علم و جہل اور ہمارا عملی رویہ

علم ِنافع کو حاصل کرنے کے بعد اسے عالم انسانیت تک پہنچانے اور ا س سے اخلاقی تعمیر نو کرنے میں ہی نوع انسان کے لئے دارین کی کامیابی چھپی ہے، وگرنہ بحرو بر میں جہالت، نفس پرستی، لالچ، غرور، بے راہ روی، بے رحمی اورجنگ وجدل کی جوکالی گھٹا ئیں…

لٹتی انسانیت اور ہمارے لیے کرنے کا کام

اس ہیبت ناک صورت حال کا علاج اس وقت بھی ممکن العمل ہے بشرطیکہ باشعور لوگ( داعی اور مصلحین) احساس ذمہ داری سے لیس ہوکر ابھی سے دنیا میں یقینی تباہ ناکیوں کی روک تھام کے لیے کار آمد کوششیں شروع کریں، باوجودیکہ یہ لوگ قلیل التعداد ہی ہوں۔

تحریک اسلامی: ایک مختصر تعارف

میرے بارے میں کئی طرح کے سوالات کھڑے کئے گئے لیکن انہیں حاصل کچھ نہیں، سب لایعنی سوالات تھے۔ مجھے آزمایا گیا میں تو کامیابی نے سر اٹھا کر دکھا دیا کہ کس طرح میرے پیغام و مقصد میں انسانیت کی خدمت و کامیابی ہے۔ مجھے کئی بے ہودہ ناموں سے بدنام…

ما بعد رمضان: زندگی بے قید ہے؟

ایک مومن ومسلم کو روزہ کی حالت میں جو خوف خدا حاصل ہوا اس کا اثر اس پر پورے گیارہ ماہ رہنا چاہیے۔ اس کی عبادت، اس کی تجارت، اس کا لین دین، اس کا چلنا پھرنا، اس کا حلال وحرام میں نہ صرف تمیزکرنا بلکہ مشتبہات سے بھی اجتناب کرنا۔

کتنی آہیں، کتنی سسکیاں اور چاہیے؟

ماں اگرچہ اپنا بچہ جو اب جوان بھی ہو چکا ہے لیکن اس کی نظر میں یہ ابھی بھی وہی ’’ننھا منا‘‘ بچہ ہے جسے اس نے اپنی گود میں پالا، اسے اسی گود میں کھلایا، پلایا اور اسی گود میں یہ بچہ پیشاب کرتا تھا اور اسی گود میں سونا بھی اس کی قسمت بن چکی…

افسوس: ہوئے رُسوا ہم اپنے ہی ہاتھوں!

ابراہیم جمال بٹ’’مسائل و مصائب سے کسی کو مفر نہیں لیکن مسائل کو جھیلنا اور برداشت کرنا بہادری کی ایک اہم پہچان ہوتی ہے۔ جس نے بھی مصیبت پر صبرا ورمسائل پر غور وفکر کرکے اُن کا حل نکالنے کی حتی المقدور کوششیں کی، اسی کو بہادر مانا جاتا…

پاک بھارت تعلقات

یہ رنگ میں بھنگ ڈالنے والا کون ہے؟ پاک بھارت کی دوستی سے کس کو نقصان ہے؟ کون نہیں چاہتا کہ برصغیر میں پاک بھارت دو ہمسایہ ممالک کی آپسی دوریاں ختم ہو جائیں ؟ اور ان دو ممالک کے جنگی ماحول سے فائدہ اٹھا کر کون ساحل پر بیٹھا مزے لے رہا ہے۔…

جلد بازی کی ذہنیت اور اُمت مسلمہ

طویل مدتی مسائل کے حل کی تلاش میں طویل سفر طے کرنا پڑتا ہے تاہم یہ طویل سفر صبر آزما ہوتا ہے کیوں کہ اس سفر میں بہت ساری مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے جب کہ اس سفر میں مصائب وآلام انسان کی اِس راہ میں رُکاوٹ ڈالنے کی بے حد کوششیں کرتے ہیں…

میں  نے اپنا جنازہ پڑھوا لیا

الحمد للہ یہ جنازہ میری زندگی کا ایک ایسا جنازہ تھا جس نے میری آنکھیں  کھول کر رکھ دیں ۔  مجھے اس بات کا احساس ہو گیا کہ جنازہ نہ صرف نماز ہے بلکہ یہ ایک زندہ پیغام ہے ان لوگوں  کے لیے جن کی مہلت زندگی ابھی باقی ہے۔ کاش ہم اس سبق کو یاد…

نیشنل کانفرنس: بچہ بچہ جانتا ہے کہ درد کیا ہے کشمیر کا

آج نیشنل کانفرنس لوگوں کو اپنی باتوں سے پھسلانے کی ایک بار پھر کوشش کر رہی ہے تاکہ وہ برسراقتدار ہو سکے لیکن لوگ آج ان کی ڈرامہ بازی اور مسخرے پن سے اچھی طرح واقف ہیں اور جو کم قلیل اب بھی ان کے گیت گاتے ہیں انہیں بھی اس چیز کا خیال کرنا…

