بھارت کبھی ایک سر والا نہیں رہا

آئین ہند کی شناخت اور حیثیت کو برقرار رکھنے کی جدوجہد،ہم سب ہندوستانیوں کامن پروگرام ہونا چاہیے اس کے باجود کہ ہم اپنی منفرد حیثیت کو بھی نہیں کھونا چاہتے اور اس کا حق بھی ہمیں ہندوستانی آئین ہی فراہم کرتا ہے۔

فکر و نظر میں اعتدال پنسدی!

اس پوری گفتگو سے یہ بات خوب اچھی طرح واضح ہو جاتی ہے کہ بے اعتدالی یا شدت پسندی اسلام کا حصہ نہیں ہے۔ کیونکہ اس طرح کی چیزیں فرد واحد کو بھی اور کل اجتماعیت کو بھی دنیا و آخرت میں ناکامی سے دوچار کرنے والی ہیں۔  اس کے بالمقابل اعتدال پسند…

مزاج کی بے اعتدالی

ایسا شخص جواعتدال سے تجاوز کرتا ہواور میانہ روی اس کی پہچان نہ ہودنیا میں کوئی بڑا کام انجام نہیں دے سکتا۔برخلاف اس کے ایک معتدل مزاج شخص ہر وہ ہدف حاصل کر سکتا ہے جس کی تمنا وہ اپنے دل میں لیے ہوئے ہے اور جسے وہ حاصل کرنا چاہتا ہے۔

جمہوریت: ایک سراب ایک گوشۂ تن آسانی!

گفتگو کے پس منظر میں غالباً یہی وجہ ہے کہ آج ایک بڑا طبقہ رائج الوقت جمہوری نظام کو زوال پذیر نظام سمجھتا ہے۔  واقعہ یہ ہے کہ موجودہ جموری نظام میں اس قدر بڑی بڑی خامیاں کھل کے سامنے آگئیں ہیں جس کی روشنی میں یہ نظام آہستہ آہستہ آمریت…

رمضان المبار ک کا پیغام اور عید الفطر کی آمد !

اس عید سعید کے موقع پر ہمیں اپنے ان تمام اسلام پسند بھائیوں کو نہیں بھلانا چاہیے جو آج تنگ دستی اور تشدد کا شکار ہیں۔ ان میں بطور خاص فلسطین،مصر اور شام کے مظلوم مسلمان ہیں تو وہیں وہ تمام مسلمان جن پر صرف اس بنا پر ظلم ڈھایا جا رہا ہے کہ…

یہ کیسی نظریاتی لڑائی ہے، جو سمجھ سے باہر ہے

اس درمیان چند واقعات اہم ہیں جن کا تذکرہ ضروری لگتا ہے،کچھ کا تذکرہ گزشتہ ہفتہ کے مضمون میں بھی کیا گیا تھا ،اور یہ نتائج کو سمجھنے میں آسانی پیدا کرتے ہیں۔بنگال کی پرتشدد صورتحال اور الیکشن کمیشن کا اندرونی خلفشار کا تذکرہ کیا جاچکا…

لوک سبھا انتخابات مکمل: مسلمانوں کے ہاتھ کیا لگا؟

سیاسی مبصرین کا ماننا ہے کہ آخری مرحلہ کی پولننگ سے قبل جو حالات مغربی بنگال میں بنے ہیں، اس کے نتیجہ میں بی جے پی کو گزشتہ 2014کے مقابلہ 2019میں زیادہ فائدہ حاصل ہونے والا ہے۔ دوسری جانب ممتابنرجی کے خواب کو ناکام بنانے میں بھی بی جے پی…

رمضان المبارک کا پیغام: داعی حق بن جائیے

 انسان جب کسی کا غلام بن جائے تو لازم ہے کہ اس کو غلامی سے نکالا جائے۔ کیونکہ انسان جسمانی و عقلی بنیادوں پر آزاد پیدا کیا گیا ہے۔ ساتھ ہی وہ اللہ کا بندہ بھی ہے۔ لہذا اس کے جسم اور اس کی فکر کو ہرسطح پر غلامی سے نجات دلانا اولین فریضہ ہے۔…

سیاسی بساط پر مسلمانوں کی حیثیت (آخری قسط)

گفتگو کے اس پورے پس منظر میں اور سیاسی بساط پر مسلمانوں کی حیثیت کے عنوان کی روشنی میں یہ بات اچھی طرح عیاں ہو چکی ہے کہ ہندوستانی مسلمان گزشتہ ستر سال میں سیاسی بساط پر اُس  چکر ویو کا شکار ہو چکے ہیں جس سے نہ انہیں نکلتے بنتا ہے اور نہ ہی…

سیاسی بساط پر مسلمانوں کی حیثیت (دوسری قسط)

 مسلمانوں کے دو الگ الگ نمائندوں کے بنایات کے بعد اس خبر کو بھی نظر انداز نہیں کیا جاسکتا جس میں اترپردیش کے سلطان پور سے مرکزی وزیر اور بی جے پی امیدوار مینکاگاندھی نے کہا کہ ہم کھلے ہاتھ اور کھلے دل کے ساتھ آئے ہیں، آپ کو کل میری ضرورت…

