چار دریاؤں کی پکار (2)

 ممبئی کے84 سالہ بزرگ  عابد سورتی  کارٹونسٹ ہیں، اسکرین رائٹر ہیں، آرٹسٹ ہیں، جرنلسٹ اور کئی زبانوں میں 80 سے زائد کتابوں کے  مصنف ہیں، ہندی ساہتیہ کے قومی ایوارڈ یافتہ اور گجرات گورو انعام سے سرفراز ہیں۔

چار دریاؤں کا تحفہ

پلاچی ماڑہ تحریک نے بھی بالآخر حکومت کو مجبور کیا تھا کہ  کوک جیسی  طاقتور کمپنی کے پلانٹ کا لائسنس منسوخ  کردے اور  پھر یہ بھی ہوا کہ آبی وسائل  سے کھلواڑ کرنیوالے  پلانٹ نے اپنا بوریہ یہاں سے لپیٹ دیا۔

خرکاریاں

کہتے ہیں  وہ مصری مخلوق جنھیں بالعموم گدھوں سے ممتاز  مانا جاتا ہے   ان کا   اس داستان سے کیا تعلق۔ آپ گستاخی کہیں، بے باکی یا سمجھداری  لیکن ہمیں تو تعلق ہی نہیں  بلکہ حالیہ تاریخ کے حوالے سے بڑی والہانہ ترتیب بھی نظر آتی ہے۔

عرفات

یہاں زندگی کے آثار صرف یوم عرفہ کو ہی نظر آتے ہیں۔ عرفہ میں بے شمار عارضی خیمے بھی ہیں لیکن لوگ  درختوں تلے یا چادریں تان کر ٹہھرنے کو ترجیح دیتے ہیں۔ تاکہ  اس وقوف کی یاد تازہ کریں اور خود کو اس قیام سے ہم آہنگ کریں جسے عرفات کی سرزمین نے…

منیٰ

 منیٰ ایسی جگہ ہے جہاں کوئ بڑا یا چھوٹا نہیں۔ دولت، رتبہ، دستار فضیلت  اور بزرگی کے عماموں کی بنیاد پر خیموں کو بانٹنے کی یہاں کوئی اجازت نہیں۔ جو یہاں پہنچنے میں سبقت لے جائے منی کی وادیاں بس اسی کا مسکن  ہیں۔

دیدِ سعید ( دوسری قسط)

سیدنا  عمر فاروق رضی اللہ عنہ نے اپنے عہد خلافت میں کھلا  پیغام جاری  کروایاتھا کہ " میری دلی خواہش ہے کہ میں کچھ آدمیوں کو شہروں اور دیہاتوں میں تفتیش کے لیے روانہ کروں جو ان لوگوں کی فہرست تیار کریں جو استطاعت کے باوجود اجتماع حج میں شرکت…

دیدِ سعید (پہلی  قسط)

یہ کوئی سفر نامہ نہیں،  بلکہ منتشر اور مختصر مشاہدات کا البم ہے۔ از حرم تا حرم۔ سفر نامہ سمجھ کر پڑھیں تو راقم پر زیادتی ہوگی، اور قاری کے حصے میں مایوسی آئیگی۔ بے ربط تصویروں کا کولاج سمجھ کر بلاتکلف ٹٹولتے چلئیے، آپ لطف بھی پائیں گے اور…

تنِ حرم میں چھپا دی ہے روح بت خانہ!

ہر چند سال بعد قالین ، جدید ماربلس اور گرینائیٹ سے مساجد کی تزئین نو اور اے سی کی تنصیب ، شہری علاقوں کی مساجد کمیٹیز کا نیا مشغلہ بنتا جارہا ہے ۔ ہماری ناقص عقل یہ سمجھ نہیں پائی کہ جس قوم میں صحت، صفائی اور تعلیم کا معیار ملکی اوسط سے…

⁠⁠⁠⁠⁠واغضض من صوتك

شجاعت حسینی کسی زمانے میں کارخانوں کے مزدوروں کو کھانے کی چھٹی دینے کیلیے بجایا جانیوالا  پر شور بگل (سائرن )جسے سماج نے بالعموم ترک کردیا ہے اسے اٹھا کر ہم نے مسجد کے میناروں پر نصب کردیا اور خدا کے گھر کے وقار کو پامال  کئیے جارہے ہیں ۔…