ہندوستان

بول، زباں اب تک تیری ہے!

یہ تحریک بھی کمزور ہونے والی نہیں ہے— اس تحریک کا اثر تھا کہ فسطائی ذہنیت رکھنے والے ریپبلک ٹی وی کے رپورٹر کو شہلا رشید نے اپنے پروگرام سے باہر نکال دیا۔ غم وغصہ کی انقلاب بنتی یہ لہر ابھی مرکزی حکومت کو نظر نہیں آرہی ہے لیکن حقیقت یہ بھی ہے کہ اندر خانے آتش فشاں کا لاوا آہستہ آہستہ سلگنے لگا ہے۔

مزید پڑھیں >>

وقت ہر ظلم تمہارا تمہیں لوٹا دے گا

پورے ملک میں عظیم صحافی گوری لنکیش کے قتل کے خلاف احتجاج ہورہا ہے اور عدالت عظمیٰ نے ریاستی حکومتوں کو حکم دیا ہے کہ وہ جلد از جلد اپنی ریاست میں گئو رکشکوں کے خلاف ٹاسک فورس بنائیں اور سینئر پولیس افسروں کو اس میں لگائیں ۔ سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت کو بھی یاد دلایا ہے کہ وہ تشدد کے واقعات کو صرف نظم و نسق کا معاملہ کہہ کر اپنا دامن نہیں بچاسکتی کیونکہ مرکزی حکومت کو آئین کی دفعہ 356  کے تحت یہ اختیار حاصل ہے کہ وہ ریاستی حکومتوں کو ایسے واقعات کی روک تھام کے لئے ہدایت دے سکے۔

مزید پڑھیں >>

عیش پرست بابا گرمیت سنگھ سے بھاجپا کا کاروبار

ایسی ویڈیو بھی وائرل ہورہی ہے جس میں ہریانہ کے وزیر اعلیٰ منوہر لال کھٹر (جن کی حکومت کو بعض میڈیا والے ’کھٹارا حکومت‘ کہہ رہے ہیں ) ، کیلاش وجے ورگیہ، امیت شاہ، شہنواز، ساکشی مہاراج اور دیگر سنگھی لیڈران کے ساتھ سوفے پر بیٹھ کر بابا گرمیت سنگھ سے تبادلہ خیال کر رہے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

کشمیر میں تشددکی وجہ محض غلط بیانی!

آئے دنوں پورے ملک سے جموں و کشمیری کی حصوصی حیثیت یعنی آیئن ہند کے دفعہ370اور 35A کو ختم کرنے یا،ختم ہونی چاہے اور کشمیر کو پوری طرح سے ہندوستان کے ساتھ جوڑے جانے کی آواز یں آرہی ہیں کشمیریوں کو غیرانسانی طریقے سے کچلنے کا پرچار کیا جا رہا ہے،

مزید پڑھیں >>

عدلیہ کے فیصلے: چراغِ آخری شب

ایک بات ضرور ہے کہ زعفرانی حکومتیں جو عدلیہ میں مداخلت کرنا شروع کر چکی ہیں اور عدلیہ کو کنٹرول کرنا چاہتی ہیں اگر وہ پانچ دس سال اور اقتدار پر قابض رہتی ہیں تو عدلیہ میں اپنے لوگوں کو داخل کرنے میں کامیاب ہوسکتی ہیں ۔ اس وقت عدلیہ کا آزاد رہنا مشکل ہوگا۔ جو زعفرانی طاقت سے متاثر جج ہوں گے وہ حکومت کے اشارے پر فیصلے کریں گے اور آر ایس ایس کی منشا پوری کریں گے۔

