید پڑھیں >>