خصوصیسیاست

گجرات اسمبلی انتخابات 2017 کے نتائج: اس ایک گھنٹے کا رومانچ یاد رہے گا

رويش کمار

نتائج کے دن کبھی اتنے دلچسپ نہیں رہے. ایک مانی ہوئی جیت اچانک اتار چڑھاو میں بدل گئی. صبح نو سے دس کے درمیان بی جے پی اور کانگریس دونوں کے لئے ہوش اڑا دینے والا رہا ہوگا. ایک پل میں بی جے پی آگے نکلتی تھی تو دوسرے لمحے میں کانگریس. کبھی برابر تو کبھی آگے پیچھے. جیت نے کانگریس بی جے پی دونوں سے کھیلنا شروع کر دیا. کبھی اس ہاتھ سے پھسلتي تو کبھی اس ہاتھ سے. سیاست کی کمنٹری آخری اوور کی طرح ہونے لگے تھی.

اس ایک گھنٹے کے سٹیک مثال ہاکی یا فٹ بال سے ملے گی. گول پوسٹ کے قریب دونوں اپنی اسٹک سے گیند پر قبضہ جمع لینا چاہتے تھے. تبھی کوئی فرتيلا کھلاڑی آیا، گیند پر لپکا اور دوسری سمت میں دوڑتے ہوئے کانگریس کے پوسٹ میں گول کر دیا. کانگریس کے لیڈر بی جے پی کے گول پوسٹ کے پاس کھڑے رہ گئے.

آج کے نتیجے کا سارا رومانچ اس ایک گھنٹے میں تھا. بعد میں سب کچھ ویسا ہی ہوا جیسا پہلے کہا جا رہا تھا. دو ریاستوں میں حکومت بی جے پی کی بن رہی ہے. بی جے پی اور عوام کو مبارکباد. انتخابات اگرچہ مسائل پر نہیں لڑا گیا مگر لڑائی برابری کے جیسے ہوئی. عوام اپنا کام کرکے جا چکی ہے. بس اب کوئی ان ماہرین اور تجزیہ کاروں سے بھی گھر جانے کے لئے کہہ دے.

جو لوگ میرا مذاق اڑا رہے ہیں، میں اتنا ہی کہوں گا کہ آپ میرا نہیں اپنا ہی مذاق اڑا رہے ہیں. میں سوال کرتا ہوں. کسی کو ہراتا یا جتاتا نہیں ہوں. مجھ میں اپنا نظریہ رکھنے کی ہمت ہے. ایک طاقت ور اور مقبول لیڈر کے سامنے کھڑا ہو کر بول دینے کے لئے جو حوصلہ چاہئے وہ مجھ میں ہے. یہ حوصلہ جیب میں دس لاکھ کروڑ کے ہونے سے نہیں آتا بلکہ لاکھوں میں ایک رويش کمار ہونے سے آتا ہے. اپنا کام، اپنا چین سب کچھ داؤ پر لگا کر لوگوں کے سوال کے ساتھ کھڑا ہونا سب کے بس کی بات نہیں. سورت کے تاجر جانتے ہیں. ان سے کبھی نہیں کہا کہ آپ کسے ووٹ کریں گے. انہوں نے تکلیف بتائی تو ان کی بات اٹھا دی. یہی میرا کام ہے اور یہی کرتا رہوں گا.

گجرات کی عوام نے وزیر اعظم مودی کو شاندار فتح دی ہے. گودی میڈیا مبارک کیا ان کے قدموں میں ناگن ڈانس کرے گی ہی، لہذا اگر میڈیا سے صحیح معنوں میں کسی کی مبارکباد فرق پڑتا ہے تو وہ میری. میں خود کو اہمیت نہیں دیتا. لیکن وہ لوگ جو کل سے میرے بارے میں اناپ شناپ بول رہے ہیں بس ان کے لئے اس تیور میں کہا ہے. وہ چاہیں تو مارکیٹ میں معلوم کر سکتے ہیں کہ میری مبارک باد کا کتنا وزن ہے! ویسے گريانے والوں کو بھی مبارک ہو. ہم سب اسی ملک کے لئے جیتے مرتے ہیں. مختلف رائے ہو سکتی ہیں مگر ایک دوسرے سے مختلف نہیں ہیں. آپ زبان اور نفرت ملک کے لئے نقصان دہ ہے، آپ کے لئے تو ہے ہی.

مترجم: محمد اسعد فلاحی

یہ مصنف کی ذاتی رائے ہے۔
(اس ویب سائٹ کے مضامین کوعام کرنے میں ہمارا تعاون کیجیے۔)
Disclaimer: The opinions expressed within this article/piece are personal views of the author; and do not reflect the views of the Mazameen.com. The Mazameen.com does not assume any responsibility or liability for the same.)


مزید دکھائیں

رویش کمار

مضمون نگار ہندوستان کے معروف صحافی اور ٹیلی وژن اینکر ہیں۔

متعلقہ

Close