دیا سکہ پایا خزانہ

فقیر کی دعا کا اثر اس قدر ہوا ہے کہ آج تک اس کی شکل میرے سامنے محسوس ہوتی ہے۔ ان فقراء ومساکین کی مدد کر کے کس طرح اپنی پریشانیوں سے نجات اور عاقبت درست ہو سکتی ہے، اس کا اندازہ مجھے اچھی طرح ہو چکا ہے۔ ایک دعا کے بدلے میں میرے رب نے میری…

مبارک ہو ! مسئلہ کشمیر حل ہونے کو ہے

یہ وقت ہی فیصلہ کرے گا لیکن یہ واضح ہے کہ اس بار مسئلہ کشمیر حل ہو ہی جائے گا۔ حل ایسا جس سے یا تو سارے کشمیری ذہنی طور ہندو بن جائیں گے یا ان کے لیے مزید مصائب ومشکلات اور ماردھاڑ کی نئی حکمت عملی ترتیب دی جائے گا۔بقول دنیشور شرما کے کہ…

کشمیر: امتحاں ہے قوم کی تقدیر کا

اس بارے میں عوام کے بپھرے جذبات اور مختلف مقامات پر آج تک پیش آمد واقعات سے صاف دکھائی دیتا ہے کہ کوئی سیاسی بازی گر بھی اس آوپریشن میں اپنا جادو آزما رہا ہے۔ وہ کون ہوسکتا ہے جو درپردہ یہ وحشیانہ اور گھناؤنا کام کر رہا ہو، وہ توخدا…

کشمیر میں سیاسی بازی گروں کی بازی گری!

واد یٔ کشمیر کی تازہ صورت حال جس میں نہ صرف یہاں کی نوجوان نسل کو ہی ختم کرنے کی سازشیں ہو رہی ہیں بلکہ جو نوخیز اور معصوم بچے ہیں انہیں بھی پچھلے کئی برسوں سے مسلسل نشانہ بنا کر ہمیشہ کے لیے ناخیز بنانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ایک طرف…

گھڑی کا ایک اہم پرزہ

وہ گھڑی جس کا پرزہ میرے گھر میں آج بھی موجود ہے تب سے لے کر آج تک نہ ہی میں نے اس کو ہاتھ لگایا اور نہ ہی اسے خراب ہوئی گھڑی میں ڈالا ،اسے دیکھ کر مجھے میرا پڑوسی راہیل یاد آتا ہے اور اس کے یاد آنے سے میری گھبراہٹ مجھے رُلا دیتی ہے۔ میں…

ان آنسوئوں میں درد مخفی نہیں تو اور کیا ہے؟

معصوم بچہ جب کبھی اپنے ماں باپ کے ساتھ شرارت کرتا ہے تو اس کے والدین طوطلی زبان ہی کا استعمال کر کے اس کے ساتھ بچے بن جاتے ہیں ، لیکن جب اسی بچے کی آنکھوں سے آنسوئوں کے قیمتی قطرات بہہ جات ہیں تو والدین کے دل نرم اور محبت کی انتہا پار کر…

اُمید میں بہار ہے!

 بیٹے کو اپنی ماں کی وہ باتیں یاد آئیں جو اس وقت اسے الٹا کر کے سنائی گئی تھیں کہ ’’تمہارا بیٹا بہت ہی ذہین وفطین ہے اور اس کی ذہانت کو چار چاند لگانے کے لیے کسی دوسرے اسکول کا انتخاب ضروری ہے، لہٰذا آپ اس کا داخلہ کسی اور اسکول میں…

زندگی کا وہ آخری لمحہ!

نماز ایسی پڑھو جیسے تمہاری زندگی کی آخری نماز ہو۔‘‘ خدا کے حضور جب ایک صالح وزندہ بندہ کھڑا ہو جاتا ہے تو اس کی رگ رگ سے تھرتھراہٹ محسوس کی جاتی ہے لیکن اگر اسی انسان کو سمجھ آجائے کہ یہ اس کی زندگی کی آخری نماز ہے تو اس میں کتنا خشوع…

مجھے ہے حکم اذاں

آج حالت اگرچہ کمزور ہے لیکن موذنوں کی آوازیں مسلسل گھونج رہی ہیں، انسانیت تک کم ہی سہی لیکن یہ آواز اصل حقیقت میں پہنچ رہی ہے۔ دین پھر سربلند ہو گا مگر اذان دینے کی مسلسل ضرورت ہے۔ مکمل دین اور مسلسل موذنوں (داعیان دین) کی آج ضرورت ہے،…

موت زندگی کی اصل حقیقت

مطلب کچھ نہیں سوائے اس کے کہ انسان اپنے آپ پر غور کرے، اپنی اصل حقیقت کو سمجھے، سمجھنے کے بعد وہ کارنامے انجام دے جن پر عمل پیرا ہو کر ’’اگر اس دنیا میں کچھ بھی نہ ملے تاہم آخرت میں رسوائی کا سامنا نہ ہو، وہاں انجامِ بد سے سابقہ پیش نہ…

