متفرقات

ماں اک عظیم نعمت ِ پروردگار ہے!

ماں خوش ہے تو رب خوش ہے ،ماں راضی ہے تو مالک راضی ہے ،ماں سے گھر میں اجالا ہے اور ماں ہی سے زندگیاں روشن ومنور ہیں ۔ قربِ قیامت رونماں ہونے والی بہت سی نشانیوں کو نبی کریم ﷺ نے بیان فرمایا ۔جن میں ایک نشانی یہ بھی ہے :اطاع الرجل زوجتہ وعق امہ ادنی صدیقہ واقصی اباہ۔( ترمذی:2141)کہ آدمی اپنی بیوی کی اطاعت کرے گا اور ماں کی نافرمانی کرے گا،دوست کو قریب کرے گا اور باپ کو دور کرے گا۔آنے والے خطرناک دور کی نبی کریمﷺ نے پیشن گوئی فرمادی ہے ،لہذا ہمیں بچنا چاہیے کہ کہیں ہم ماں کے ساتھ نافرمانی والامعاملہ کرکے علاماتِ قیامت کا حصہ تو نہیں بن رہے ہیں ؟

مزید پڑھیں >>

اسلام میں طلاق کا تصور اور اس کی ضرورت!

شادی داراصل دو دلوں کا اگریمنٹ ہے ، اگر دو روح مل جاتے ہیں مزاج مل جاتا ہے عادات و اطوار مل جاتے ہیں تو زندگی خوشگوار ہو جاتی ہے ۔ اگر اس اگریمنٹ میں مزاج نہیں مل پاتا ہے ، ذوق اور شوق نہیں مل پاتا ہے ۔ تب مسائل پیدا ہوتے ہیں اور دونوں کے درمیان آپسی رنجش بڑھتی ہے۔ اس کے حل کے لیے کائونسلنگ کی جاتی ہے ، تدابیریں کی جاتی ہیں اور سب تدبیریں جب الٹی پڑجاتی ہیں تب ’’ کچھ نہ دوانے کام کیا ‘‘ کہہ کر نہیں بیٹھا جا سکتا ہے بلکہ اب اس کا آخری حل جدائی آتا ہے جسے شریعت مطہرہ کے مقدس اصطلاح میں ’’ طلاق کہا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

ہم سب "نقل” کے ذمہ دار ہیں!

بس فیصلہ یہ کرنا ہے کہ ہم اپنی اولاد کے کسی بھی ایسے فعل کی حوصلہ افزائی نہیں کرینگے جو مستقبل میں اسکے لئے اور معاشرے کیلئے نقصان دہ ثابت ہو۔ طبقاتی نظام سے بھی ہمیں آزادی چاہئے اصل تبدیلی اس طبقاتی نظام سے باہر ہماری منتظر ہے اب دیکھنا یہ ہے کہ ہم کب اس نظام کو اپنے پیروں تلے روندتے ہیں اور نقل جیسی بیماریوں سے چھٹکارا پاتے ہیں ۔ ہم سب اس نقل مافیہ کا حصہ ہیں ۔ کوئی شک نہیں اچھا وقت ہمارا انتظار کر رہا ہے۔

مزید پڑھیں >>

کرپشن کے خاتمے تک

یہ ایسا ناسور ہے جس سے ملکی ترقی تو کیا ملکی بقاء کو بھی خطرہ لاحق ہو سکتا ہے اس لئے ضروری ہے کہ کرپشن کے خاتمے کے لئے ہر ممکن اقدامات کرنے چاہیں اور یہ کاروائیاں سیاسی وابستگی سے بالا تر ہونی چاہے تاکہ کسی بھی فرد یا ادارے کو یہ شکایت نہ وہ کہ اس کے خلاف کی جانے والی کاروائی جانبدار ہے ہمیں اب یہ سمجھ لینا چاہیے کہ کرپشن کے خاتمے میں ہمارے آدھے سے زیادہ مسائل کا حل پوشیدہ ہے۔

مزید پڑھیں >>

نیند

پرسکون نیند کی بنیادی ضرورت اندھیرا ہے‘ ماحول کی تمازت اور شور شرابہ کا کم ہونا ہے۔ اللہ سبحانہ و تعالٰی نے رات بنا کر پرسکون نیند کی ان فطری ضرورتوں کو پورا کر دیا۔ لیکن رات کو بالکل ہی اندھیرا نہیں کیا بلکہ چاندہ بنا کر مدھم روشنی بھی پھیلا دیا تاکہ اس کے بندے رات کو بالکل ہی بے کار یا نہ ہوجائیں ۔پھر رات کو ایک ہی وقت میں دنیا میں بسنے والی تقریباًتمام مخلوقات پر نیند طاری کرکے شورشرابہ بھی ختم کردیا۔ یوں بنی نوع انسان کو نیند کی عظیم نعمت عطا کیا تاکہ وہ شکر کرے۔

مزید پڑھیں >>

جموں میں پولیس افسر کے ہاتھوں خاتون کی جنسی زیادتی کا معاملہ!

