شخصیت کا ارتقا

اپنے مال کو دین پرخرچ کیجیے!

جائز حاجات اور ضروری چیزوں کی تکمیل کے ساتھ اپنے پیسے کو دین کے لئے اور اس کی نشر واشاعت کے لئے لگانے کی فکرکرنا وقت کا اہم تقاضا ہے! کیوں کہ خدا کا دین اس کی اشاعت اور تبلیغ کے لئے کسی فردِ خاص اور شخص ِ معین کا محتاج نہیں ،وہ جس سے چاہے اپنے عظیم دین کا م لے سکتا ہے ،وہ صنم خانوں سے کعبہ کے پاسبانوں کو پیداکر سکتا ہے،دین کے بارے میں روگردانی اور بخل کرناکس درجہ خطرناک ہے

مزید پڑھیں >>

مشکلات ترقی کا زینہ ہیں!

دور حاضر میں بڑھتے ہوئے وسائل کے ساتھ ساتھ روز نت نئے مسائل بھی جنم لے رہے ہیں ۔ آج کے دور میں مسائل ہی نہیں بلکہ مشکلات بھی نئے نئے بدنما چہرے لئے ابھررہی ہے۔ گذشتہ دنوں کی بنسبت آج لوگ زیادہ رنج و الم کا شکار ہیں ۔ اسی وجہ سے زندگی سے مایوس ہوکر اپنی جان گنوانے میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں محسوس کرتے۔ خصوصامغربی ممالک (Western countries)میں حادثاتی موت بہت زیادہ دیکھنے کو آتی ہے جوکہ سب سے زیادہ ترقی یافتہ ملک شمار کئے جاتے ہیں ۔ اب اسے ترقی کہیں یا تنزلی ؟

مزید پڑھیں >>

نوجوان اپنی صلاحیتوں  کو دین کے لیے استعمال کریں

اسلام دنیوی ترقی سے منع نہیں کرتا،اور نہ ہی مختلف میدانوں میں کمال حاصل کرنے سے روکتا ہے، بلکہ حالات اس بات کا شدید تقاضے کررہے ہیں ہر بلندی پر مسلمان پہنچے ،ہر کامیابی حاصل کرے ،ہر اونچا مقام پانے میں پیچھے نہ رہے ،لیکن ان تمام کے ساتھ ہماری صلاحیتیں اپنے دین کے لئے لگے ،ہماری فکروں میں دین سمایا ہوا ہو،ہماری تمنائیں تعلیماتِ محمدی کو عام کرنے کی ہوں ۔الحمدللہ امت میں قابل اور باصلاحیت نوجوانوں اور بڑوں کی کمی نہیں ہے ،ہر فن کے ماہر اور ہر خوبی کے حامل افراد بڑی مقدارمیں موجود ہیں ،ٹیکنالوجی میں خوب مہارت رکھنے والے اور حالات ِ زمانہ پر گہری نگاہ رکھنے والے بھی دست یاب ہیں ،اور دل میں درد اور تمنائیں بھی رکھنے والے جیالے بھی ہیں۔

مزید پڑھیں >>

چیلنجوں کا جواب

عصرجدید نے جب سے اپنے بال وپرپھیلاناشروع کیے ہیں، مسابقت اورمقابلہ آرائی کی ایسی ہوڑمچی ہوئی ہے کہ انسان پربس آگے نکل جانے کی دُھن سوارہے۔ اس مقابلہ آرائی میں اس کے پاس اتنا وقت بھی نہیں کہ وہ پیچھے مڑکردیکھے اوراس بات کاجائزہ لے کہ آخر کتنا سفرطے ہواہے اورابھی منزل کتنی دورہے۔ یہ مسابقہ اور مقابلہ چیلنجوں اورسوالوں کے بطن سے پیداہواہے اورسب کامنتہاے سفر ’’جواب‘‘کی چوٹی سرکرناہے، ایساجواب جوآج کی نفسیات کے عین مطابق ہو، جو عصری تقاضوں سے ہم آہنگ ہواورجوزمانے کے شانہ بشانہ چلنے کے لائق ہو،مگریہاں سوال یہ ہے کہ اس جدوجہد، دوڑ دھوپ اور محنت و مشقت سے کیاانسان واقعی چیلنجوں کے جواب کی طرف بڑھ رہاہے؟

مزید پڑھیں >>

سادگی کا تعلق ایمان سے ہے !

سادگی کا نقشہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے پیش کیا، اپنے اہل بیت کیلئے بھی یہی پسند فرمایا کیونکہ اہل بیت تا قیامت معلم و داعی کی حیثیت رکھتے تھے۔ چاروں خلفاء کا طریقہ بھی یہی سادگی تھا۔ میرا طریق امیری نہیں فقیری ہے؛ لیکن پھر کیا ہوا، دنیا داروں کا تذکرہ نہیں کر رہی ہوں ۔ ہمارے ہاں بدنصیبی سے حال یہاں تک آن پہنچا ہے کہ اپنی تمام تر تعیشاتِ زندگی پر ایک تفاخر اور تکاثر کا جذبہ رکھتے ہوئے اس پر اسلام کا تڑکا لگانے کو وَاَمَّا بِنِعْمَۃِ رَبِّکَ فَحَدِّث کی آیت زبانی سناکر قرآن پر اپنے عمل کا ثبوت پیش کرتے ہیں ۔ ہم کہتے ہیں ، بھئی؛ اللہ کے دیئے کا اظہار تو کرنا چاہئے یہ تو تحدیث نعمت ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ ہم تلبیس ابلیس کا شکار ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

 مطالعہ و کتب بینی کے شوقین اور ہمارے لئے راہ عمل

اس دنیا میں بہت سے نامور ، قابل اور مقبول انسان گزرے ہیں ، دینی میدان میں بھی اور دنیوی لحاظ سے بھی، جنہوں نے اپنی عظمتوں کا لوہا منوایا اور اپنی قدر ومنزلت کا اعتراف زمانہ بھر سے کروایا۔ان …

مزید پڑھیں >>

’’ملے نہ پھول تو۔۔۔‘‘

سفینہ عرفات فاطمہ ’ملے نہ پھول تو کانٹوں سے دوستی کرلی‘ کے مصداق کچھ لوگ ’خزاں‘ کے موسم میں ’بہار ‘سے لطف اندوز ہونے کاہنر جانتے ہیں۔سہولتوں اور آسانیوں کے ساتھ زندگی کاہاتھ تھام کرچلنا کوئی کارنامہ نہیں۔ لیکن جب …

مزید پڑھیں >>

آدمیت اور ابلیسیت

جہاں گیر حسن مصباحی اللہ تعالیٰ نے جب حضرت انسان کو پیدافرمانے کا ارادہ کیا اور اپنے ارادے کو فرشتوں پر ظاہر فرمایاتو فرشتوں نے پوچھا: یااللہ! تو اس انسان کو پیدافرمائے گاجو زمین پر فسادمچائے گا ۔اللہ تعالیٰ کاارشاد …

مزید پڑھیں >>