مذہب

دنبے یابکری کی واجب قربانی میں شرکت کاحکم ؟

قربانی ہرصاحب نصاب پر واجب ہے حدیث شریف میں ہےکہ "جس کو وسعت ہو اور وہ اس کے باوجود قربانی نہ کرے، تو ہمارے مصلی(عیدگاہ) کے قریب بھی نہ آئے"(ابن ماجہ)، پتہ چلا کہ اگر گھر میں ایک سے زائد صاحب نصاب ہوں تو ہرشخص پر قربانی واجب ہے؛جس طرح  ہرفرض عبادت کامعاملہ ہےکہ کسی ایک کے ادا کرلینے سے ذمہ ساقط نہیں ہوتا ۔

مزید پڑھیں >>

دین میں عقیدۂ آخرت کا مقام

آخرت پر ایمان کا مطلب اللہ تعالیٰ کی صفات عدل و حکمت، زحمت و ربوبیت اور اس کی قدرت کاملہ پر ایمان لانا ہے۔ یہ شریعت و طاعت اور عمل خیر پر قیام کی بنیاد ہے، نیز رسالت و نبوت کی اصل بھی یہی ہے، کیونکہ رسول کو رسول کہا اسی لئے گیا کہ وہ اس کا پیغام لے کر آئے اور نبی کا نام نبی اسی وجہ سے پڑا کہ انھوں نے اس نباء عظیم کی خبر دی۔

مزید پڑھیں >>

قربانی، تفریح یا عبادت: چند حقایق اور غور طلب باتیں

آج پوری دنیا مسلمانوں کے لئے تنگ ہوتی چلی جا رہی ہے ۔ ایک زمانہ تھا کی مسلم قوم دنیا کے لئے ایک نمونہ تھی ۔ غیر مسلم حضرات اپنے معاملات بھی مسلمانوں کے پاس لایا کرتے تھے اور یہ تصور کرتے تھے یہ ہمارے درمیان انصاف کا پہلو قائم رکھیں گے لیکن آج دنیا میں مسلمانوں کی اہمیت نہیں رہ گئی۔ علامہ اقبال نے اس جذ بے کی ترجمانی کی ہے۔ 

مزید پڑھیں >>

قربانی سے آخر کیا مطلوب ہے؟

اصل قربانی تو اپنے نفس کی ہے اور جانور تو حقیقت میں ایک علامت ہے۔ ہمارے اندر یہ جذبہ ہونا چاہیے کہ قربانی کرتے وقت ہم اللہ کی طرف متوجہ ہوکر اپنے دل میں یہ کہیں کہ اے میرے رب ! یہ جانور کیا چیزہے، تیرے احکام کی پاسداری ا ور دین کی سربلندی کے لئے بندہ اپنی جان، مال اور اولاد کی ہر قربانی دینے کو تیار ہے۔ یہی وہ جذبہ ہے جو قربانی سے پیدا کرنا مطلوب ہے اوریہی وہ جذبہ تھا جس نے سیّدنا ابراہیم علیہ السلام کو اپنے پیارے بیٹے کو اللہ کی راہ میں قربان کرنے پر آمادہ کیا اور اللہ کی طرف سے آئی اس آزمائش میں کامیاب ہونے پر ہی وہ انسانیت کی امامت کے عہدہ پر سرفراز کئے گئے۔ جس کے اندر یہ جذبہ ہوگا وہ سب سے پہلے اپنے نفس کو اللہ اور اس کے رسولﷺ کے احکام کے تابع کرے گاجس کے بغیر ایمان کی تکمیل ہی ممکن نہیں.

مزید پڑھیں >>

ایصال ثواب: ایک تحقیقی مطالعہ

حاصل یہ ہے کہ کتاب و سنت اور قیاس کے ذریعہ نماز، روزہ اور تلاوت قرآن وغیرہ کے ذریعہ ایصال ثواب درست ہے اور جس طرح سے ایک مومن کی دعا اور استغفار کے ذریعہ دوسرے مومن کو فائدہ پہنچ سکتا ہے اسی طرح سے بدنی عبادات اور قربانی و صدقہ وغیرہ کے ذریعہ سے بھی میت کوفائدہ ہوسکتا ہے.