مزید پڑھیں >>

ایک ساتھ تین طلاق کا قہر

جو لوگ ایک وقت کی تین طلاقوں کو تین ہونے کا فتوی دیتے ہیں وہ اللہ کے حکم کی صریح نافرمانی کرتے ہیں۔ اس آیت میں پہلی اور دوسری طلاق کے بعد شوہر کو سوچنے سمجھنے اور اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنے کی مہلت نظر آتی ہے ,یہ مہلت تین طلاق کے بعد ختم ہوتی ہے۔ جس نے ایک ساتھ تین طلاقیں دی اس نے درمیان سے دومہلتوں کو ختم کردیا۔ یہی مہلت میاں بیوی کو پھر سے قریب کرسکتی ہے۔ لوگوں نے اس مہلت کو ضائع کرنا شروع کردیا تو طلاق کی قہریں نازل ہونے لگیں۔

مزید پڑھیں >>

ریل حادثات لا پرواہی کا نتیجہ

ایک بار پھر دیش شدید ریل حادثہ کے دکھ سے گزررہا ہے۔ پانچ دنوں کے درمیان ملک کی سب سے  بڑی ریاست اترپردیش میں دو بڑے حادثوں کا رونما ہونا ریلوے کی لا پرواہی کا اشاریہ ہے۔ پوری سے ہریدوار جارہی اتکل ایکسپریس  کھتولی کے پاس پٹری سے اتر گئی۔ اس حادثے میں  14 بوگیاں پٹری سے اتر گئیں ۔

مزید پڑھیں >>

دہشت گردی کی پشت پناہی اور ہم!

آر ایس ایس کے پرچارک سوامی اسیما نند نے دسمبر 2010 میں گرفتاری کے بعد مجسٹریٹ کے سامنے  اپنے اقبالیہ بیان  میں بتایا کہ 2006 کا مالیگاؤں بلاسٹ ، 2007 کا سمجھوتہ ایکس پریس دھماکہ، نیز حیدرآباد کی مکہ مسجد اور اجمیر شریف  کی درگاہ میں ہونے والے بم دھماکے بھی  بھی ہندوتوا گروپوں نے (نام نہاد )’جہادی دہشت گردی ‘ کا ا نتقام لینے کے لیے  انجام دیے تھے !

مزید پڑھیں >>

عدالت اور حکومت کے اقدامات اور فیصلے!

اِن حالات میں آج ہم اپنی طرف سے کچھ کہنے  اورعدالت و حکومت کے حالیہ  فیصلوں اور اقدامات پر براہ راست کوئی تبصرہ کرنے کے بجائے مولانا مودودی کی ایک تحریر نقل کرنے پر اکتفا کریں گے لیکن اس سے پہلے اتنا کہہ دینا ضروری سمجھتے ہیں کہ قرآن و سنت (اُسوہ حسنہ رسولﷺ)ناقابل تبدل ہے۔ دنیا کے تمام  فرعون، نمرود، ہامان، قارون شدَّاد اور یزید، اُن کے سامنے ’ہیچ‘ سے بھی کمتر، بے حیثیت اور بے معنی ہیں۔

مزید پڑھیں >>

دیکھو ذرا جو دیدۂ عبرت نگاہ ہو!

معتبرذرائع کے مطابق اتکل ایکسپریس کو یہاں سے100؍ سے زائد رفتارکےساتھ گذراگیا اور اچانگ ٹرین کی14؍ بوگیاں پٹری سے اتر گئیں ،متعدد بوگیاں ایک دوسرے کے اوپر چڑھ گئیں ،جس کے بعد ٹرین میں سوار مسافرین میں چیخ و پکار مچ گئی ،اتنا ہی نہیں بلکہ آس پاس کے رہائشی علاقہ کے لوگ بھی اس ٹرین حادثہ کا شکار ہوگئے۔ حادثہ میں دودرجن لوگوں کی ہلاکتوں کی تصدیق ہوچکی ہے؛ جبکہ 100؍ زائد زخمیوں کا علاج قریبی اضلاع کے اسپتالوں میں جاری ہے،جہاں کئی کی حات نازک بنی ہوئی ہے۔

مزید پڑھیں >>