اللہ بخش فریدی

اللہ بخش فریدی

I wrote books on the topic of community awareness, community correction, aligned nation, effective Reforms, Unity & Stability of the Muslim Nations and enforcing the Islamic laws in Muslim Countries. All words and paragraphs of the books are very effective on the soul, revolutionary, influential, very strong powerful books on the wake up of the Ummah, Optimization، Consciousness and awareness and unity of the Muslim Ummah. So that these texts it opened the eyes of society they have enough to awakening. Very appreciated by the Holy Prophet (Allah’s blessing and salutation on him) in the dreams. This article Inshallah! will be a landmark in the community and the Islamic Revival prediction which would pave the way for revival of Islam which the community hopes. That’s my motto and main goal of life. I’ve dedicated my life to achieve these noble goals.
In addition, I set future strategy process of the Muslim Ummah which Named ” New Islamic World Order, for enforcement of Islamic Revivalism” it contains 40 points. If this applies to the entire Muslim world together then we become a great power in the world.

In another addition, I present new idea and plan of Real Welfare Islamic Government System، Which is the guarantor of peace and security in society, Human well-being improvement and maintaining the purity and chastity of the Society.

I hope that you will understand my feelings and cooperation with to raising the wave of awareness in the Muslim Ummah and to raise the feelings of the people to awaken them slumber.

These books are in Urdu language. If you know read Urdu I send you soft copies of these books and the idea of New Islamic World order and the plan of real Islamic government.

نیشنل ازم (NATIONALISM)

ایک مسلمان کیلئے سب سے پہلے اور سب سے قیمتی چیز ایمان ہے اور ایمان کااولین تقاضا ہے کہ اپنے دوسرے مسلمان بھائیوں کی جان، مال، عزت و آبرو، مفاد کے تحفظ کیلئے اپنا سب کچھ قربان کر دے اور کسی صورت ان سے پیچھے نہ ہٹے، ان کا سایہ ان دوسرے مسلمان بھائیوں پر بادل کے سائبان اور آسمان کی چھت کی طرح چھایا رہے، وہ کسی بھی میدان میں خود کو تنہا اور بے یارو مددگار تصور نہ کریں۔

مزید پڑھیں >>

لبرل ازم LIBERALISM  

لبرل ازم مذاہب کا دشمن ہے یہ براہ راست مذاہب سے ٹکراتا ہے کیونکہ لبرل ازم انسان سے اس بات کا تقاضا کرتا ہے کو وہ خود کو صرف اور صرف لبرل تصور کا پابند بنائے۔ مذہب اپنی فطرت میں انسان کو اپنے سامنے جھکنے کا حکم دیتا ہے۔ کوئی بھی مذہب انسان کو مقتدر قرار نہیں دیتا اور اس بات کی اجازت نہیں دیتا کہ وہ اپنی مرضی اور خواہشات کے مطابق عمل اختیار کرے۔ مذہب انسان کو ایک مخصوص نظم و ضبط کا پابند کرتا ہے چاہے وہ نظم و ضبط اس کی پوری زندگی کا احاطہ کرتا ہو یا صرف اخلاقی اور روحانی مسائل تک محدود ہو۔

مزید پڑھیں >>

سیکولرزم (Secularism) یعنی لادینیت

سیکولرزم جمہوریت کا ایک اہم جزو ہے اس کی شرح یہ ہے کہ اگر کسی کا ضمیرگواہی دیتا ہے کہ خدا ہے اور اس کی پرستش کرنی چاہیے تو وہ اپنی زندگی میں انفرادی حد تک بخوشی اپنے خدا کی عبادت کرے،اگر کسی کا ضمیر مانتا ہے کہ کوئی رسول ہے، کوئی آسمانی کتاب یا صحیفہ ہے اور اس پر ایمان رکھنا چاہیے تو وہ بس ان پر ایمان اور یقین اپنی ذات کی حد تک ہی محدود رکھے اور اسے دوسروں تک لے جانے کی جرات نہ کرے،ان کے ساتھ اپنا صرف پرائیویٹ تعلق رکھے باقی دنیا اور اس کے معاملات سے خدا، رسول اور کتاب و مذہب کے کسی قسم کے تعلق کو جوڑنے کی کوشش نہ کرے اگر کوئی ایسا کرنے کی جسارت کرے گا تو وہ مذہبی انتہا پسند قرار پائے گا۔

مزید پڑھیں >>

امریکہ و یورپ کس طرح کا اسلام چاہتے ہیں؟ 

امریکی تھنک ٹینک نے اپنے مقررہ اہداف کے حصول کیلئے امریکہ و یورپ کو لائحہ عمل دیا کہ وہ جدت پسندوں ، روشن خیال، سیکولر و لبرل طبقہ کی حمایت کریں اور اس طبقہ کے کام کی اشاعت اور ڈسٹربیوشن میں مالی مدد کریں ، ان کی حوصلہ افزائی کریں اور اس طبقہ کے لکھاریوں اور ادیبوں کو عوام الناس اور نوجوانوں کیلئے لکھنے کی ترغیب دیں ۔ جدت پسند نصاب کو اسلامی تعلیمی نظام میں شامل کروائیں اور بنیاد پرستی اور اسلامی عقیدہ جہاد کا تصور ان کے تعلیمی نصاب سے یکسر نکلوائیں ۔

