تاریخ و سیرت

مسلمانوں کے لیے گاندھی جی کی قربانی

بابائے قوم مہاتما گاندھی کو ایک ہندو انتہا پسند، ناتھو رام گوڈسے نے گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔ گوڈسے کا تعلق راشٹریہ سویم سیوک سنگھ سے ہے یا نہیں، اس بات کو لے کر آج تک تنازع برقرار ہے۔ تاہم، غور کرنے والی بات یہ ہے کہ جس شخص نے ہندوستان کو انگریزوں کی غلامی سے نجات دلائی، اسے اس کے ہی ایک ہم وطن نے موت کی نیند کیوں سلا دی؟ دراصل، وہ ایک ہندو انتہا پسند تھا جسے نہ جانے کیوں یہ بات بار بار پریشان کر رہی تھی کہ مہا تما گاندھی مسلمانوں کے زیادہ حمایتی ہیں۔ یہی ان کے قتل کی سب سے بڑی وجہ بنی۔ اسی میں سے ایک وجہ گاندھی جی کے ذریعہ میوات کے پانچ لاکھ مسلمانوں کو پاکستان جانے سے روکنا بھی ہے۔

مزید پڑھیں >>

 خاتون جنت:حضرت فاطمہ ؓ

اس نیلے آسمان کے نیچے اور زمین کے اس سینے پر محسن انسانیت ﷺکو سب سے عزیزترین اگر کوئی شخصیت تھی تو وہ آپﷺ کی لخت جگر حضرت فاطمہ رضی اﷲ تعالی عنھاہی تھیں ۔آپ ﷺنے اپنی اس جگرگوشہ کوجنت میں عورتوں کی سردار قرار دیا۔ایک روایت کے مطابق آپﷺ حضرت فاطمہ الزہرارضی اﷲتعالی عنھاکی خوشبو سونگھ کرفرماتے کہ ان میں سے مجھے بہشت کی خوشبوآتی ہے کیونکہ یہ اس میوہ جنت سے پیداہوئی ہیں جو شب معراج جبرائیل نے مجھے کھلایاتھا۔ام المومنین حضرت خدیجۃ الکبری رضی اﷲتعالی عنھاکے بطن سے آپﷺ کی کل چار شہزادیاں تھیں ،حضرت زینب،حضرت رقیہ ،حضرت ام کلثوم اور حضرت فاطمہ الزہرارضی اﷲتعالی عنھن،ان میں سے حضرت فاطمہ سب سے چھوٹی اور سب سے زیادہ لاڈلی تھیں ۔بڑی تینوں آپﷺ کی عمرعزیزمیں ہی انتقال فرماگئی تھیں ،صرف حضرت فاطمہ الزہرارضی اﷲتعالی عنھاوصال مبارک کے وقت موجود تھیں ۔

مزید پڑھیں >>

حیاتِ صدیق اکبرؓ کے چند روشن پہلو

22جمادی الاخری افضل البشر بعد الانبیاء سیدنا صدیق اکبر ؓ کا یوم ِ وفات ہے۔اس مناسبت سے کچھ تذکرہ اس عظیم المرتبت شخصیت کا کرتے ہیں اور ان کی حیاتِ مبارکہ کے چند پہلوؤں پر نظر ڈالتے ہیں ،اگرچہ کہ ان کی پوری زندگی ایمان وعمل کی ایک روشن اور تابناک زندگی ہے ،اور ہر لمحہ ٔ حیات قیامت تک آنے والے انسانوں کے لئے پیغام وسبق ہے۔

مزید پڑھیں >>

افضل البشر بعدالانبیاء :حضرت ابوبکر صدیق

حضرت ابوبکر صدیق ؓکے زمام اقتدار سنبھالتے ہی متعدد نئے مسائل نے سراٹھانا شروع کردیا۔محسن انسانیت ﷺ نے انیس سالہ نوجوان ’’اسامہ بن زید‘‘کی قیادت میں ایک لشکر تیار کیا تھاتاکہ رومیوں سے سفیررسولﷺ کے قتل کا قصاص لیاجاسکے،یہ لشکر روانگی کے لیے پابہ رکاب تھا کہ وصال نبوی کا سانحہ بجلی بن کر مسلمانوں پر آن گرا۔حضرت ابوبکر صدیق رضی اﷲ تعالی عنہ نے اقتدارکی باگ دوڑ سنبھالتے ہی اس لشکر کی روانگی کے احکامات صادر کر دیے،بہت سے لوگوں نے اختلاف کیااور حالات کی نزاکت کے باعث اس لشکرسپاہ کو دارالخلافہ میں رہنے کی رائے پیش کی۔حضرت ابوبکر صدیق رضی اﷲ تعالی عنہ نے فیصلہ نبویﷺ سے ایک بال برابر بھی روگردانی سے انکارکر دیااور ایک منزل تک پاپیادہ اس لشکر کے ہمراہ دوڑتے ہوئے گئے۔