سیاسی بساط پر مسلمانوں کی حیثیت

محمد آصف اقبال ہندوستان میں لوک سبھا الیکشن کا آغاز بس دو دن بعد ہونے والا ہے۔ 2019کے لوک سبھا الیکشن کے اعلان سے دو روز قبل 9مارچ تک 2293سیاسی پارٹیاں الیکشن کمیشن آف انڈیا کے تحت رجسٹرڈ ہو چکی تھیں۔ جس میں " بھروسہ پارٹی"،"سب سے بڑی…

ہندوستان میں بے روزگاری کا شدید بحران

محمد آصف اقبال ایک زمانہ تھا جب نہ پڑھائی بوجھ سمجھی جاتی تھی نہ ہی پڑھے لکھے لوگوں کے لیے نوکری حاصل کرنا کوئی مشکل عمل تھا۔ چونکہ پڑھے لکھے لوگوں کا تناسب بھی کم تھا لہذا نوکریوں کا حصول آسان مرحلہ سمجھا جاتا تھا۔ اُس زمانہ میں اگر…

جھوٹ پر مبنی معاشرہ کی ہلاکت خیزیاں

انسانی معاشرہ جب جھوٹ کا عادی ہو جاتا ہے تو اس میں بے شمار مسائل جنم لیتے ہیں۔ جھوٹ پر مبنی معاشرہ کے ہر فرد سب سے پہلے شجاعت و جرات ختم ہوتی ہے۔ ایسے معاشرے میں مظالم بڑھتے جاتے ہیں۔ اورظلم کے خلاف اہل باطل کے سامنے سچ کی گواہی دینے کی…

نظام کی تبدیلی میں تعلیمی نظریات کی اہمیت

موجودہ ٹرانسمیشنTransmission ماڈل صرف نظریات اور تصورات کی نسل در نسل منتقلی کو ممکن بناتاہے۔ تعلیم کو بامعنی بنانے کے لیے ہمیں اب مکمل تبدیلی کے انداز کی طرف رجوع کرنا ہوگا جہاں تعلیم کامقصد سماجی ،معاشرتی ،معاشی اور سیاسی نظام کی اصلاح…

صاحب کا دورۂ امریکہ

صاحب سے یہ بھی سوال ہوا کہ یہ شاتم رسول کا کیا معاملہ ہے؟ صاحب بتا رہے تھے۔دیکھو میرے عزیزو! جب تم دوسروں پر وار کروگے تو تم پر بھی لوگ وار کریں گے۔ایک اور سوال کرنے والے نے بیچ میں ہی پوچھ لیا ہم نے کب کس پر اور کہاں وار کیا؟ صاحب اکھڑ…

بدترین فضائی آلودگی کا شکار ہندوستان

ملک کی بیشر ریاستوں میں اسمبلی الیکشن ہو رہے ہیں اور جلد ہی ملک میں پارلیمانی الیکشن بھی ہونے والے ہیں اس کے باوجود کسی بھی سطح کے الیکشن میں حددرجہ خطرناک آب و ہوا کا تذکرہ نہیں ہے۔ اور غالباً ہم عوام کے لیے بھی یہ مسئلہ الیکشن میں اٹھائے…

سائنس، مذہب کے بغیر لنگڑی ہے!

حقیقی علم سوائے وحی الٰہی کے کچھ اور نہیں ہے، گرچہ وہ کسی بھی زمانے اور کسی بھی مقام پر نازل ہوا ہو۔ لیکن آج کے زمانے میں جو حقیقی علم ہمارے پاس موجود ہے وہ دراصل قرآن حکیم اور محمد صلی و علیہ وسلم کی تعلیمات ہیں، کیونکہ یہی تعلیمات آج…

 کامیابی و کامرانی اور بلندی و سرخ روئی (دوسری قسط)

یہ ہے وہ ترقی و ارتقاء اور ناکامی و کامیابی کے درمیان سے گزرنے والی شاہراہ جسے جب جب پچھلی قومو ں نے نظرانداز کیا تو وہ ناکام و نامراد ہوئے اور آج جب دورجدید کی موجود ہ قومیں اسے نظر انداز کررہی ہیں تو ان کے لیے تباہی و نامرادی لکھی جاچکی…

ترقی و بلندی اور کامیابی و کامرانی

  آج انسان نے دنیا میں وہ تمام وسائل حاصل کر لیے ہیں جن کے استعمال سے وہ حد درجہ آرام و آسائش کی زندگی گزارسکتا ہے۔ اس کے باوجوداس کی فطرت میں اللہ تعالیٰ نے مزید ترقی و بلندی اور کامیابی و کامرانی کی خواہش ودیعت فرمائی ہے۔ جس کی بنا پر…

اختلاف رائے کی آزادی کا قتل، متعصب گروہ کی پہچان

محمد آصف اقبال   دنیا میں آج مختلف عقائد و نظریات کے ماننے والے موجود ہیں۔ جو اپنے مقابل دوسرے نظریہ اور عقیدہ سے اختلاف رکھتے ہیں۔ اس کے باجوود مختلف نظریات و عقائد اور مذاہب کے ماننے والے مل جل کے رہتے ہیں جسے عام الفاظ میں اختلاف رائے…

متنوع سماج میں صرف ایک رنگ کبھی قبول نہیں!

