ملیالم زبان پر اُردو کے لسانی اور تہذیبی اثرات

آج اُردو کو ملیالم سے علاحدہ نہیں کیا جا سکتا۔ لسانی طور پر اُردو کے الفاظ ملیالم میں کچھ اس طرح ضم ہوگئے ہیں کہ ملیالی اسے اُردو الفاظ نہیں سمجھتے۔ کیرالا میں ہر خاص وعام اور تمام مذاہب کے لوگ یکساں طور پر ملیالم بولتے ہیں۔ یہ زبان کبھی…

کیرالا میں اُردو زبان کی مختصر تاریخ

ترورکاڈ میں اُردو کے سب سے بڑے عالم و فاضل جناب ایم۔ علی مولوی صاحب تھے۔ وہ ایس۔ ایم۔ سرورؔ صاحب کے شاگرد تھے۔ ان کو مکمّل طور پر اُردو زبان پر مہارت حاصل تھی۔ لکھنؤ، حیدرآباد وغیرہ جگہوں پر اُردو میں درس بھی دیا کرتے تھے۔ ان کے برادر…

کیرالا میں اُردو تعلیم

کیرالا اُردو ٹیچرس ایسوسیشن کے ساتھ ساتھ انجمن ترقی اُردو (کیرالا) بھی اُردو تعلیم کی ترقی و ترویج کے لیے مسلسل کام کر رہی ہے۔ انجمن کے صدر ایم۔ پی۔ عبدالصمد صمدانی کی کاوشوں سے کیرالا میں اُردو کا شوق و ذوق کافی بڑھا ہے۔  

علامہ اقبالؔ اور زبانِ اردو

اقبالؔ نے اردو زبان کو جس بلند پر پہچایا وہ اقبالؔ سے قبل کسی شاعر کے بس کی بات نہیں تھی۔ اردو زبان و ادب کیے سرمایہ میں اقبالؔ کے حصّہ کی برابری کو ئی نہیں کر سکتا۔ بے شک اردو زبان میں علامہ اقبالؔ نے نئی روح پھونکی ہے اور یہ زبان ہمیشہ…

زلیخا حسین: کیرالا کی واحد اُردو ناول نگار

اپنے ناولوں کے نسوانی کردار کی طرح زُلیخا سب کچھ تقدیر کا کھیل مان کر خدا پر مکمل بھروسہ رکھتے ہوئے زندگی کو گزار رہی ہیں۔ مصیبتوں میں بھی اپنی ذمہ داریوں سے منہ نہیں موڑتیں، کسی سے کوئی گلا شکوہ نہیں۔ اپنی ضعیفانہ عمر اپنے خاندان کے ساتھ…

کیرالا میں اُردو شاعری

بے شک اُردو شعری ادب میں ریاست کیرالا کا بھی حصہ رہا ہے لیکن اتنی وسیع تاریخ نہیں ہے، جتنی کہ دوسری ریاستوں کی ہے۔ کیرالا کی عام بولی ملیالم ہے، یہاں اُردو کسی مادری زبان نہیں ہے۔ پھر بھی اُردو کا ذوق و شوق اور شعر و شاعری کا رجحان بڑھتا جا…

کیرالا میں اُردو صحافت

جنوبی ہند میں کیرالا ایک ایسی ریاست ہے جہاں سب باشندوں کی بولی، سمجھی، لکھی اور پڑھی جانے والی زبان ’ملیالم‘ ہے۔ کیرالا میں ہندو، مسلم، عیسائی، بُدھ اور جین مذاہب کے لوگ یکساں طور پر ملیالم زبان استعمال کرتے ہیں۔ ایسی ریاست میں اُردو زبان…