ہجری کیلنڈر: ایک اہم درس

آج پھر سے ایک بار اپنے آپ کو محاسبہ کرنے کی ضرورت ہے، نئے سال کی آمد کے ساتھ ہی ہمیں اس بات کی فکر دامن گیر ہونی چاہیے کہ سالِ ماضی میں ہم نے ایسے کیا کام کئے ہیں جن کی وجہ سے مجموعی طور امت کی بقاء کا سامان پیدا ہوا اور کن لاحاصل کاموں…

اُمت کے بکھرے ہوئے دانے

بکھری ہوئی اس امت کا علاج صرف اور صرف اسی نظام زندگی میں ہے جسے ہم کہیں چھوڑ چکے ہیں ۔ بکھری ہوئی اس سیسہ پلائی ہوئی امت کا دانہ دانہ اگر ایک مالا داغے میں پھر سے جمع ہو جائے تو یہ مالا نہ صرف امت مسلمہ بلکہ پوری دنیا کی گردن کی زینت بن…

ڈراؤنا خواب: برما کی ایک درد بھری داستان

اس غیبی آواز کو سن کر میں اس قدر خوف سے لرز اٹھا کہ اُٹھ کھڑا ہو گیا… کیا دیکھتا ہوں کہ میں نیند میں خواب دیکھ رہا تھا۔ ایسا خواب جس نے میری آنکھوں میں سچ مچ کے آنسو لائے ۔ میری زبان سے بس یہی بات نکلی کہ اُف خدایا یا کیا دیکھا اور کیوں…

یہ کس کا لہو ہے… کون مرا؟

سب لوگ حیرانی کے عالم میں سراپا سوال بنے ہوئے تھے، کوئی شخص اس معاملے سے کسی قسم کی بھی آگاہی نہ رکھتا تھا…کوئی نہ جانتا تھا، کیا ہوا، کیوں ہوا، کس لئے ہوا…؟البتہ صبح جب اخبار پڑھا تو معلوم ہوا کہ فلاں علاقہ میں ایک تصادم کے دوران ایک…

اے انسان، کر خودی کی پہچان!

 واقعہ ایک انسان کے لیے عموماً اور مسلمان کے لیے خصوصا ًقابل غور ہے۔ جس دنیا کے لیے انسان دن و رات کھپا دیتا ہے وہ دنیا نہ تو دائمی ہے اور نہ ہی اس میں جمع کیا ہوا سازو سامان دائمی ہے۔ دراصل دنیا میں انسان چند روزہ مسافر ہے ۔

کشمیر: اک سہارے کی اُمیدباقی ہے!

 یہ سب آج کی اس دنیا کے ایک اہم حصہ کشمیر میں ہو رہا ہے … سب دیکھ رہے ہیں … چاہے وہ کسی بھی ملک سے ہو… !دوسرے الفاظ میں کہیں تو ساری دنیا یہ تماشا دیکھ کر آپس میں ایسے گھپ شپ کرتے ہیں کہ جیسے یہ حقیقی واقعات نہیں بلکہ افسانوی اور فلمی…

اصل بیماری: خود احتسابی سے دوری

ایک مسلمان کو اپنا محاسبہ آپ کرنا چاہیے۔ کیوں  کہ ہر شخص اپنے آپ سے بخوبی واقف ہے، اسے معلوم ہے کہ ’میرا ضمیر مجھے کس جانب اشارہ کر رہا ہے‘۔ حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا ایک مشہور قول ہے کہ’’اپنا حساب لو قبل اس کے کہ تمہارا حساب…

خود فراموشی کے ہاتھوں لٹ گئے

میں خاموش اس کے سامنے کھڑا ہو گیا، کیوں کہ وہ جب سے آیا تھا تب سے نہ ہی کہیں پر بیٹھا اور نہ ہی کسی چیز کو پکڑ کر سہارا لیا، یہ سب کچھ دیکھ کر برائے ادب میں بھی اس کے شانہ نشانہ کھڑا ہو گیا، لیکن اس بار کلام ندارد۔

کشمیر 2017: غموں کی گھٹائیں مصائب کی آندھی

حقیقت حال یہ ہے کہ جو کام پچھلے تیس سال کی خون آشامیوں سے نہیں ہو سکا، وہ اب دو ماہی قتل وانہدام سے کہاں پایۂ تکمیل تک پہنچ سکتا؟ اس کے لیے صرف ایک ہی راستہ ہے کہ دونوں بھارت اور پاکستان کو کشمیر حل کو پہلی ترجیح دینا ہوگی اور اس دیرینہ…

افسوس! بھارت میں انسان بے قیمت

وادی کشمیر جہاں آئے روز انسانی جانوں کے ساتھ کھلواڑ کر کے ان کے خون کی ہولی کھیلی جا رہی ہے، بھارت جیسے کثیر التعداد مذاہب سے وابستہ لوگوں پر مشتمل ملک نے کتے اور گائے کی قدر کرنا تو اچھی طرح سمجھ لیا ہے لیکن انسانی جان کی کیا اہمیت ہے اس…