ضرورت اس بات کی ہے کہ ان الزماات کی گہرائی سے غیرجانبدارانہ طور پر چھان بین کی جائے ، اگر یہ صحیح ثابت ہوتے ہیں ،جوکہ بادی النظر میں صدفیصد یقینی ہے، تو اس پولیس افسر کے خلاف سخت سے سخت کارروائی ہونی چاہئے تاکہ آئندہ کوئی قانون کا محافظ ایسا کرنے کی جرعت نہ کرے ۔ پولیس کے تئیں خواتین کے کھوئے ہوئے اعتماد کی بحالی کیلئے ایسا کرنا وقت کا تقاضا ہے۔

مزید پڑھیں >>

اے کاش کہ سمجھے کوئی!

بے شمار کتابیں موجود ہیں جن میں اسلامی تعلیمات بہت آسان الفاظ میں درج شدہ ہیں ۔ یہ تحریر کوئی خاص نہیں ہے۔ بالکل عام باتوں پر مبنی ہے اور میں اس بات سے بخوبی واقف ہوں کہ اس تحریر کو بھی ایسے ہی عام انداز میں لیا جائے گا جیسے روز مرہ زندگی میں ہدایت کی طرف بلانے والی چیزوں کو نظر انداز کر دیا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

محبّت اور تبلیغ کا یہ رنگ ہم ہندوستانیوں کے لئے نیا ہے!

آر ایس ایس نے مسلمانوں کو جوڑنے کی تیاری کر لی .مسلم مورچہ بھی بن گیا .ٹوپی لگاہے کچھ مسلمانوں کا ساتھ بھی مل گیا .لیکن اس لوک کہانی کا سچ اپنی جگہ ہے .دلوں کو جوڑنے والے ، ہاتھوں میں لٹھ لئے کھڑے ہیں .ان میں کویی اجمیر دھماکے کا مجرم ،کویی سمجھوتا ایکسپریس کا مجرم .ابھی یہ سارے سفید کالر والے ہیں اور ان پر ہی مسلمانوں کو قریب لانے کی ذمہ داری دی گیی ہے .ان کے جواب پہلے سے تیار ہیں .یہ وہ ہیں ،جن کی نفرت اسلام سے ہے .

مزید پڑھیں >>

ہندوستانی سماج کی تصویر کا ایک خطرناک پہلو

ہم مسلمانوں کو چاہئے کہ اپنے معاشرتی نظام کاایک غائرانہ جائزہ لے کر طلاق سے جڑے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کریں مطلقہ بیوہ خواتین کے نکاح ثانی اور ان کی زندگی کو از سر نو مرتب کرنے کے لئے ایک پروگرام اور لائحہ عمل تیار کریں - یہ کام محلہ وار مسجد کی جماعت کے ذریعہ بآسانی ہوسکتاہے- علماء، دانشور اور مفکرین مصلحین اس کاز کے لئے آگے آئیں - اس کے علاوہ بڑی تعداد میں مسلم رہنما، دانشور، مفکرین اور مقالہ نگار آگے آکر ہندو خواتین کے حقوق کی جنگ چھیڑیں اور ہندو سماج میں ہورہے مظالم کو منظر عام پر لاکر ان لاکھوں بے سہارا خواتین کی بازآبادکاری، ان کے حقوق کا بیڑا اٹھائیں -

مزید پڑھیں >>

دلتوں سے نفرت نہ کرو اُن کو علم سکھاؤ

سوامی پرساد موریہ زبان کھولتے وقت اپنی حیثیت نہ بھولیں ۔ انہیں مودی جی نے ان کی قابلیت کی بناء پر وزیر نہیں بنایا ہے بلکہ وہ جو مشہور مقولہ ہے کہ بھوک میں کواڑ بھی پاپڑ معلوم ہوتے ہیں ۔ وہ کواڑ ہیں لیکن ضرورت نے ان کو پاپڑ بنا دیا ہے۔ امت شاہ اور ان سے پہلے راہل، دلتوں کے گھروں میں ان کا پکا کھانا کھانے کی بہت نوٹنکی کرچکے ہیں یہ سب نوٹنکی ہے۔

مزید پڑھیں >>