آج کا کالم

ہم صدر ڈاکٹر مرسی کی آزادی کے لئے لڑتے رہیں گے!

یہ چوتھا رمضان ہے اور مصر کے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی مصری قید خانے میں تن تنہا اپنے روز وشب گزار نے پر مجبور ہیں۔ ہم سمجھتے ہیں کہ ان کی حالت زار سے لوگوں کو واقف کراتے رہنا نہایت ضروری ہے۔
جہا ں تک ہمیں معلوم ہے ڈاکٹر محمد مرسی مصر میں واحد ایسے سیاسی قیدی ہیں جن پر اپنے رشتہ داروں سے ملاقات پر بھی پابندی ہے۔ 3 جولائی2013کو فوجی بغاوت کے بعد سے انھوں نے صرف ایک بار 7 نومبر کو ہی اپنے رشتہ داروں سے ملاقات کی ہے۔ تب سے وہ اپنے بیٹے اسامہ سے بھی صرف 4 بار ملے ہیں وہ بھی صرف چند منٹوں کے لئے ۔ اپنے بیٹے سے ان کی آخری ملاقات جنوری 2015 میں ہی ہوئی تھی۔
13 نومبر2013 سے ہی ان پر اپنی اہلیہ اور دوسرے رشتہ داروں سے ملنے پر پابندی ہے۔ ان کے اہل خانہ کو ان کے بارے میں کچھ بھی معلوم نہیں  ہے۔ ان کی صحت کیسی ہے؟ ان کو کھانا مل رہا ہے کہ نہیں؟ لباس اور قید خانہ کس طرح کا ہے؟
کسی کو اجازت بھی نہیں ہے کہ کوئی انھیں ضروریات کا سامان دے سکے‘ مثال کے طور پر کپڑا یا کھانا۔
اہل خانہ نے کئی بار ان سے ملاقات کی دارخواستیں بھیجی ہیں لیکن ان درخواستوں کو سرد خانے میں ڈال دیا جاتا ہے۔ اہل خانہ سے ملاقات تمام قیدیوں بشمول ڈاکٹر مرسی کا آئینی حق ہے ۔
ہم مصری اور عالمی حقوق انسانی تنظیموں سے اپیل کرتے ہیں کہ اس ناانصافی کے سلسلے کو بند کرنے کے لئے مدد کریں!
ہم صدر ڈاکٹر مرسی کی آزادی کے لئے لڑتے رہیں گے!
اہل خانہ صدر ڈاکٹر مرسی
5 جون2016

یہ مصنف کی ذاتی رائے ہے۔
(اس ویب سائٹ کے مضامین کوعام کرنے میں ہمارا تعاون کیجیے۔)
Disclaimer: The opinions expressed within this article/piece are personal views of the author; and do not reflect the views of the Mazameen.com. The Mazameen.com does not assume any responsibility or liability for the same.)


مزید دکھائیں

متعلقہ

Close