گل بوبو

اختر سلطان اصلاحی دنیا میں جو بھی پیدا ہوا ہے اسے ایک روزمرنا ہے، یہ ایک ایسی حقیقت ہے جس سے کوئی انکار نہیں کرسکتا۔ بعض لوگ مرتے ہیں تو ان کے رشتہ دار اور قریبی لوگوں کو ہی دکھ ہوتا ہے اس لئے کہ انہیں کم لوگ جانتے ہیں مگر کچھ لوگوں کی موت…

سچی توبہ

اختر سلطان اصلاحی نعیم آج دن بھر کلاس میں خاموش رہا، نہ تو اس نے اپنے کسی ساتھی کو چھیڑا اور نہ ہی کسی استاذ کی نقل اتاری ، وہ بہت ہی توجہ سے اساتذہ کے لیکچر کو سنتا رہا۔ دوپہر کے وقفے میں وہ خلاف معمول مسجد میں نماز کی ادائیگی کے لئے چلا…

مبارک خواب

اختر سلطان اصلاحی رزلٹ وسیم کے ہاتھ میں تھااور اسے یقین نہ آرہا تھا ۔ پورے پچاس فیصد نمبرات کے ساتھ وہ کلاس میں دوم پوزیشن لایا تھا۔ شیخ سر اور پربلکر سر بھی اسے خوشگوار حیرت بھری نگاہ سے دیکھ رہے تھے۔ ا س کے گہرے دوست ارباز، ریان، عمر اور…

غریب  بادشاہ

اختر سلطان اصلاحی آج جب تمام بچے دادی کے پاس کہانی کے لئے جمع ہوئے تو ارشاد نے کہا دادی آج ہم کسی بادشاہ کی کہانی سنیں گے۔ دادی نے کہا’’کہانی تو سناؤں گی مگر ایک غریب بادشاہ کی وہ بھی بالکل سچی ، تمام بچے پوری توجہ سے دادی کے قریب بیٹھ گئے…

ننھی پری

اختر سلطان اصلاحی دادی جان جب سے لکھنؤ سے واپس آئی ہیں ہر دم ان کی زبان پرننھی پری ہی کا نام ہے ننھی پری روزآنہ سوتے وقت میرے سر پر تیل رکھتی تھی۔ ننھی پری میرے کپڑے دھو کر ان پر استری کرتی تھی۔ ننھی پری صبح پانچ بجے خود بھی بستر چھوڑ دیتی…

طالوت کا قصہ

اختر سلطان اصلاحی کئی روز سے چچا جان قرآنی قصّے سنا رہے تھے اس لئے تمام بچے عشاء پڑھ کر دادای اماں کے کمرے میں جمع ہو جاتے تھے، کل قارون کا قصہ تمام بچوں کو بہت پسند آیا تھا، آج سب سوچ رہے تھے کہ چچا سے کون سا قصہ سنا جائے ، نمرہ بولی’’آج…

کوّا بنا استاد

اختر سلطان اصلاحی چچاجان کو اچھوتی اور انوکھی کہانیاں کہنے کا بڑا ڈھنگ ہے اسی لئے جب وہ دہلی سے آتے ہیں بچے ان کے آگے پیچھے لگے رہتے ہیں۔ وہ بھی بچوں کا مطلب خوب سمجھتے ہیں، آج عشاء کے بعد عدی اور اُسید نے کہا ’’چچا آج ہم آپ سے ایک ایسی…

مسجد کی فریاد

اختر سلطان اصلاحی ندیم کی حیرت کی کوئی حد نہ رہی ، وہ پریشان تھا بات ہی ایسی تھی اسے لگا وہ کسی جادونگری میں آگیا ہے ۔ زمین بھی بات کررہی تھی، گھربھی بول رہے تھے، بیل، گائے ، مرغی ، بکری سب آدمیوں کی طرح گفتگو کررہے تھے۔ اچانک ایک طرف سے…

بے ایمانی کالقمہ

اختر سلطان اصلاحی تمام لو گ اکٹھا ہوگئے تھے اور وہ زبردستی قے کرنے کی کوشش کررہے تھے ، کسی نے رائے دی خوب پانی پی لیجئے، قے ہو جائے گی ۔ چنانچہ انہوں نے کوشش کی او رجو کچھ کھایا تھا اُسے قے کردیا۔ تمام بچے ایک ساتھ بول پڑے۔ ’’لگتا ہے…