مزید پڑھیں >>

ایک جانور کی قربانی ایک گھرانے کی طرف سے کافی ہے!

قرابت، سکونت اور انقاق یعنی ایک چولہے پہ جمع ایک آدمی کی سرپرستی میں اس کے سارے رشتہ دارجن پہ وہ خرچ کررہاہےایک گھرانہ ہے ۔ اس میں آدمی کی بیوی، اس کے لڑکے، اس کی لڑکیا ں اور وہ قریبی رشتہ دارشامل ہیں  جو ساتھ میں رہتے ہوں مثلا بہو۔ان سب لوگوں کی طرف سے ایک جانور کی قربانی کافی ہے ۔

مزید پڑھیں >>

اذان اور دعوت میں  تعلق (آخری قسط)

چونکہ دنیا میں  ہر دور میں  ابلیس اور انسان کی بڑائی کا مسئلہ ہی سب سے زیادہ خطر ناک رہا ہے، اسلئے اللہ تعالیٰ نے ابلیس اور انسان کی بڑائی کے تصور کو ختم کرنے اور اپنی بڑائی کا نقش بٹھانے کے لئے اسلام کی دعوتی، تعلیمیاور عباداتی نظام میں  بڑی اولیت، اہمیت اور تکرار کے ساتھ اپنی کبریائی کے تذکرہ اور حکم رکھ دیا ہے ۔

مزید پڑھیں >>

ذی الحجہ کے دس دن

 رحمتِ خداوندی مغفرت اوربخشش کابہانہ ڈھونڈھتی ہے، بندہ ہی پیچھے ہٹ جاتاہے اوراپنے گناہوں کی بخشش میں ٹال مٹول اورسستی و کاہلی سے کام لیتاہے، کتنے ایسے مواقع ہمیں میسرہوتے ہیں، جن میں تھوڑی سی کی گئی عبادت کاثواب دس گناسے بھی زیادہ ملتا ہے؛ لیکن پھربھی اس تھوڑی سی عبادت کی ادائے گی میں نہ صرف یہ کہ ہم تذبذب کا شکار ہوجاتے ہیں؛ بل کہ کنی ہی کاٹ لیتے ہیں اوراس طرح اپنے پیرپرخودہی کلہاڑی مارلیتے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

حدود حرم میں پڑھی جانے والی نماز کا ثواب ایک لاکھ ہے!

ہرسال حج کے موقع سے یہ بحث جھڑ جاتی ہے کہ مسجد حرام میں نماز پڑھنے کا ایک لاکھ ثواب کیا حدود حرم میں پڑھی جانے والی ہرنماز کے لئے ہے یاصرف مسجدحرام کے ساتھ ہی حاص ہے؟ عموما یہ بحث اس وجہ سے جھڑتی ہے کہ آفاق سے آئے سبھی حجاج مکہ میں قیام کے دوران مسجد حرام میں ہی پنج وقتہ نمازیں ادا کرنے کی کوشش کرتے ہیں مگر چند اسباب کی وجہ سے سبھی حاجیوں کو پنج وقتہ نمازیں مسجد حرام  میں ادا کرنے کا موقع نہیں ملتا۔

مزید پڑھیں >>

احادیث کی صحت و تشریح کے لیے قرآن کی اساسی اہمیت

 اللہ تبارک و تعالیٰ کی حکمت و رحمت کا تقاضا ہوا ہے کہ آخری دین کی بنیادی اور کلی احکام کو الفاظ کے ساتھ نازل کیاجائے تاکہ اسے سینوں میں محفوظ رکھنا آسان ہو اور اس کی جزئیات و تفصیلات کو معانی کی شکل میں اتارا جائے تاکہ اس کی حفاظت میں دقت اور سمجھنے میں پریشانی نہ ہو، پہلی وحی کو قرآن اور دوسری وحی کو سنت کہاجاتاہے۔

مزید پڑھیں >>