تاریخ و سیرت

واقعہ کربلا: دین کی بقا اور اسلام کی سربلندی

ایمان و محبت کا دعویٰ عمل کے بغیر صحیح نہیں حضرت امام حسین کے عمل کو دیکھیں اور عبرت حاصل کریں ۔دعا ہے کہ ہم سب کو اللہ ر ب العزت عبرت و نصیحت حاصل کرنے کی توفیق رفیق بخشے اور اللہ کے محبوب بندوں کے نقش قدم پر چلنے کی قوت عطافرمائے، قیامت کے دن نبین،صدیقین،شہدااور صالحین کے دامن کرم میں ہم سب کا حشر فرمائے اور حسینی کردار کو اپنانے کی توفیق عطا فرمائے۔

مزید پڑھیں >>

شہادت امام حسینؓ اور آج کا مسلمان

ہر لمحہ ، ہرساعت ، ہردن، ہر مہینہ، ہرسال اللہ کے پیدا کئے ہوئے ہیں لیکن اللہ تعالیٰ نے اپنے پورے سال کے بعض ایام کو خصوصی فضیلت عطا فرمائی ہے اور ان ایام کیلئے کچھ مخصوص احکام مقرر فرمائے ہیں ۔ یہ محرم کا مہینہ بھی ایک ایسا ہی مہینہ ہے جس کو قرآن کریم نے حرمت والا مہینہ قرار دیا ہے۔ اللہ تعالیٰ نے قرآن کریم میں فرمایا کہ چار مہینہ حرمت والے ہیں ان میں سے ایک مہینہ محرم کا ہے۔

مزید پڑھیں >>

حضرت امام حسینؓ کی عظیم شہادت

ضرورت اس بات کی ہے کہ حضرت اما حسین رضی اللہ عنہ کی شہادت کے حقیقی فلسفہ و حقیقت اور مقصد کو سمجھا جائے اور اس سے ہمیں جو سبق اورپیغام ملتا ہے اسے دنیا میں عام کیا جائے کیونکہ پنڈت جواہر لا ل نہرو کے بقول ’’ حسین کی قربانی ہر قوم کے لئے مشعلِ راہ و ہدایت ہے۔

مزید پڑھیں >>

اسلامی کلینڈر کا آغاز ہجرت کے سال سے

اسلامی سن کا آغاز امیر المومنین سیدنا عمر فاروق کے زمانےسے ہوا  ،جس کی بنیاد ہجرت کے سال کو بنایا گیا ہے۔ حالانکہ ہجرت کے علاوہ بہت ساری چیزیں تاریخ ساز تھیں جسے اسلامی سال کی یاد گار کے طور پر بنیاد بنائی جاسکتی تھیں ۔ لیکن اس کے باوجود ہجرت کے سال کو اسلامی تقویم کا محور قرار دینا یہ اس بات کی بین دلیل ہے کہ ہجرت مدینہ در اصل اسلام کی زراعت کو سبزہ زار بنانے میں جو مقام رکھتی ہے اتنا کوئی دوسری چیز نہیں۔

مزید پڑھیں >>

محرم الحرام: تاریخ  کے جھروکوں سے!

محرم کا مہینہ، اسلامی تقویم کا پہلا مہینہ ہے جو عظمت و احترام میں بہت ساری نوعیتوں سے دیگر مہینوں پر فوقیت و برتری رکھتا ہے، جاہلیت کے تاریک ترین زمانےہی سے ریگزار عرب کےوہ بدو جو علم سے دور اور عقل سے بیگانہ، وحشت سے قریب اور جنگ وجدال کے دلدادہ تھے، اس مہینےکے احترام میں قتل وقتال، جنگ وجدال، کشت وخون، لوٹ مار اور غارت گری ورہزنی سے باز رہتے تھے ؛یہی وجہ ہے کہ محرم کے مہینہ کو محرم الحرام کہا جاتا ہے کہ اس میں معرکہ کارزار گرم کرنا اور انسانوں کے خون کو ناحق بہانا حرام ہے۔