مزید پڑھیں >>

جمہوریت اور اس کے مبنیِ کفر فاسد اصول

تمام مسلمان، تمام فرقے، تمام گروہ، تمام اسلامی ریاستیں اپنے تمام باہمی اختلافات اور ماضی کی تلخیوں کو بھلا کر اللہ عزوجل اور اس کے پیارے رسول ﷺ کے نام پر، ان کی رضا کی خاطر، صرف اور صرف اسلام اوراہل اسلام کی عظمت، سربلندی، عزت ووقار اور سلامتی و بقاء کی خاطر ایک مرکز پر اکٹھے ہو جائیں ، آپس میں باہمی تعاون، اتحاد، اتفاق،اخوت، ہمدردی و مساوات کو فروغ دیں کیونکہ آج جتنی ہمیں ان چیزوں کی ضرورت ہے شاید کہ اس سے پہلے کبھی نہ تھی۔

مزید پڑھیں >>

نا اہل قیادت اور کفرِ جمہوریت

دانائے راز حضرت اقبال ؒ فرماتے ہیں کہ اے بے فکر! تم فکر کہاں سے لینا چاہتا ہے، ان پست، جاہل اور کمینہ صفت لوگوں سے؟تمہیں معلوم ہونا چاہیے کہ چیونٹیوں میں فطرت سلیمان علیہ السلام نہیں مل سکتی۔کہاں چیونٹی اور کہاں حضرت سلیمان علیہ السلام، ہم ایک چیونٹی سے سیدناسلیمان علیہ السلام کی سی ذہانت طبع کی توقع نہیں کرسکتے۔ جمہوریت میں پہلے عوام کو گدھا بنایا جاتا ہے اور پھر کہا جاتا ہے کہ ووٹ دے کر اپنا سوار چن لو۔ جمہوریت کوترک کردو کیونکہ اگردوسوگدھے بھی جمع ہوجائیں تو ان سے ایک انسان کے فکر کی توقع نہیں کی جاسکتی۔ اے مسلم! تو گدھا بننا چھوڑ اور کسی پختہ تر، صاحب بصیرت کسی امام کے پیچھے چل، کسی عظیم رہبر کا پیرو بن۔

مزید پڑھیں >>

علم و حکمت کے موتی اور دامن اسلام

دورِ حاضر سائنس و ٹیکنالوجی اور کمپیوٹر کا دور ہے ہمیں روایتی تدریس سے ہٹ کر جدید ذرائع سے اپنی تعلیم کو موثر کرنا ہوگا تاکہ طلبا کو روز ہونے والی تبدیلیوں اور انقلابات سے واقف کراتے ہوئے ان میں موجود پوشیدہ صلاحیتوں کو اجاگر کیا جاسکے، صرف اسی صورت میں مسلمان پوری دنیا پر غالب آ سکتے ہیں اور دنیامیں اپنا کھویا ہوا عظیم مقام پھر سے حاصل کر سکتے ہیں جب وہ زیورِتعلیم کو قرآن و سنت کے بالکل آئین مطابق آراستہ کریں وگرنہ ترقی یافتہ اقوام کی غلامی اور صہیونی و سامراجی قوتوں سے نجات پانا مشکل ہی نہیں ناممکن ہے۔

مزید پڑھیں >>

مجاہدۃ النفس: وقت کی اہم ضرورت

جو شخص چاہتاہے کہ اللہ تعالیٰ کے قرب سے مشرف ہو تو اسے چاہیے کہ اپنے جسم کو اپنی خواہش کے خلاف رکھے اس لیے کہ کوئی عبادت بندہ کو اللہ تبارک و تعالیٰ سے اتنا قریب نہیں کرتی جتنا ہوائے نفس کی مخالفت سے قرب حاصل ہوتا ہے، خواہش کی مخالفت کرنے والا ہی اللہ تعالیٰ کے نزدیک زیادہ محبوب و مقرب ہے۔

مزید پڑھیں >>

وی آئی پیز سیکورٹی: عوام کا محافظ کون؟

سرکاری وسائل کا ناجائز اپنے مقاصد کیلئے استعمال اور امانت میں خیانت کرنے والا انسان سکون نہیں پا سکتا، لوگوں کی معصومیت و اعتماد سے کھیلنے والے فرد کوکبھی خوشیاں حاصل نہیں ہو سکتیں۔ بظاہر نظر آنے والی خوشیاں نظر کا فریب ہیں ضمیر کی آواز پر کان دھریں تو اندازہ ہوتا ہے کہ ہمارے اندر کی تنہائیاں چیخ چیخ کر ہمیں اپنے غلط ہونے کا احساس دلاتی ہیں۔ ہم سب اپنی ذات اور مفادات کے پجاری بن چکے ہیں، ہم بس اپنی خواہشات ہی کی پرستش کر رہے ہیں، خود ستائی و خود فریبی کا شکار ہو کر ایسے ایسے کام کر بیٹھتے ہیں جن سے صرف ہم نہیں ہم سے وابستہ کئی زندگیاں تباہ ہو جاتی ہیں۔

مزید پڑھیں >>

بیڈ گورننس اور بد ترین کرپشن کی رپورٹس

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی ایک رپورٹ دیکھی کہ کرپشن، ٹیکس چوری اور بیڈ گورننس کے ضمن میں 2008ء سے 2013ء تک 9.5ٹریلین روپے ( تقریباً 9.4 ارب امریکی ڈالر) ضائع کر چکی۔ 9.5ٹریلین یعنی 95کھرب روپے پاکستانی معیشت کیلئے کتنی بڑی رقم ہے جو صرف پانچ سال میں چوری ہوئی، اور تقریباً اتنی ہی رقم ملک کے بااثر اور وڈیرے حکومت سے قرض لے کراور پھر مظلوم و لاچار بن کے معاف کرو ا چکے۔

مزید پڑھیں >>