سیاست

بہار جل رہا ہے، اسے بچا لیجیے!

رویش کمار

میرے پیارے بہاریوں!

ہماری ریاست جل رہی ہے. اسے بچا لیجئے. اس تماشے میں کسی کا بھلا نہیں ہے. فسادات کی کچھ وجوہات ہوتی ہیں. اس نے پہلے پھینکا تو اس نے بعد میں یہ کہا. پولیس ان کی مدد کے لئے آئی، ہماری مدد کے لئے نہیں آئی. کہیں گائے کا گوشت پھینکنا تو کہیں سور کا گوشت پھینکنا. یہ تمام طریقے پرانے ہو چکے ہیں. آپ ان چکروں میں کیوں پڑتے ہیں. کئی اضلاع سے کشیدگی کی خبریں آرہی ہیں. ان لیڈروں کے چکر میں اپنا بھائی چارہ مت گنوائيے. یہ آئیں گے اور جائیں گے مگر آپ کو آپ کے شہر میں رہنا ہے. نكلیے چوراہے پر، پڑوسی کا دروازہ كھٹكھٹايے. آواز دیجئے کہ آپ فسادات کی اس ذہنیت کے خلاف ہیں. آپ ہندو ہوں یا مسلمان تھانہ پولیس اور مندر مسجد کرکے کہیں نہیں پہنچیں گے. آپ کے بچوں پر مقدمے ہو جائیں گے. پولیس کی کتاب میں گھر گھر میں دنگوں کے ملزم ہو جائیں گے اور آپ کے نقلی غصے کا فائدہ اٹھا کر لیڈر عیش کرے گا. ہوشیار رہئے.

کسی نے کچھ کیا بھی ہے تو اسے معاف کر دیجیے. اقتدار فیل ہو چکا ہے. اس کے پاس آپ سے کیے گئے وعدوں کو لے کر آنکھیں ملانے کی لاج اور ہمت نہیں بچی ہے. وہ نہیں آ سکتے ہیں، چیختے ہوئے کہ دیکھو جو کہا تھا، وہ کر دیا. انہیں فسادات کے شعلوں سے اٹھتے ہوئے دھوئیں کا بہانہ چاہئے تاکہ اس کی آڑ میں چھپ کر آپ کا ووٹ لے جائیں. گھر آپ کا جل رہا ہوگا، تاج ان کے سر پر چمک رہا ہوگا.

اس کے خلاف یا اس کے خلاف آپ کے ترک صحیح ہوں گے مگر باہمی بحث کو نفرت میں مت بدلیے. خوب گلہ شکوہ کیجیے مگر دکانوں کو مت جلائيے. کسی پر پتھر مت پھینكیے. کسی کی جان مت لیجئے. آپ دیکھیے آپ کے کالجوں کی حالت کیا ہے. لاکھوں طالب علموں کا بی اے نہیں ہو رہا ہے، کسی کو نوکری نہیں مل رہی ہے اور بہت چالاکی سے یہ لیڈر آپ کو ہندو مسلمان میں الجھا چکے ہیں. آپ کو فسادی بنایا جا رہا ہے. آپ چاہے ہندو ہوں یا مسلمان ہوں. فسادی بننے سے روكیے خود کو. مقدمے واپس لیجیے اور گلے مل جائیے.

آپ ایک اچھے شہری ہیں. اب بھی وقت ہے کہ اپنے غصے سے واپس لوٹ آنے کا. وہیں چھوڑ کر گلے ملنے کا. نیتا آپ کا گھر جلا رہا ہے تو آپ کہاں ہیں. بہار کہاں ہے. آپ لوگ باہر نكلیے. اس ریاست کو بچا لیجئے. نیتاؤں کو اب مضبوط ووٹر نہیں چاہئے، انہیں دنگوں میں الجھا  ہوا ووٹر چاہئے جو ان کے وعدوں کا حساب نہ پوچھے بلکہ اپنی کسی نامعلوم سیکورٹی پر منحصر ہو جائے. امید ہے آپ خود کو سمجھانے کا ایک موقع دیں گے. خود کو دنگائی بنانے کا کوئی موقع نہیں دیں گے.

مترجم: محمد اسعد فلاحی

یہ مصنف کی ذاتی رائے ہے۔
(اس ویب سائٹ کے مضامین کوعام کرنے میں ہمارا تعاون کیجیے۔)
Disclaimer: The opinions expressed within this article/piece are personal views of the author; and do not reflect the views of the Mazameen.com. The Mazameen.com does not assume any responsibility or liability for the same.)


مزید دکھائیں

رویش کمار

مضمون نگار ہندوستان کے معروف صحافی اور ٹیلی وژن اینکر ہیں۔

متعلقہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close