خادم بادشاہ

کئی دن سے دادی عشاء کے بعد تمام بچوں کو صحابہ کرامؓ کی کہانیاں سنارہی تھیں۔ پیارے نبیﷺ کے ساتھیوں کی باتیں اور واقعات ویسے ہی بہت اچھے اور دلچسپ تھے اور پھر دادی اماں کا انداز ، بچے ایک دم کان لگائے بیٹھے رہتے ۔ دادی نے جیسے ہی بسم اللہ پڑھ…

ناشکری کا انجام

مخمور آج بہت خوش نظر آرہا تھا۔ وہ وقت سے ایک گھنٹے پہلے ہی اسکول سے آگیا تھا۔ روزانہ تو وہ ایک کونے میں بیٹھ کر سبق دہرایا کرتا تھا مگر آج وہ صرف کھیل رہا تھا۔ جو بچے پڑھ رہے تھے انہیں بھی وہ چھیڑ رہا تھا ’’یا راحمد اتنا کیوں پڑھ رہے ہو…

ندامت کے آنسو

ننھی عفی جب دیکھتی کہ امی اور باجی تلاوت کرتی ہیں تو اس کا دل بھی قرآن لینے کو چاہتا۔ ایک دو بار اس نے چھوا مگرچھوتے ہی دادی یاامی چلاتیں ’’ارے منی قرآن نہ چھوؤ اللہ ناراض ہوگا، اللہ مارے گا، گناہ ملے گا۔ اس کی ننھی عقل میں یہ بات نہ آتی کہ…

بدترین چوری

’’امی میں نوید کو ماروں گا یہ مجھے چور کہہ رہا ہے ‘‘۔ کیوں نوید تم یوسف کو چور کیوں کہہ رہے ہو ، ابھی کل ہی تمہارے دادا نے کہانی سناتے ہوئے کہا تھا کسی کو بُرے القاب سے پکارنا گناہ کا کام ہے ، ابھی میں دادا سے تمہاری شکایت کرتی ہوں، کہانی…

دو بہادر مسلم خواتین

جنگ عورت کا میدان نہیں ہے۔ مرد کی غیرت برداشت بھی نہیں کرتی کہ اس کے ہوتے ہوئے عورت اس کا دفاع کرے۔ اسی لئے قدیم زمانے میں عورتیں میدان جنگ میں تو جاتی تھیں مگر وہ لڑائی میں براہ راست شرکت کے بجائے مردوں کا حوصلہ بڑھاتیں، کھانا پکاتیں، خیمے…

بچوں کا مشاعرہ

ریحان چھٹیوں میں گاؤں گیا تھا۔ وہاں وہ اپنے چچا زاد بھائیوں کے ساتھ ایک مشاعرے میں بھی گیا تھا۔ مشاعرے میں بہت سے شاعروں نے لہک لہک کر اپنے اشعار سنائے تھے ۔ ریحان کو یہ سب اتنا اچھا لگا کہ اس نے اپنے اسکول میں بھی ایک مشاعرہ کرنے کا ارادہ…

عقل مند لڑکی

آج اسکول میں بچوں کا سالانہ جلسہ تھا ۔ تمام ہی بچے بہت خوش تھے۔ نئے نئے کپڑے پہنے رنگ برنگے بیچز لگائے ہوئے جیسے چمن میں طرح طرح کے پھول کھلے ہوں۔ قرأت کا مقابلہ ختم ہوچکا تھا اب تقریریں ہورہی تھیں۔ مقابلے میں شریک تمام بچے پہلی پوزیشن پانے…

جنتی نزہت

کچن میں جھاڑو دے کر ابھی وہ چائے بنارہی تھی کہ امی جان کی آنکھ کھل گئی ۔ ’’نزہت آخر تو اتنے سویرے کیوں جاگ جاتی ہے کتنی بار کہا نیندپوری نہیں ہوگی تو بیمار ہوجائے گی مگر مانتی کہاں ہے‘‘ ۔ ’’ارے امی! میں دس بجے سوئی تھی اور پانچ بجے اٹھی…