یہ بات بھی واضح رہنی چاہیے کہ جو لوگ بے شمار منصوبوں پر ایک ساتھ عمل کرتے ہوئے ہندوستانی آبادی کو صرف ایک رنگ میں رنگنے اوراس کے لیے انہیں تقسیم کرنے کے منصوبوں پر کاربند ہیں وہ بہت جلد کامیابی حاصل ہونے والی نہیں ہے۔

فحاشی و عریانیت کے دور میں!

ان حالات میں معاشرے میں جس قدر تیزی کے ساتھ بے راہ روی کے معاملات سامنے آرہے ہیں وہ تشویشناک ہیں۔ لہذا ضروری ہے کہ وہ لوگ جو معاشرے کو ان برائیوں سے نجات دلانا چاہتے ہیں اور جو چاہتے ہیں کہ ان کی بہو بیٹیاں اور مائیں اُن غلاظتوں سے پاک…

ڈیموکریسی بمقابلہ موبوکریسی

ان واقعات کا اگر بغور مطالعہ کیا جائے تو یہاں معاملہ ایک فرد کی زندگی اور موت سے جڑا ہوا نہیں ہے۔بلکہ جس شخص کی جان جاتی ہے اس کے بچے یتم ہوجاتے، مرنے والی کی بیوی بیوہ جاتی ہے، خاندان سے وابستہ دیگر افرادذہنی، اقتصادی اور سماجی سطح پر…

عصر حاضر میں مساجد کا مطلوبہ کردار (آخری قسط)

کاش کہ ہمارے آئمہ اس جانب توجہ فرمائیں اور وہ تبدیلی ہم اپنی آنکھوں سے دیکھ سکیں جو مطلوب ہے۔ آج کے اس پرفتن دور میں اصلاحِ معاشرہ کے لیے مساجد کے کردار کوایک بار پھر فعال بنانا ہوگا۔ اور اُنہیں خطوط پر عمل پیرا ہونا ہوگاجن کا تذکرہ اوپر…

عصر حاضر میں مساجد کا مطلوبہ کردار(تیسری قسط)

پہلی تین صدیوں میں مسجد ہی وہ درسگاہ تھی جہاں تمام علوم و فنون پڑھائے جاتے تھے اور سب سے پہلی درس گاہ'اصحابِ صفہ'کے نام سے مسجد نبویؐ میں قائم ہوئی۔ مسجد میں درسِ قرآن و حدیث کے ساتھ فقہ کے مسائل بیان کرنے کا اہتمام بھی ہوتا ہے۔ علم و…

عصر حاضر میں مساجد کا مطلوبہ کردار (دوسری قسط)

 اللہ کے رسول اللہ محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے مسجد نبوی کے سنگریزوں پر بیٹھ کر معاشرہ کے تمام مسائل کو قرآن حکیم کی روشنی میں نہ صرف حل فرمایابلکہ آپ ؐکی تمام اصلاحی اور تعمیری سرگرمیاں بھی یہیں سے انجام دی گئیں۔

عصر حاضر میں مساجد کا مطلوبہ کردار!

حضرت سعید بن جبیر نے مساجد سے مراد وہ اعضاء لیے ہیں جن پر آدمی سجدہ کرتا ہے، یعنی ہاتھ، گھٹنے، قدم اور پیشانی۔ اس تفسیر کی رو سے آیت کا مطلب یہ ہے کہ یہ اعضاء اللہ کے بنائے ہوئے ہیں۔ ان پر ا للہ کے سوا کسی اور کے لیے سجدہ نہ کیا جائے۔ وہیں…

سیاسی تماشا: جس کے ہم اور آپ منتظر ہیں!

2019کے لوک سبھا الیکشن جیسے جیسے قریب آرہے ہیں ، ایک بار پھر ملک نفرت کی آگ میں جھلستا نظرآرہا ہے۔ ویسے ہندوستان میں اس طرح کے حالات کوئی نئے نہیں ہیں ۔ شاید اسی لیے ملک کا ایک بڑا طبقہ خاموشی اختیار کرنے کا عادی ہو چکا ہے۔

رمضان المبارک کا پیغام اور عید الفطر کی آمد!

اس عید سعید کے موقع پر ہمیں اپنے ان تمام اسلام پسند بھائیوں کو نہیں بھلانا چاہیے جو آج تنگ دستی اور تشدد کا شکار ہیں۔ ان میں بطور خاص فلسطین،مصر اور شام کے مظلوم مسلمان ہیں تو وہیں وہ تمام مسلمان جن پر صرف اس بنا پر ظلم ڈھایا جا رہا ہے کہ…