مزید پڑھیں >>

آل سعود کا تاریخی پس منظر

اس خاندان کا نام آل سعود ہے. 'محمد بن سعود'  الدرعیہ کے علاقے میں ہی رہا. یہ بستی تین مربع کلومیٹر سے متجاوز نہیں تھی. محمد بن سعود نے خود کو 'امام محمد بن سعود' کا خطاب دیا. یہیں  اس امام کی ملاقات 'امام محمد بن عبد الوہاب' نامی دوسرے امام سے ہوتی ہے جو وہابی تحریک کے بانی تھے.

مزید پڑھیں >>

خلیفہ ثانی حضرت عمر فاروقؓ کی حیات طیبہ کے تابندہ نقوش

اسلامی حکومت مصر تک پہنچ چکی تھی، تاریخِ اسلام میں جس قدر ترقی ؛فاروقِ اعظم کے دورخلافتِ  میں ممکن تھی مکمل ہوچکی تھی، اسلام عرب سے نکل کر عجم کی جانب گامزن تھا، لشکرِ اسلام نئی نئی سر زمینوں اورمختلف عجمی ممالک کے در پر دستک دے رہا تھا، ایران اور روم اس وقت کی دو سب سے بڑی طاقتیں بھی اسلام کے ہاتھوں فتح ہو چکی تھیں، عدل و انصاف اپنی حدود کو پہنچ چکا تھا اور مساوات کا یہ حال تھا کہ وہ جہاں تھی اس سے زیادہ ممکن ہو نہیں سکتی تھی، امیر المومنین کی شان و شوکت اور فتوحات اسلامی سے باطل قوتیں پریشان تھیں۔

مزید پڑھیں >>

88سالہ تاریخ میں صوبہ جموں کے مسلم طبقہ کوعدالت عالیہ میں نمائندگی نہیں ملی!

صوبہ جموں میں مسلم آبادی قریب40فیصد ہے ۔جموں وکشمیر ہائی کورٹ بار ایسو سی ایشن جموں میں 3400کے قریب وکلاء میں کم وپیش700مسلم وکلا ہیں لیکن ان میں سے کسی کو ابھی تک ہائی کورٹ کا جج بننے کا موقع نہیں ملا۔ صوبہ جموں کے 10اضلاع میں سے 5اضلاع میں 50فیصد سے زیادہ مسلم آبادی ہے جن میں راجوری، پونچھ، کشتواڑ، ڈوڈہ اور رام بن شامل ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

برمی مسلمانوں کی تاریخ: مسائل اور کرنے کے کام!

آج برما جسے اب میانمار کہا جاتا ہے بدھ کے پیروکاروں کا ملک ہے۔ اراکان اس کا ایک صوبہ ہے جو بیس ہزار مربع میل پر مشتمل ہے۔ اس میں تقریباً تیس لاکھ سے زائد مسلمان آباد ہیں۔ اراکان دراصل تاریخی حیثیت کا حامل علاقہ ایک زمانے میں باقاعدہ خودمختار خوشحال مسلم سلطنت تھاجس کی ابتدا1420ئکے دوران ہوئی۔

مزید پڑھیں >>

عہدِعثمانی کے درخشاں پہلو!

امیرالمؤمنین، خلیفۃ المسلمین سیدنا عمر فاروق ؓ کی شہادت کے بعد 4؍ محرم الحرام  24ھ بروز دوشنبہ، حضرت عثمان ؓ مسند نشین خلافت ہوئے اور کم وبیش بارہ سالہ قلیل عرصہ میں 44؍لاکھ مربع میل کے وسیع وعریض خطے پر اسلامی سلطنت قائم کرنے اور نظامِ خلافت جاری رکھنے کا وہ لازوال کارنامہ انجام دیا جس کی نظیر پیش کرنے سے دنیا قاصر ہے۔

مزید پڑھیں >>