مزید پڑھیں >>

بکریاں چرانا اور چھوٹے بچے پڑھانا

علماء نے انبیاء کے بکریاں چرانے کی کچھ وجوہات بیان کی ہیں ، یعنی اللہ تعالیٰ نے اس پراسس سے ان کے اندر کچھ اوصاف پیدا کیے جو ایک نبی میں لازما موجود ہونے چاہیے۔ مثلا نبی نے قوم کی قیادت کرنی ہوتی ہے، لوگ مختلف راستوں پر بھاگ رہے ہوتے ہیں ان کو کنٹرول کرنا اور ایک سیدھے راستے پر چلانا بہت مشکل کام ہے جو بلاشبہ بغیر ٹریننگ کے سرانجام نہیں دیا جاسکتا ۔ اس لئے اللہ تعالیٰ نبوت سے قبل اپنے نبیوں کی یہ ٹریننگ اور تربیت بکریاں چروا کران کے اندر قیادت اور لیڈکرنے کی صلاحیت پیدا کی۔

مزید پڑھیں >>

 سیدنا ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ

سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کے بے شمار کارنامے ایسے ہیں جن پر دنیا رہتی دنیا تک ناز کرے گی ۔ حالانکہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی وفات کے بعد مختلف ایسے فتنے رونما ہوئے جو اسلام کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لیے اپنی توانیاں صرف کر رہے تھے ۔ ان میں مدعیان نبوت کا فتنہ سر فہرست ہے ۔یمن میں اسود عنسی ، یمامہ میں مسیلمہ کذاب ، جزیرہ میں سجاح دختر حارث ، بنو اسد و بنو طی میں طُلیحہ اسدی نے نبوت کے دعویٰ داغ دیے ۔ختم نبوت کوئی معمولی مسئلہ نہ تھا کہ جس کے لیے مصلحت اختیار کر لی جاتی ۔ بلکہ یہ تو اسلام کے اساسی و بنیادی عقائد میں شامل ہے ۔ اس لیے اس فتنے کے خلاف سیدنا صدیق اکبر نے اپنی تمام تر صلاحیتیں بروئے کار لائیں اور لشکر اسلامی کو بھیج کر ان کا قلعہ قمع کیا۔

مزید پڑھیں >>

فارسی کی یاد میں

اسلامی دنیا میں فارسی وہ پہلی زبان تھی جس نے نظم ونثرپر عربی کی اجارہ داری کو چیلنج کیا۔ ابو القاسم فردوسی طوسی کے شاہنامہ کو فارس کی عظیم سلطنت (ایران بزرگ ) کا ملی نغمہ سمجھا جاتا تھا۔ مولانا جلال الدین محمد بلخی رومی المعروف مولانا روم ؒ کی مثنوی کے متعلق مولانا نورالدین عبدالرحمٰن جامیؒ نے فرمایاتھا: مثنوی مولوی معنوی، ہست قرآں در زبانِ پہلوی ، یعنی مولانا رومی ؒ کی مثنوی معنوی (توگویا) پہلوی (فارسی) زبان میں قرآن (کی تفسیر) ہے ۔ عمر خیام کی رباعیات، خواجہ شمس الدین محمد حافظ شیرازی کا دیوان اور ابو محمد مصلح الدین بن عبداللہ المعروف سعدی شیرازی ؒ کی حکایات بصورت گلستان اور بوستان ، فارسی ادب کے روشن چراغ ہیں۔

مزید پڑھیں >>

کردار بولے!

چونکہ ہم سب اللہ کے حبیب کو اپنا راہنما اور پیشوا تسلیم کرتے ہیں ۔اس لئے ہمار ی زندگی کو آپ کی حیات طیبہ کا عکس ہونا چاہئے اور پھر ہمیں غیروں سے یہ کہنے کی بالکل ضرورت نہ رہ جائےکہ ہم مسلمان ایسے ہیں اور ویسے ہیں ۔بلکہ وہ خود پکار کرکہیں آپ مسلمان ایسے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

محمد کی محبت دین حق کی شرط اول ہے!

آپ کے رب نے آپ کو ایسی رفعت و بلندیٔ شان سے نوازا تھا جس کے آگے کسی مخالف کی مخالفت چلنے پائی اور نہ ہی کسی معاند اور بدخواہ کا عناد اور بدخواہی کارگر ہونے پائی بلکہ عناد و مخالفت کے تمام تر بادل چھٹ کر کافور ہوگئے، اور رسالت مآب ﷺ کا ذکر خیر ہے کہ ہر دن پہلے سے زیادہ بڑھتا ہی چلا جارہا ہے اور آپ کی مبارک یاد کی قندیلیں عشاق و محبین کے سینوں میں روز بروز فروزاں سے فروزاں تر ہوتی ہی چلی جارہی ہیں۔

مزید پڑھیں >>

امت کا رہنما طبقہ: صحابہ کرام!

اللہ جل شانہ نے صحابہ کرام کو اپنے نبی کی صحبت اور دین کی اشاعت کے لیے منتخب کیا تھا، اس لیے ان کی فضیلت کو دل و جان سے تسلیم کرتے ہوئے ان کے نقش قدم پر چلنے کی کوشش کی جائے۔ اسلامی عقائد اور انسانی اخلاق کی اصلاح ویسے ہونی چاہیے جیسے صحابہ نے محنت کر کے ساری دنیا میں اپنے عمل سے واضح کی۔

مزید پڑھیں >>