تاریخ و سیرت

مزاح میں آں حضرتﷺ کا اسوہ

اللہ تعالیٰ نے انسا ن کی فطرت میں متضادصفتیں ودیعت کی ہیں ؛ چنانچہ کبھی اس کے مزاج میں درشتی ہوتی ہے توکبھی نرمی، کبھی وہ غصہ سے بے قابوہوجاتاہے توکبھی خوشی کے نقوش اس کے چہرے پرہویداہوتے ہیں ، کبھی اس کی طبیعت آب وہواکی گرمی کوپسندکرتی ہے توکبھی وہ فضامیں خُنکی کاخواہاں ہوتاہے، کبھی اس کا مزاج موسمِ باراں کے خلاف ہوتاہے اورکبھی وہ قطرۂ آب کے لئے گڑگڑاتاہے۔

مزید پڑھیں >>

ختم نبوت

ہر نبی اور ہر آسمانی کتاب نے اپنی امت کو اپنے بعد پیش آنے والے حالات کے بارے میں اطلاعات دی ہیں ۔ کتب آسمانی میں یہ اطلاعات بہت تفصیل سے بیان کی گئی ہیں ۔ گزشتہ مقدس کتب میں اگرچہ انسانوں نے اپنی طرف سے بہت سی تبدیلیاں کر دیں ، اپنی مرضی کی بہت سی نئی باتیں ڈال کر تو اپنی مرضی کے خلاف کی بہت سی باتیں نکال دیں لیکن اس کے باوجود بھی جہاں عقائد کی جلتی بجھتی حقیقتوں سے آج بھی گزشتہ صحائف کسی حد تک منور ہیں وہاں آخری نبی ﷺ اور قیامت کی پیشین گوئیاں بھی ان تمام کتب میں موجود ہے۔

مزید پڑھیں >>

حضورﷺ کی عائلی زندگی پر ایک نظر

ازواجِ نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے معلّمات ہونے کے رول کو آسان بنانے کیلئے رب کائنات نے ان کو امہات المومنین یعنی اہل ایمان کی ماؤں کا منصب عطا کیا۔ گویا ہر صاحب ایمان آدمی مسائل دریافت کرنے کیلئے ان تک اسی طرح رسائی حاصل کرسکتا تھا جس طرح ایک بیٹا اپنی ماں تک رسائی رکھتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

بہت سے لوگ تاریخ کشمیر سے ناواقف ہیں

ہندستان جیسے ملک میں سیکولرزم کا ایجنڈا ایسا رہا جس کی وجہ سے کشمیر پر اس کا دعوی مستحکم ہوتا رہا۔ 24 اکتوبر کو مودی حکومت نے محکمہ خفیہ (IB) کے سابق سربراہ دنیشور شرما کو یہ ذمہ داری سونپی کہ ایسے تمام کشمیریوں سے بات چیت کریں جو کشمیر کے اسٹیک ہولڈرس (اہل مفاد) ہیں لیکن مودی اور ان کی پارٹی پانچ ہی دن کے بعد آرٹیکل 370 کے خلاف بات کرنے لگی۔ ایسی تنگ نظر اور جارحانہ قومیت کے حامیوں سے کشمیر کا مسئلہ نہ کبھی حل ہوا ہے اور نہ حل ہوگا۔

مزید پڑھیں >>

سقوط غرناطہ اور امریکہ

اس وقت دنیا بھر میں جاری امریکی جارحیت کے تانے بانے سقوط غرناطہ کی دستاویز سے ملتے ہیں۔ اگر مسلم حکمران اس تاریخی حقیقت کو غور سے دیکھیں توانہیں معلوم ہو گا کہ ان کے اقتدار کا انحصار نیویارک اور واشنگٹن سے تعلق استوار کرنے میں نہیں بلکہ نیویارک اور واشنگٹن کے مفادات کے تحفظ کرنے میں ہے.

مزید پڑھیں >>

صلحِ حدیبیہ: غور و فکر کے چند پہلو

 معاہدہ کی تمام شقیں بہ ظاہرمسلمانوں کے خلاف تھیں ؛ لیکن آپ انے تمام کومنظورفرمایا۔ دراصل آپ ا کے پیش نظرمستقبل تھاکہ ایک بارمعاہدہ ہوجانے کے بعدسکون واطمینان کے ساتھ دعوتِ دین کے فریضہ کی ادائے گی کی طرف توجہ دی جاسکے گی، جس کے نتیجہ میں دیگرقبائل ِ عرب کے دائرۂ اسلام میں داخل ہونے کاقوی امکان تھا۔ ہوابھی ایساہی۔ مدتِ معاہدہ میں اچھے خاصے لوگ حلقہ بگوشِ اسلام ہوئے۔

مزید پڑھیں >>

حیات ِ ٹیپو سلطان شہیدؒ کے تابندہ نقوش

    ٹیپو بچپن سے بڑے ذہین اور تیز دماغ والے تھے ،آپ کے والد حیدر علی نے اپنی خصوصی نگرانی میں ماہر اساتذہ کے ذریعہ آپ کو تعلیم دلوائی اور تربیت کا خاص انتظام فرما۔تقریبا 5سال کی عمرسے19تک ٹیپو نے مختلف علوم وفنون سیکھے۔زمانہ کے لحاظ سے شہسواری ،تیر اندازی ،سپہ گری کی تربیت بھی دی گئی۔

مزید پڑھیں >>

حضرت ابو ذر غفاریؒ

  قبیلہ غفار کا بانکا، سجیلا، بہادر نوجوان رملہ بنت ربیعہ کا لعل اس کا اسم گرامی جندب ہے۔ کنیت ابوذر۔ قبیلہ غفار کا باشندہ، آسمان شہرت پر ابوذر ہی نقش ہے، جس کے رگ و پے میں شجاعت و بہادری دلیری و چستی پیوست ہے، چاق و چوبند ہے۔ قبیلے کی روایتوں کا پاس دار ہے بزرگوں کے طرز عمل کا پیرو ہے، قوم کی خوشی کا باعث ہے۔ قبیلہ کے ہر فرد بشر کی آنکھ کا تارا ہے۔ ہر شخص اس کی بہادری کی داد دیتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

رسول اللہ ﷺ بحیثیت شوہر

 آج ہم دنیاوی معاملات میں اپنی بیویوں کی فکرتوبہت زیادہ کرتے ہیں ؛ لیکن دین کے باب یاتوفکرہی نہیں کرتے یاتساہل پسندی سے کام لیتے ہیں ؛ حالاں کہ یہی آخرت کے سفرمیں کام آنے والا توشہ اورزادِراہ ہے۔آپ ا کے اسوہ سے ہمیں عبادت کے باب میں اپنی بیویوں کے رعایت کرنے کاسبق حاصل کرناچاہئے اوراس باب میں دنیاوی توجہات سے کہیں زیادہ فکرکرنی چاہئے۔

مزید پڑھیں >>

خانہ کعبہ اور مقامِ ابراہیمؑ

 اِس وقت میرے محبوب ﷺکا ذکر ہو رہاہے سرور کائنات ﷺ کی روح پرنور کا ذکر ہو رہاہے اُس ہستی کا ذکر جس کا انتظار ہزاروں سالوں سے ہر ذی روح کو ہے اِس وقت کا ئنات کا ذرہ ذرہ معطر اور خو شی سے جھوم رہا ہے قدرت خدا وندی ہے اُسی لمحے وہ پتھر بھی سرکار دوجہاں ﷺ  کے ذکر سے موم ہو گیا او ر حضرت ابرا ہیم ؑ کے پا ئوں کے نشان قیامت تک کے لیے پتھر میں پیوست ہو گئے

مزید پڑھیں >>